06:31 pm
جی بی کی عدلیہ مثالی،میرٹ پرجج بھرتی ہونگے تو انصاف کی فراہمی میں آسانی ہوگی(جسٹس حق نواز)

جی بی کی عدلیہ مثالی،میرٹ پرجج بھرتی ہونگے تو انصاف کی فراہمی میں آسانی ہوگی(جسٹس حق نواز)

06:31 pm

گلگت (نمائندہ خصوصی) سینئر جج چیف کورٹ گلگت بلتستان جسٹس ملک حق نواز نے کہاہے کہ عدلیہ میں میرٹ پر ججز آئیں گے تو انصاف کی فراہمی میں آسانی ہوگی بار اور بنچ کے درمیان کوئی خلا نہیں ہے وکلاء معاشرے کے لئے رول ماڈل بنیں محنت کو شعار بنائیں ہم نے وکلاء اور ججز کی تحفظ کی ہے اور کریں گے انشاء اللہ کوئی آنکھ اٹھاکر دیکھ نہیں سکے گا۔ گلگت بلتستان کی اعلیٰ عدلیہ اور لوئر جوڈیشل پاکستان کے عدلیہ سے بہتر ہے
عدلیہ میں میرٹ پر ججز آئیں گے تو انصاف کی فراہمی میں آسانی ہوگی۔ ان خیالات کااظہار انہوںنے بار روم میں ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن کے عہدہ داران کے حلف برداری تقریب میں بحثیت مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوںنے کہاکہ ایمانداری سے کہتا ہوں کہ بار اور بنچ میں کوئی خلاء نہیں ہے گلگت بلتستان کی عدلیہ ایک مثالی عدلیہ ہے ایسی عدلیہ پورے پاکستان میں نہیں وکلاء کی عزت ہماری ذمہ داری ہے ہم نے جو بھی حکم دیا ہے اس پر عمل درآمد ہوا ہے انشاء اللہ کوئی آنکھ اٹھا کر نہیں دیکھ سکے گا۔ وکلاء اپنے آپ کو رول ماڈل بنائیں محنت کو اپنا شعار بنائیں میں نے حرم پاک میں اللہ سے دعاکی ہے کہ اللہ مجھ سے انصاف کا کام لیں اس موقع پر ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن کے نومنتخب صدر کمال حسین نے کہاہے کہ وکلاء کے مفادات کو مقدم رکھا جائے گا وکلاء کے حقوق پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا بلاوجہ ہڑتالوں کی سیاست نہیں کرین گے لیکن حقوق کے حصول کے لئے سب کچھ کریں گے وکلاء کا کام انصاف کی فراہمی کو یقینی بنانا ہے انصاف کی فراہمی اور قانون کی بالادستی کے لئے بنچ سے تعاون کیاجائیگا اس کے لئے بنچ کا بار کے ساتھ اچھے تعلقات اور روئے پر منحرسے قبل ازیں جسٹس ملک حق نواز نے نومنتخب عہدیداران سے حلف لیا۔ تقریب میں ممبر جج چیف کورٹ جسٹس علی بیگ جسٹس محمد عمر جی بی بار کونسل کے وائس چیئرمین لطیف شاہ ایڈووکیٹ ،ایڈووکیٹ جنرل جی بی محمد اقبال، سیکریٹری لاء سجاد حیدر، ڈپٹی اٹارنی جاوید ،ہائی کورٹ بار کے سابق صدر سپریم کورٹ کے صدر شوکت علی خان ایڈووکیٹ کے علاوہ وکلاء کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ دوسراانٹرو گلگت (نمائندہ خصوصی) سپریم اپیلٹ کورٹ بار کے صدر شوکت علی خان نے ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن کے تقریب حلف برداری سے خطاب کرتے ہوئے کہاہے کہ ہمیں حقوق نہ ملنے میں کسی اور کی کوئی غلطی نہیں ہمارا اپنا قصور ہے ہم میں اتفاق نہ ہونے کی وجہ سے حقوق سے محروم ہے ہم میں کوئی میر جعفر اور میر صادق ہے جس کی وجہ سے سپریم اپیلٹ کورٹ اور ہائی کورٹ کو چراگاہ بنایا گیا ہے جی بی کو جج دینا تو دور کی بات ہے ہمیں ایک پراسکیوٹر سے چلایا جارہا ہے آرڈر دینے کا سلسلہ بند کیا جائیں وکلاء اپنے اندر اتفاق پیدا کریں حقوق ضرور ملیں گے۔ تیسراانٹرو گلگت(اوصاف نیوز) سینئر جسٹس چیف کورٹ جسٹس ملک حق نواز نے گلگت بلتستان ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن کے نو منتخب صدر کمال حسین جنرل سیکرٹری ندیم احمد و کابینہ سے حلف لی اور حلف برداری کی پروقار تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ گلگت بلتستان چیف کورٹ اور ماتحت عدالتیں آزاد خودمختار فیصلوں پر یقین ررکھتی ہیں پوری پاکستان میں گلگت بلتستان کی عدلیہ ستی اور فوری انصاف کی فرہمی میں مثالی ہیں عدل وانصاف ہماری اولین ترجیح ہے جس کو یقینی بنانے کیلئے عدلیہ میںسفارشی کلچر کو ختمِ کرکے بڑی بڑی سفارشوں کے با وجود عدل وانصاف کی فرہمی میں میر ٹ کا پیمانہ قانونِ کے مطابق برقرار رکھتے ہوئے سمجھوتہ نہیں کیا وکلاء کا احترام ہمارا فرض ہے کیونکہ با ر اور بینچ کا عدل انصاف کی فرہمی میں یکساں کردار ہوتا ہے دونوں کا انصاف کی فرہمی میں لازم وملزوم ہے مزید کہا کہ وکیل اور جج کا عدالت میں یکساں درجہ ہوتا دونوں ملکر قانون کی حکمرانی کیلئے کام کرتے ہیں وکلاء معاشرے میں ماڈل بن کر عدل وانصاف کیلیے کام کرے بینچ وکلاء کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں معاشرے میں عوامی مفاد عامہ کے مقدمات عدالت لائے قانونِ کمطابق آڈر دیکر عملدرآمد بھی کرایا جائیگاقانون کی نظر میں امیر اور غریب برابر ہیں انصاف کے تقاضوں اور یکسانیت کو برقرار رکھنے کے لئے گلگت بلتستان کے سرکاری محکموں میں خالی آسامیوں کی تقرری کیلئے انڑویو میں 10نمبر مقرر چیف کورٹ نے حکم دیا جو میرا فیصلہ تھا جو معاشرے میں غریب کا بچہ جو امتحان میں کامیاب ہوا ہے اس کو اس کا حق مل سکے مزید کہا گلگت بلتستان کے تمام اضلاع میں بار رومز اور لائبریری کو اپ ڈیٹ کیا جائیگا تاکہ وکلاء فیض یاب ہو وکلاء کو جہاں ہماری ضرورت ہوگی ہم شانہ بشانہ کھڑے ہیں تقریب سے صدر سپریم اپیلٹ کورٹ بار شوکت ایڈووکیٹ نے خطاب کرتے ہوئے کہا گلگت بلتستان کے وکلاء حقوق کے تحفظ کے لئے یکجا ہو کر جہدوجہد کرنا ہوگا گلگت بلتستان کی عدلیہ میں پسند اور ناپسند کی بنیاد پر ججوں کی تقرریاں حقوق وکلاء کے برخلاف ھے صدر ہائی کورٹ بار کمال حسین نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن بلاوجہ ہڑتال نہیں کریگی جہاں ضرورت ھوگی وہاں ہڑتال اور احتجاج بھی ھوگا وکلائ￿ کے حقوق بار اور بینچ کا رشتے کو برقرار اور مظبوط بنایا ہماری اولین ترجیح ھوگئی اس پر کوئی سمجھوتہ ہرگز برداشت نہیں کیاجائیگا مزید کہا سرکاری محکموں میں لیگل ایڈوائزر پر تعیناتی اور پراسکیوشن کی آسامیوں پر عدالت کے حکم کمطابق فوراً تقرریاں عمل میں لائی جائے دیامر استور ڈویڑن میں چیف کورٹ کی سرکٹ بینچ کا قیام عمل میں لا کر استور میں ٹور کیمپ کا قیام عمل میں لایا جائے تقریب میں جسٹس محمد عمر جسٹس علی بیگ رجسٹرار ملک عنایت الرحمٰن شیشن جج گلگت مشتاق احمد جج انسداد دہشتگردی عدالت راجہ شہباز خان ایڈیشنل سیشن جج راجہ منہاج علی سئنر سول جج محمد شریف سول جج رحمت شاہ سول جج فہہدبن نقیب ایڈووکیٹ جنرل محمد اقبال اٹارنی جنرل جاوید بار کونسل کے وائس چئرمین لطیف شاہ وکابینہ سینئر وکلاء نے شرکت کی۔

تازہ ترین خبریں