06:34 pm
ایک کروڑروپے بقایاجات کی عدم ادائیگی،محکمہ واٹراینڈپاورکوتیل کی ترسیل بند

ایک کروڑروپے بقایاجات کی عدم ادائیگی،محکمہ واٹراینڈپاورکوتیل کی ترسیل بند

06:34 pm

گلگت(چیف رپورٹر)ایک کروڑ کی بقایاجات کی عدم ادائیگی،پٹرول پمپ مالک نے محکمہ واٹر اینڈ پائور کو تیل کی ترسیل بند کر دی ،ہنزہ میں ڈیزل جنریٹر سے بجلی کی فراہمی بند،سیاحت کا سیزن شروع ہوتے ہی ہنزہ میں بجلی کا بحران ایک مرتبہ پھر سنگین ہو گیا،گھریلو و کمرشل صارفین کے لئے 20گھنٹوں کی اعصاب شکن لوڈ شیڈنگ نے نظام زندگی مفلوج بنا کر رکھ دی۔عطاء آباد 4میگاواٹ کا پی سی ون اداروں میں فٹبال بن دیا
،عوا م کا ایک مرتبہ پھر شاہراہ قراقرم پر دھرنا دینے کا اعلان،ہنزہ بزنس ایسوسی ایشن بھی میدان میں آگئی،ہنزہ میں بجلی کی لوڈ شیڈںگ کا مسئلہ ایک مرتبہ پھر سنگین ہو گیا ہے اور ایک کروڑ روپے کی بقایا جات کی عدم ادائیگی پر پٹرول پمپ مالک نے محکمہ واٹر اینڈ پائور کو تیل کی ترسیل بند کی ہے جس کی وجہ سے ڈیزل جنریٹرز سے بجلی کی فراہمی بند ہونے کے بعد لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ 20گھنٹوں سے تجاوز کر گیا ہے ۔ادھر ہنزہ میں بجلی کے بحران سے نمٹنے کے لئے طویل المدتی منصوبہ عطاء آباد 4میگاواٹ کا پی سی ون محکمہ پلاننگ اور محکمہ برقیات کے درمیان فٹبال بننے کی وجہ سے بجلی کا بحران مزید شدت اختیار کرنے کا خدشہ پیدا ہو گیا ہے دوسری جانب مسگر سے مرکزی ہنزہ بجلی کی ترسیل میں بھی غیر معمولی تاخیر پیدا ہوئی ہے اس حوالے سے ذرائع نے اوصاف کو بتایا گیا ہے مسگر سے سنٹرل ہنزہ ٹرانسمیشن لائن تو بچھائی گئی ہے لیکن بجلی کے کھمبوں پر لگائے انسولیٹر انتہائی ناقص ہیں جو بجلی کا لوڈ برداشت نہیں کر سکتے بجلی چھوڑتے ہی انسولیٹرز دھماکے سے اڑ جاتے ہیں اب تک درجنوں انسولیٹر دھماکے سے اڑ چکے ہیں جس کی وجہ سے یہ منصوبہ بھی ٹھیکیدار کی ناقص سامان کی فراہمی کی بھینٹ چڑھ گئے ہیں لیکن محکمے کی جانب سے اب تک ٹھیکیدار کو کسی قسم کا نوٹس نہیں کیا گیا ہے اور نہ ہیایک منصوبے کو تاخیر کا شکار کرنے پر ٹھیکیدار کے خلاف کسی کی کارروائی کی گئی ہے۔ہنزہ میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ میں مسلسل اضافے اور صوبائی حکومت و متعلقہ محکمے کی جانب سے سنجیدہ اقدامات نہ اٹھائے جانے پر ہنزہ کے عوامی سیاسی اور سماجی حلقوں نے شدید تشویش کا اظہار کیا ہے اور عوام ہنزہ نے ایک مرتبہ پھر سڑکوں پر نکلنے کی دھمکی دی ہے جبکہ ہنزہ بزنس ایسوسی ایشن نے آئندہ چند روز میں بجلی کی صورتحال درست کرنے اور طویل مدتی منصوبوں کی جنگی بنیادی پر منظوری میں مذید تاخیر پر شٹر ڈائون ہڑتال اور شاہراہ قراقرم پر دھرنا دینے کا اعلان کیا ہے اس حوالے سے بزنس ایسوسی ایشن کے صدر سلمان کریم اور اعجاز گلگتی نے اوصاف کو بتایا کہ بجلی کا معاملہ درست نہیں کیا گیا تو بہت جلد عوام کو لیکر سڑکوں پر آئیں گے اور شاہراہ قراقرم پر دھرنا دیں گے آئندہ ایک دو روز میں حتمی تاریخ کا اعلان کرکے ضلع ہنزہ کے تمام علاقوں کے عوام میں اس حوالے سے رابطہ مہم بھی شروع کریں گے۔گلگت(چیف رپورٹر)ایگزیکٹیو انجینئر واٹر اینڈ پائور ضلع ہنزہ نے تصدیق کی ہے کہ ایک کروڑ کے بقایاجات کی عدم ادائیگی پر پٹرول پمپ مالک نے ڈیزل کی فراہمی بند کر دی ہے جس کی وجہ سے ڈیزل جنریٹرز سے بجلی کی ترسیل کا عمل رک گیا ہے اور لوڈ شیڈنگ کے دورانئے میں اضافہ ہوا ہے اوصاف کی جانب سے پوچھے گئے سوال پر ایگزیکٹیو انجینئر نے کہا کہ ہنزہ میں موجود پٹرول پمپ کے مالک کو سال2017-18کے ایک کروڑ کی بقایاجات کی ادائیگی نہیں ہوئی ہے جس کی وجہ سے مالک نے تیل کی فراہمی بند کی ہے گلگت کے ایک پمپ مالک کو اپریل کے آخر تک ایڈوانس ادائیگی کی گئی جس کی مد میں گلگت سے روزانہ ملنے والے 3ہزار لیٹر ڈیزل سے رات کے تین سے چار گھنٹے بجلی فراہم کی جاتی ہے۔

تازہ ترین خبریں