05:51 pm
پیپلزپارٹی نے اپنے دورمیں میگاکرپشن،ہم نے میگاڈویلپمنٹ کی،مشیراطلاعات

پیپلزپارٹی نے اپنے دورمیں میگاکرپشن،ہم نے میگاڈویلپمنٹ کی،مشیراطلاعات

05:51 pm

گلگت (اوصاف نیوز) مشیر اطلاعات گلگت بلتستان شمس میر نے کہا ہے کہ پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن کی صوبائی حکومتوں میں فرق یہ ہے کہ پیپلز پارٹی نے اپنے دور میں میگا کرپشن کی ہے اور ہم نے میگا ڈویلپمنٹ کی ہے۔ مشیر اطلاعات گلگت بلتستان شمس میر نے مزید کہا کہ امجد ایڈووکیٹ نے ان 4 سالوں میں صرف گلگت بلتستان کی ترقی کی مخالفت کی ہے۔ ہر عوامی منصوبے کیخلاف عدالت سے سٹے لینے کی مذموم سازش کی ہے
۔ مسٹر سٹے نے نئے اضلاع سے لیکر آرڈر 2018 ء تک گلگت بلتستان کو نقصان پہنچانے کا کوئی موقع ہاتھ سے جانے نہیں دیا ہے۔ موصوف بغض حفیظ میں گلگت بلتستان کی عوام کے مفادات اور تعمیر و ترقی کیخلاف سرگرم رہے۔امجد ایڈووکیٹ اور 4 کے ٹولے نے گلگت بلتستان کے ترقیاتی عمل میں روڑے اٹکانے کی ہر ممکن کوشش کی لیکن صوبائی حکومت نے سکردو روڈ سے لیکر کینسر ہسپتال تک کا ہر منصوبہ بنایا۔ آج وزیر اعلیٰ حافظ حفیظ الرحمن اور صوبائی حکومت کے ہر ہر عوامی نمائندے کا منصوبہ تکمیل کے مرحلے پر ہے جس کی وجہ سے امجد ایڈووکیٹ، پی ٹی آئی اور اپوزیشن کے اوسان خطا ہو گئے ہیں۔ مشیر اطلاعات نے کہا کہ امجد ایڈووکیٹ سید رضی الدین مرحوم کی پبلک اکا?نٹس کمیٹی کی رپورٹ بھی کبھی پڑھ لیں جس میں مرحوم نے پیپلز پارٹی کی سابقہ صوبائی حکومت کی میگا کرپشن کے ہوشربا انکشافات فرمائے تھے۔ شمس میر نے کہا کہ نیب کو مہدی شاہ حکومت کے 4 کے ٹولے کی کرپشن پر تحقیقات کرنی چاہیے۔ نیب 4 کے ٹولے سے پوچھے کہ سابق حکومت نے ترقیاتی فنڈز کہاں غائب کر دئیے تھے کیونکہ گلگت بلتستان میں امجد ایڈووکیٹ کی سابقہ پی پی پی حکومت نے اپنے 5 سالہ دور میں ایک نلکا تک نہیں لگایا۔ گندم سبسڈی میں اربوں کی کرپشن سے مہدی شاہ تا امجد ایڈووکیٹ کے ہاتھ رنگے ہوئے ہیں بلکہ موصوف ایڈووکیٹ بطور سابق ممبر کونسل عوام کو جواب دیں کہ ان کی زاتی عوامی سکیموں کے کروڑوں روپے کہا ں ہیں کیونکہ موصوف نے اپنیپانچ سالہ دور ممبری میں ایک ٹینکی تک تعمیر نہیں کروائی ہے۔ مشیر اطلاعات نے کہا کہ ہمارے 200 ارب روپے کے منصوبے جون 2020 سے پہلے عوام کے سامنے ہونگے۔ ویسٹ مینجمنٹ سے لیکر بلتستان یونیورسٹی، استور روڈ سے لیکر سکردو روڈ، کینسر سے لیکرامراض قلب ہسپتال، واٹر سپلائی سے لیکر انجینئرنگ کالج، 8 نئے اضلاع اور دیگر سینکڑوں منصوبے مکمل ہوکر عوام کے سامنے ہونگے۔ شمس میر نے کہا کہ گلگت بلتستان کی عوام اب کارکردگی دیکھتی ہے امجد ایڈووکیٹ کی طوطا کہانی نہیں سنتی۔ انہوں نے کہا کہ حقیقت یہ ہے کہ وزیر اعلیٰ حافظ حفیظ الرحمن اور صوبائی حکومت نے گورننس اور کارکردگی امجد ایڈووکیٹ اور ان جیسے اور بہت سوں کی جعلی سیاسی دکانیں بند کر دی ہیں۔ جس کی وجہ سے یہ لوگ ذاتی الزام تراشی اور کردار کشی تک پہنچ گئے جو قابل مذمت ہے۔ شمس میر نے کہا کہ وزیر اعلیٰ حافظ حفیظ الرحمن معمارِ گلگت بلتستان ہے جو تعمیر و ترقی کی سنہری تاریخ رقم کر رہا ہے۔

تازہ ترین خبریں