05:42 pm
امامیہ کونسل وتحریک حمایت مظلومین کامطالبات منظوری کیلئے 10مئی کاالٹی میٹم

امامیہ کونسل وتحریک حمایت مظلومین کامطالبات منظوری کیلئے 10مئی کاالٹی میٹم

05:42 pm

گلگت ( بشارت حسین)تما م مطالبات پر فوری ایکشن نہ لیا گیا تو 10 مئی سے تحریک حمایت مظلومین کے حق میں پورے گلگت بلتستان میں احتجاجی تحریک کا آغاز کیا جائے گا مطالبات کو سنجیدہ نہ لیا گیا تو خطرناک نتائج بر آمد ہوں مرکزی امامیہ کونسل گلگت و تحریک حمایت مظلومین گلگت بلتستان کے رہنماؤں وزیر مظفر عباس، نظام الدین، الیاس صدیقی، غلام حیدر، غلام عباس حاجی صفدر سمیت دیگر نے گلگت پریس کلب میں
پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہاکہ کفر کے ساتھ حکومتیں چل سکتی ہیں لیکن ظلم کے ساتھ نہیں جہاں ظلم ہوگا وہاں بے چینی پھیلے گی جو بھی نا انصافیاں ہوئی ہم نے حکومت کو آگاہ کیا اور ہم نے ہر فورم میں سرکاری اداروں کو آگاہ کیا لیکن مثبت پیش رفت سامنے نہیں آئی۔ اسمبلی نے متفقہ طور پر قرار داد پیش کی لیکن تعجب ہے اسکے خلاف نوٹیفکیشن جاری ہوتا ہے ہمیں مسلکی رنگ دیکر آپس میں الجھائے رکھاگیا اور کھیل کھیلنے والوں نے کھیل کھیل لیا ، مجھے میری اپنی زمین میں گھر بنانے کی اجازت نہیں دی جارہی ہے غیر مقامیوں کو زمین بھی دی جارہی ہے مکانات بھی بنوائے جارہے ہیں چار سال سے ہمیں ایک لیٹر کا جواب نہیں دیا جارہاہے انہوں نے کہاکہ گلگت بلتستان مخلص اور محب وطن عوام کے ساتھ ہونے والی مسلسل زیادتیوں، بنیادی انسانی حقوق کی پامالی خالصہ سرکار کے نام پر عوام کے ملکیتی زمینوں پر ناجائز قبضہ کسی صورت برداشت نہیں سپریم ایپلیٹ کورٹ میں ایک متنازعہ شخصیت کی تعیناتی اور چیف الیکشن کمشنر کیلئے پری پول ریگنگ اور ملک بھر میں محب وطن شیعہ افراد کو اغوایٰ کرنے کی تشویش ناک صورت حال اور حکمرانوں کی طرف سے مسلسل بے چینی اور دشمن پالیسی کیخلاف اپنا احتجاج ریکارڈ کرنے کیلئے پریس کانفرنس کی جارہی ہے، متنازعہ جج کی تعیناتی کو مسترد کرتے ہوئے چیف کورٹ اور سپریم ایپلیٹ کورٹ کے جج کی تعیناتی جوڈیشل کمیشن کے ذریعے کی جائے، سپریم کورٹ آف پاکستان کے حالیہ فیصلے کے مطابق گلگت بلتستان کے عوام کو بنیادی حقوق دیئے جائیں، چیف الیکشن کمشنر کے حولے سے پری پول ریکنگکو مد نظر رکھتے ہوئے بھیجوائی گئی سمری کی واپسی کو فوری واپس لائی جائے اور اس تعیناتی کیلئے اپوزیشن لیڈر کو بھی اعتماد بھی لیا جائے اور گلگت بلتستان کی عدالتوں میں ججز کی تعیناتی میرٹ پر عمل میں لائے جائے۔ گلگت بلتستان میں خالصہ سرکار کے نام پر عوامی ملکتیی زمینوں پر زبردستی قبضہ کسی صورت قبول نہیں الاٹ منٹ کو فوری منسوخ کرکے زمینیں عوام کے حوالے کی جائیں۔ ملک عزیز پاکستان میں گزشتہ کئی سال سے محب وطن لا پتہ افراد کی باز یابی یقینی بنائی جائے اور اس سلسلے میں لاپتہ افراد کی فیملیز کی طرف سے کراچی میں جاری دھرنا کی حمایت کرتے ہیں۔سانحہ 13 اکتوبر 2005 کے نتیجے میں دو سید انیوں سمیت 7 بے گناہ افراد کی شہادت پر مبنی جودیشل انکوائری کو منظر عام پر لایاجائے اور مجرموں کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے، گلگت بلتستان کے سرکاری اداروں میں فرقہ وارانہ ماحول کے فروغ میرٹ کی بد ترین پامالی مسلکی بنیادوں پر بغیر ٹیسٹ انٹر یو بیگ ڈیٹ بھرتیاں اور سرکاری اداروں کی من پسند مقامات پر منتقلی کو ملت تشیع کا معاشی قتل قرار دیتے ہوئے وفاقی حکومت سے اس حساس ایشو پر ایکشن لینے کا مطالبہ کرتے ہیں ۔

تازہ ترین خبریں