05:43 pm
4سال میں 10ارب کی کرپشن ہوئی،حفیظ الرحمن ہوائی اعلانات کررہے ہیں،امجدایڈووکیٹ

4سال میں 10ارب کی کرپشن ہوئی،حفیظ الرحمن ہوائی اعلانات کررہے ہیں،امجدایڈووکیٹ

05:43 pm

گلگت (فہیم اختر) پیپلزپارٹی گلگت بلتستان کے صوبائی صدر امجد حسین ایڈووکیٹ نے کہاہے کہ گزشتہ چار سالوں میں دس ارب روپے سے زائد رقم کرپشن کی نذر ہوئی ہے جس کی وجہ سے جہاں ممبران اسمبلی کی ترقیاتی سیکمیں متاثر ہوئی ہیں وہی پر جی بی کا ترقیاتی بجٹ بھی متاثر ہوا ہے۔ قواعد کے تحت منٹنینس کی مد میں صرف ایک ارب روپے استعمال کرنے کی گنجائش ہے لیکن حفیظ الرحمن نے ترقیاتی بجٹ سے بھی تین ارب روپے اٹھا کر منٹنینس پر خرچ کیا ہے
جو درحقیقت اس کے جیب میں چلے گئے ہیں۔ اوصاف سے گفتگو کرتے ہوئے امجد حسین ایڈووکیٹ نے کہاکہ حفیظ الرحمن صرف پوائنٹ سکودنگ کے لئے اعلانات کررہے ہیں جب میاں نواز شریف اقتدار میں تھا اس وقت حفیظ الرحمن کو اجتماعی ایشوز یاد نہیں آئے ۔کسی ایک اجلاس میں بھی حفیظ نے سرحدی تنازعات کو اٹھانے کی زحمت نہیں کی حالانکہ گلگت بلتستان نے ن لیگ کو دوتہائی اکثریت دی تھی ۔نواز شریف کے ساتھ ایک بھی ایسی میٹنگ متفقہ نہیں ہوئی جس میں وہ اپنی کابینہ کو لیکر گئے ہو۔ انہوںنے کہاکہ دیامر کے جنگلات کے معاملے میں صرف پیپلزپارٹی وہ واحد جماعت ہے جس کے قائدین نے گلگت بلتستان کی حمایت کی ہے مرکزی چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے حق حاکمیت و حق ملکیت تحریک کی تائید ،حمایت اور توثیق کی ہے جبکہ ن لیگ اور تحریک انصاف نے اس کیس کے فریق کو گلگت بلتستان چیف جج سپریم اپیلٹ کورٹ لگانے کی سمری بھیجی ہے۔ پیپلزپارٹی جوڈیشل کونسل کے قیام کے لئے عدالت سے رجوع کرے گی۔ انہوںنے کہاکہ لینڈ ریفارم کمیشن گلگت بلتستان میں ناقابل عمل ہے کیونکہ زمینوں کے معاملات یونین کونسل میں طے کئے جاتے ہیں حفیظ عوامی نمائندوں کی بجائے درباری مشیروں پر زیادہ اعتماد کرتے ہیں اسلئے ہر مرحلے میں کھائی میں گر رہے ہیں۔ امجد حسین ایڈووکیٹ نے کہاکہ پیپلزپارٹی دوزاول سے حقوق گلگت بلتستان کا ایجنڈا لیکر میدان عمل میں ہے جس کی وجہ سے ریاست مخالف عناصر کمزور ہوئے ہیں اب وہ وقت چلا گیا کہ مذہبی جماعتوں کو لیکر پیپلزپارٹی کو کمزور کیاجائے اگر عوامی طاقت کو کسی اور قوت کے ذریعے روگا گیا تو محسن داود جیسے لوگ آئیں گے۔ انہوںنے کہاکہ پیپلزپارٹی گلگت بلتستان کے آئندہ انتخابات میں اپنے ایجنڈے کے ساتھ اترے گی۔وکٹیں صرف حکومت کی گرینگے چاہے وہ جی بی کی ہو یا وفاق کی ہو۔ پیپلزپارٹی چھوڑنے والوں کے لئے دو دروازوں کے ساتھ ایک کھڑکی بھی کھلی ہے وفاقی حکومت کا ایجنڈا عوام کو رلانا ہے جس کا اثر اس کی مہنگائی کا پیکیج دکھا رہا ہے جبکہ گلگت بلتستان میں مسلم لیگ ن ایک گلی اور ایک محلے سے نکل کر صرف ایک شخص تک محدود ہوئی ہے ۔ امجد حسین ایڈووکیٹ نے کہاکہ ہنزل پاور پراجیکٹ میں حفیظ الرحمن نے چائینہ کمپنی کے ساتھ ڈیل کیا تھا جس کی وجہ سے معاملہ کٹھائی میں پڑ گیا حفیظ الرحمن کو یہ بات ذہن میں رکھنی چاہئے کہ کریڈٹ اور کمیشن ایک ساتھ نہیں چل سکتے ہیں۔

تازہ ترین خبریں