05:41 pm
جی بی میں امن کاکریڈٹ ن لیگ کوجاتاہے(وزیراعلیٰ)

جی بی میں امن کاکریڈٹ ن لیگ کوجاتاہے(وزیراعلیٰ)

05:41 pm

گلگت(اوصاف نیوز)وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے مسلم لیگ (ن) ضلع گلگت کے پارٹی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ مسلم لیگ (ن) کی حکومت کو کریڈٹ جاتا ہے کہ جب سے گلگت بلتستان میں مسلم لیگ (ن) کی بنی ہے گلگت بلتستان میں کوئی دہشتگردی کا واقعہ رونما نہیں ہوا ہے۔ گلگت بلتستان کے عوام نے مسلم لیگ (ن) کو امن اور ترقی کے ایجنڈے پر ووٹ دیا تھا جس کو عملی جامعہ پہنایا گیاہے
۔ مسلم لیگ (ن) امن کی ضامن جماعت ہے اور مسلم لیگ (ن) کے ورکروں اور کارکنوں نے امن کی پہرا داری کرنی ہے۔ مخالفین کا کام منفی پروپیگنڈا اور ترقیاتی منصوبوں میں تاخیر کیلئے سازشیں کرنا ہے۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہاکہ تعمیر و ترقی کے حوالے سے سول سوسائٹی کا رول انتہائی اہم ہے بدقسمتی سے گلگت بلتستان میں ہمارے مخالفین نے ترقیاتی منصوبوں کیخلاف سازشیں کیں لیکن سول سوسائٹی نے اس پر کوئی آواز نہیں اٹھائی۔ اجتماعی مفادات کے تحفظ کیلئے سول سوسائٹی کا کردار ناگزیر ہے جس کو مدنظر رکھتے ہوئے چیف منسٹر یوتھ ٹاسک فورس کا قیام عمل میں لایا گیا ہے تاکہ سول سوسائٹی اجتماعی مفادات کے تحفظ کیلئے اپنا کلیدی کردار ادا کرے۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہاکہ گلگت بلتستان میں حکومت جس جماعت کی بھی ہو ترقیاتی اور مفاد عامہ کے منصوبوں کی نگرانی میں سول سوسائٹی کا کردار اہم ہونا چاہئے۔ گلگت بلتستان میں گزشتہ چار سالوں میں جو میگا منصوبے تعمیر کئے گئے ہیں ماضی میں ان کا تصور بھی نہیں کیا جاسکتا تھا۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہاکہ مسلم لیگ (ن )کو مزید فعال بنانے کیلئے تنظیم سازی کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ مختلف اضلاع سے جنرل کونسلز کا چنائو عمل میں لایا جائے گاجس کے بعد پارٹی کی تنظیم سازی کی جائے گی۔ گلگت(اوصاف نیوز)وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا ہے کہ حکومت گلگت بلتستان نے این ایل سی کے تعاون سے فنی تربیت کیلئے خصوصی کورسز کا آغاز کیا ہے جس سے گلگت بلتستان میں ٹیکنیکل شعبے میں درکار سٹاف کی کمی پوری ہوگی اور عوام کو روزگار کے مواقع میسرآئیں گے۔ محکمہ تعمیرات اوربرقیات کے ٹیکنیکل سٹاف کی بھی ٹریننگ کرائی جارہی ہے۔ مختلف شعبوں میں فنی تربیت کے پروگرام کیلئے اے ڈی پی میں خصوصی پروجیکٹ رکھا جائے گا۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا ہے کہ عوام کو براہ راست روزگار کے مواقع فراہم کرنے کیلئے فنی تربیت کے کورسز کا آغاز کیا گیا ہے۔ شارٹ کورسز کے علاوہ این ایل سی کے تعاون سے پولی ٹیکنکل کالج کے باقاعدہ کلاسز کا اجراء کرنے کیلئے بھی اقدامات کئے جائیں گے جس کیلئے سیکرٹری انڈسٹریز، سیکرٹری تعلیم اور این ایل سی کے متعلقہ آفیسران پر مشتمل کمیٹی تشکیل دی گئی ہے جو اپنی کاغذی کارروائی مکمل کرکے متعلقہ فورم میں منظوری کیلئے پیش کرے گی۔ گلگت اور سکردو میں خواتین کیلئے بھی فنی تربیت کے سنٹرز قائم کئے جائیں گے۔ ان خیالات کا اظہار وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کمانڈر این ایل سی گلگت بلتستان برگیڈیئر محمد اقبال سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہاکہ حکومت گلگت بلتستان نے مسلم لیگ(ن) کے سابق وفاقی حکومت سے گلگت بلتستان میں وویمن یونیورسٹی کیمپس کے قیام کی منظوری دی تھی جس کے فنڈز موجودہ وفاقی حکومت نے روک دیئے ہیں لیکن حکومت گلگت بلتستان نے اپنے وسائل سے خواتین کو اعلیٰ تعلیم کے حصول کیلئے وویمن کیمپس کے قیام کا فیصلہ کیا ہے ۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہاکہ دیامر بھاشا ڈیم کی تعمیر کے حوالے سے واپڈا کی جانب سے کئے جانے والے سی بی ایمز پر عملدرآمد میں تاخیر سے مسائل پیدا ہورہے ہیں جس پر چیئرمین واپڈا سے بات کی گئی ہے کہ وہ سی بی ایمز پر عملدرآمد کو یقینی بنائیں۔ صوبائی حکومت این ایل سی کے تعاون سے ہربن داس چلاس میں بھی فنی تربیت کے مرکز کے قیام کیلئے اقدامات کرے گی جس کیلئے چیئرمین واپڈا سے رابطہ کیا جائے گا۔وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہاکہ سیوریج ٹریٹمنٹ پلانٹ کی بروقت تعمیر این ایل سی کی جانب سے اچھا اقدام ہے لیکن وفاقی حکومت نے گلگت بلتستان کے سیوریج نظام کیلئے مختص 4 ارب کے فنڈز روک دیئے ہیں۔ سیوریج کی افادیت کو مدنظر رکھتے ہوئے حکومت گلگت بلتستان اپنے وسائل سے مرحلہ وار اس منصوبے کو مکمل کرے گی۔ وفاقی حکومت کی جانب سے سیوریج کیلئے فنڈز فراہم نہ کرنے سے سیوریج کے منصوبے میں تاخیر ہوئی ہے۔ کابینہ اجلاس میں مین ٹرنک اور ڈرین ایج کی منظوری دی گئی ہے۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے اس موقع پر کارڈک ہسپتال اور نلتر ایکسپریس وے پر جاری کام پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے این ایل سی کی کارکردگی کو سراہا اورہدایت کی کہ گلگت علامہ اقبال ٹائون (کنوداس) آر سی سی پل تا چھلمس داس تک ایکسپریس وے کی تعمیر پر خصوصی توجہ دی جائے اور پہلے مرحلے میں اس کو تعمیر کیا جائے۔ 35 .گلگت(اوصاف نیوز)وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا ہے کہ محکمہ پولیس کی کارکردگی کو مزید بہتر بنانے کیلئے محکمہ پولیس میں اصلاحات کئے جارہے ہیں جس کامقصد ادارے کوبااختیار اور جوابدہ بنانا ہے۔ جس کو مدنظر رکھتے ہوئے گلگت بلتستان پولیس ایکٹ 2019کو کابینہ اجلاس میں پیش کیا جائے گا۔ گلگت بلتستان پولیس ایکٹ 2019 سے تھانہ کلچر میں واضع تبدیلی آئے گی۔ اداروں کی بہتری کیلئے حکومت نے اصلاحات متعارف کرائے ہیں جس کے انتہائی مثبت نتائج سامنے آرہے ہیں۔ اداروں کے مابین بہتر روابط سے اداروں کی کارکردگی میں مثبت تبدیلی آئی ہے۔ ادارہ جاتی اصلاحات سے پولیس کی کارکردگی میں مزید بہتری آئی گی اور عوام کو انصاف کی فراہمی میں مدد ملے گی۔ انوسٹی گیشن کے نظام کو بہتر بنایا جائے گا۔ ان خیالات کااظہار وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے ڈرافٹ گلگت بلتستان پولیس ایکٹ 2019 اور سپیشل پروٹیکشن یونٹ کے حوالے سے محکمہ پولیس کی جانب سے دیئے جانے والی بریفنگ کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا کہ ڈرافٹ گلگت بلتستان پولیس ایکٹ 2019 کو محکمہ داخلہ اور قانون سے رائے لینے کے بعد منظوری کیلئے کابینہ میں پیش کیا جائے گا۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہاکہ ہمارا مقصد نظام میں بہتری لاناہے۔ نیک نیتی سے علاقے اور عوام کی خدمت کیلئے کام کررہے ہیں۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے اس موقع پر بغیر ہیلمٹ موٹر سائیکل چلانے پر عائد پابندی پر عملدرآمد نہ ہونے پر برہمی کا اظہارکرتے ہوئے محکمہ پولیس کو ہدایت کی کہ ہمیں سب سے زیادہ انسانی جانوں کی فکر ہے لہٰذا تمام موٹر سائیکل چلانے والوں کو ہیلمٹ کا استعمال یقینی بنانے کیلئے سخت اقدامات کئے جائیں۔ بغیر ہیلمٹ کے موٹر سائیکل چلانے والوں کیخلاف کارروائی عمل میں لائی جائے۔ مین شاہراہوں پر پیٹرولنگ کے نظام کو بہتر بنایا جائے۔ سیف سٹی پروجیکٹ کے ملازمین کو فوری طور پر تنخواہوں کی فراہمی یقینی بنائی جائے اور دیگر اضلاع میں بھی سیف سٹی پروجیکٹ کی وسعت کیلئے اقدامات کئے جائیں۔

تازہ ترین خبریں