06:28 pm
علماء کا کام سیاست کرنانہیں،نوجوانوں کو دین کی راہ دکھائیں،علامہ راحت حسین

علماء کا کام سیاست کرنانہیں،نوجوانوں کو دین کی راہ دکھائیں،علامہ راحت حسین

06:28 pm

نگر ( اقبال راجوا) علماء کا کام یہ نہیں کہ وہ سیاست کریں بلکہ ان کا کام یہ ہے کہ وہ نوجوانوں کو دین سکھائیں ،ہمیںجرم کا ارتکاب کرتے دیکھ کر کسی بھی انسان کو قتل کرنے کا کوئی اختیار حاصل نہیں ،یہ اختیار حکم شرع یا عدالت کا ہے،جو اپنے وقت کے امام کی پہچان کے بغیر مرجائے وہ جہالت کی موت مرتا ہے۔امام جمعہ والجماعت مرکزی امامیہ مسجد گلگت آغا سیدراحت حسین الحسینی کا سکندر آباد نگر میں اجتماع سے خطاب
۔ تفصیلات کے مطابق عصر ظہور اور ہماری زمہ داریوں کے عنوان سے مقامی جامع مسجد میں ایک سیمینار منعقد ہوئی سیمینار میں علاقے کے عمائدئین ،نوجوانوں ور بچوں نے ایک کثیر تعداد میں شرکت کی ۔گلگت بلتستان کے دیگر اضلاع سے شعرائے کرام کے ساتھ ضلع نگر سے معروف منقبت و نعت خوانوں نے نہایت خوبسورت حمدو نعت اور منقبت پیش کئے۔ تقریب سے معروف عمائے کرام جن میں شیخ نیئر عباس،شیخ علامہ محمد عباس وزیری،شیخ محمد اقبال توسلی او ر دیگر عمالئے کرام نے اظہار خیال کیا۔ تقریب سے مرکزی کظاب کرتے ہوئے قائد ملت اسلامیہ گلگت بلتستان سید راحت حسین الحسینی نے کہا کہ اللہ تعالیٰ نے روئے زمین کو کبھی بھی اپنے خلیفے کے بغیر نہیں رکھا اور یہ واضح کردیا کہ زمین پر خلیفہ بنانے کا اختیار صرف اللہ تعالیٰ کوحاصل ہے ۔ اس لئے ہر انسان کو حق پرست ہونا چاہیئے اورخود کو اچھائی کے لئے آمادہ رکھے۔جو شخص اپنی نفس اور نفسانی خواہشات کی نفی کرے گا وہ امام کو جلدی ہچان جائے گا۔نفس پرستی امام مھدی علیہ السلام کے پیروکاروں میں نہیں ہوتا۔دنیا کا ہر سچا انسان امام مھدی علیہ السلام کے انتظار میں ہے ان کا ماننا ہے کہ آخر امام ہی آئیں گے جودنیا سے ناانصافی اور ظلم و جبر کامکمل خاتمہ کریں گے اور پوری دنیا میں نظام عدل قائم کریں گے۔ہماری زمہداری ہے کہ ہم خود کو پروپیگنڈے سے بچا کر رکھیں۔اسلام میں پہلی جنگ کامیابی کے بعد پروپیگندے کے زریعے ناکامی میں بدل دیا گیا کیوں کہ مسلمانوں کے دھڑے ایک دوسرے کے ہی دشمن بن گئے تھے۔اللہ میں دین میں کوئی بھی جھگڑا پیدا نہیں کیا ہے جھگڑا فساد دین سے باہر ہے ۔نفس پرستی جھگڑے کا باعث بنتی ہے۔انہوں نے علمائے دین کے بارے میں بتایا کہ وہ سیاست کے بجائے دین کے احکامات بتائیں اور ان پر عملدرآمد کریں ،تقریب سے دیگر علامئے کرا م نے بھی خطاب کئے جس میں انہوں نے منجئی بشرئیت حضرت امام مھدی کی شان میں مقالے پیش کئے ۔ علامئے کرام کا کہنا تھا کہ آج امام علیہ السلام کے ظہور میں رکاوٹ در اصل ہماری امام کے لئے محبت و اخلاص سے تڑپ اور تلاش کی کمی ہے۔ تقریب کے آخر میں نماز باجماعت ادا کی گئی اور وطن عزیز پاکستان کی ترقی اور امن و امان کے لئے خصوصی دعائیں بھی کیں۔

تازہ ترین خبریں