05:58 pm
جی بی کا امن مثالی،صوبے کوترقی یافتہ بنائینگے(وزیراعلیٰ)

جی بی کا امن مثالی،صوبے کوترقی یافتہ بنائینگے(وزیراعلیٰ)

05:58 pm

گلگت (محمد ذاکر سے) وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہاہے کہ صوبائی حکومت نے گلگت بلتستان میں معیاری تعلیم کے فروغ کے لئے کوشاں ہیں چار سالوں میں چالیس پرائمری سکولوں کا قیام عمل میں لایا گیا ہے حکومت نے تعلیم کے فروغ کے لئے مفت کتابوں سمیت یونیفام تک مفت کردیا ہے اب کوئی بچہ سکول سے باہر نہیں رہنا چاہئے اب بھی سرکاری سکولوں کی کارکردگی بہتر نہ ہوئی
تو سرکاری سکولوں پر تالے لگاکر متعلقہ ذمہ داران کے خلاف سخت ایکشن لوں گا۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان نے ان خیالات کااظہار سب ڈویژن جگلوٹ میں ویسٹ مینجمنٹ کے افتتاحی تقریب میں عوام سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوںنے کہاکہ گلگت بلتستان امن کے لحاظ سے ملک کا مثالی صوبہ بن گیا ہے ہم اس امن کو ترقی میں بدل دینگے۔ سب ڈویژن جگلوٹ کے سڑکوں کو میٹل کرنے سمیت دیگر عوامی منصوبوں کے لئے 2 ارب کے منصوبے دئیے ہیں عنقریب جگلوٹ کے سڑکوں کو میٹل کرکے گلی گلی میں ٹف ٹائیل لگادیں گے جب عوام کے لئے دوارب کے منصوبے دئیے ہیں تو 60 لاکھ روپے کا ٹف ٹائیل لگانا میرے لئے بڑی بات نہیں خطے کی تعمیروترقی کے لئے اجتماعی روپے تبدیل کرنے ہونگے۔ انہوںنے کہاکہ صفائی نصف ایمان ہے حکومت نے گلگت بلتستان باالخصوص سب ڈویژن جگلوٹ کو ماڈل شہر بنانے کے لئے اقدامات کررہی ہے علماء کرام جمعہ کے خطبات میں صفائی کے حوالے سے عوام میں شعور اجاگر کرنے کے لئے کلیدی کردار ادا کریں میں چاہتا ہوں کہ اگلی حکومت مسلم لیگ ن کی بنے یا نہ بنے عوام خود اپنے پائوں پر کھڑے رہیں۔ انہوںنے کہاکہ ماضی کی حکومتوں نے عوام کو سوتیلی ماں جیسا سلوک کرکے خطے کو کھنڈرات میں تبدیل کردئیے تھے مگر مسلم لیگ ن کی صوبائی حکومت نے تعمیروترقی کے ذریعے سب ڈویژن جگلوٹ میں روزگار کے بے شمار مواقع فراہم کردئیے ہیں اب بھی سب ڈویژن میں سو فیصد ملازمتیں درکار ہیں ہم چاہتے ہیں تعمیروترقی کے ساتھ ہی عوام خوشحالی کی زندگی گزاریں۔ انہوںنے کہاکہ مسلم لیگ ن حکومت نے قانون ساز اسمبلی میں ایکٹ پاس کرکے قائدہ کلاس سے ساتویں کلاس تک ناظرہ جبکہ ساتویں کلاس سے میڑک تک قرآن کا ترجمہ لازمی قرار دیا ہے عوام کی ڈیمانڈ پر ہر ہفتے مڈلز اور پرائمری سکولز تعمیر کررہے ہیں مجھے سرکاری سکولوں کی کارکردگی چاہئے حکومت نے دیامر میں بچوں کے داخلے کے لئے 8 ہزار کا ٹاسک دیا تھا لیکن دیامر میں 10 ہزار بچوں نے سرکاری سکولوں کے رخ کئے ہیں حکومت نے محکمہ تعلیم کو سہولیات فراہم کرکے فعال ادارہ بنادیا ہے اب کوئی شکایات موصول نہیں ہونی چاہئے اگر آئندہ کوئی شکایت موصول ہوئی تو اساتذہ سمیت متعلقہ ذمہ داران کے خلاف سخت ایکشن لوں گا۔ انہوںنے کہاکہ صوبائی حکومت خطے میں صفائی نظام یقینی بنانے کے لئے اقدامات کررہی ہے عوام کا بھی فرض بنتا ہے کہ وہ صفائی کا خاص خیال رکھیں اور ویسٹ مینجمنٹ ادارے کے ساتھ مکمل تعاون کریں بہت جلد سب ڈویژن جگلوٹ میں ویسٹ مینجمنٹ ادارے کومیونسپل کمیٹی کا درجہ دیاجائے گا۔گلگت (اوصاف نیوز) وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا ہے کہ کینسر اور کارڈیک ہسپتال مسلم ل(ن) کے قائد محمد نواز شریف کی جانب سے گلگت بلتستان کے عوام کیلئے بڑے تحفے ہیں ماضی ایسے منصوبوں کی تعمیر کا تصور بھی نہیں کیا جاسکتا تھا۔ کینسر ہسپتال پر جاری کام کی رفتار اور میعار قابل تحسین اور تسلی بخش ہے۔ اکتوبر تک کینسر ہسپتال کی اوپی ڈی کو فعال کیا جائے۔ گلگت بلتستان کیلئے کینسر ہسپتال نہ ہونے کی وجہ سے یہاں کے غریب مریضوں کو بھاری اخراجات ادا کرکے دیگر صوبوں اور اسلام آباد جانا پڑھتا ہے۔ اس ہسپتال کی تعمیر سے کینسر سے متعلق مریضوں کو انکے دہلیز پر علاج کی سہولت میسر آئیگی۔ ان خیالات کا اظہار وزیراعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے پاکستان اٹامک انرجی کمیشن کی جانب سے کینسر ہسپتال کی تعمیر اور مشینری کی خریداری کے حوالے سے دیے جانے والے بریفنگ کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ صحت حکومت گلگت بلتستان کی ترجیحات میں شامل ہے اسی لئے صحت کے شعبے میں اصلاحات کیے گیے ہیں ڈاکٹروں کی کمی کا مسئلہ حل ہوا ہے۔ صحت کے شعبے میں انڈومنٹ فنڈ کا قیام عمل میں لایا گیا ہے۔ حکومت نے تمام اداروں میں اصلاحات متعارف کرائے ہیں جسکی وجہ سے ماضی میں دس سالوں میں ایک منصوبہ تعمیر نہیں ہوئے تھے آج تمام ترقیاتی منصوبے مقررہ وقت سے قبل تعمیر ہو رہے ہیں۔ ماضی میں گلگت بلتستان کو نا مکمل منصوبوں کا قبرستان بنایا گیا تھا مسلم لیگ(ن) کی حکومت نے ماضی کے بھی ادھورے منصوبے مکمل کرائے۔ گلگت میں سردیوں کے دوران بجلی بحران پر قابو پانے کیلئے شارٹ ٹرم اور لاننگ ٹرم پالیسی بنائی جارہی ہے توانائی کے متبادل ذرائع متعارف کرائے جارہے ہیں ۔ مسلم لیگ(ن) حکومت کی سوچ تعمیر وترقی کی ہے۔وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا ہے کہ مسلم لیگ(ن) زبانی دعوں اور چھوٹے اعلانات پر نہیں بلکہ عملی اقدامات پر یقین رکھتی ہے۔ ہم اصولوں اور نظریے کی سیاست کرتے ہیں ماضی میںگلگت بلتستان کی تعمیر وترقی پر کسی نے توجہ نہیں دی ہماری حکومت نے ویسٹ مینجمنٹ کمپنی کا قیام عمل میں لایا آج گلگت بلتستان میں دیگر صوبوں سے بہتر صفائی کا نظام موجود ہے۔ حکومت صوبے کی تعمیر وترقی کے حوالے سے اپنا کردار ادا کررہی ہے عوام بھی اپنے حصہ کا کردار ادا کریں تاکہ مل کر تعمیر و ترقی کے اس سفر کو عملی جامع پہنایا جاسکے۔ ان خیالات کا اظہار وزیراعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے جگلوٹ ویسٹ مینجمنٹ یونٹ کے افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ حکومتی اقدامات کی وجہ سے گلگت بلتستان امن کا گہوارہ بن چکا ہے۔ معاشی سرگرمیوں کو فروغ دیا جارہا ہے۔ معاشرے کی سرھار کیلئے ہمیں رویوں میں تبدیلی لانی ہوگی۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ حکومت نے معیار تعلیم کو بہتر بنانے کیلئے بھر پور اقدامات کیے ہیں۔ سرکاری سکولوں میں پڑھنے والے طالب علموں کو مفت کتابیں فراہم کی جارہی ہیں دسویں تک تعلیم لازمی قرار دی گئی ہے۔ جگلوٹ سمیت اور دوردراز علاقوں کے استاتذہ اور انتظامیہ کو سرکاری سکولوں کی انرولمنٹ میں اضافے کیلئے کام کرنا ہوگا۔ ایسے بچوں کی نشاندہی کریں جو سکول نہیں جاتے ہیں اور ان بچوں کو سکول لائیںوزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے مذید کہا ہے کہ حکومت نے بلا تفریق تمام اضلاع کو اربوں کے ترقیاتی منصوبے دیے ہیں عوام کی ذمہ داری ہے ان منصوبوں کی نگرانی کریں۔ ان خیالات کا وزیراعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے دورہ جگلوٹ کے موقع پر عوام سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ وزیراعلیٰ نے فالکن10بیڈ ہسپتال کے کام کامعائینہ کیا اور منصوبے کو مقررہ مدت میں مکمل کرنے کی ہدایت کی۔ وزیر اعلیٰ نے ڈموٹ پولو گراونڈ کا بھی افتتاح کیا اور کہا کہ ڈموٹ میں جدید پولو گراونڈ کی تعمیر سے یہاں کے نوجوانوں کے مثبت سرگرمیوں کو فروغ ملے گا۔ بعد ازیں وزیراعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے جگلوٹ10بیڈ ہسپتال کا اچانک دورہ ک یا ایمرجنسی میں ادویات کی عدم فراہمی کے حوالے سے شکایات کا نوٹ لیتے ہوئے متعلقہ آفیسران پر برہمی کا ظہار کیا اور کہا کہ حکومت نے ایمرجنسی فری کر دیا ہے ہسپتالوں کو وسائل فراہم کیے ہیں۔ جس ہسپتال میں ایمرجنسی میں مفت علاج نہیں کرنے کی شکایت موصول ہوگی اسکے متعلقہ آفیسران کے خلاف کاروائی ہوگی۔ صوبے کے تمام ہسپتالوں میںایمرجنسی مفت کی گئی ہے۔ وزیراعلیٰ نے20بیڈ ہسپتال جگلوٹ کے جاری کام کا معائینہ کیا اور کام کے میعار اور رفتار پر اطمنان کا اظہار کیا۔گلگت (اوصاف نیوز)وزیراعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہا ہے کہ گلگت بلتستان کے عوام نے امن اور ترقی کے ایجنڈے کی وجہ سے مسلم لیگ (ن) کو مینڈیٹ دیا جب سے گلگت بلتستان میں مسلم لیگ(ن) کی حکومت بنی ہے آج تک کوئی دہشت گردی کا واقع نہیں ہوا ہے۔ گلگت بلتستان امن کا گہوارہ بن گیا ہے۔ روشنیاں بحال ہوئی ہیں۔ معاشی سرگرمیوں کو فروغ مل رہا ہے سابقہ حکومت میں400 سے زیادہ بے گناہ لوگوں کو مارا گیا۔ گلگت بلتستان حکومتی اقدامات کی وجہ سے امن کا گہوارہ بن چکا ہے ملک اور بیرونی ملک سے سیاحوں کی بڑی تعداد گلگت بلتستان آرہی ہے کھیلوں کے گراونڈز آباد ہوئے ہیں۔ نوجوانوں کے مثبت سرگرمیوں کو فروغ دیا جارہا ہے۔ وسائل کے منصفانہ تقسیم اور گڈ گورننس کو یقینی بنایا گیا ہے۔ تمام اضلاع میں میگا منصوبے تعمیر ہورہے ہیں جن کا ماضی میں کوئی تصور بھی نہیں کرسکتا تھا۔ عوام تعمیر وترقی کے اس سفر کوآگے بڑھانے کیلئے اپنا بھر پور کردار ادا کریں اور آئندہ کیلئے بھی ترقی کے اس جاری سفرکی نگرانی کرنے کیلئے ایک باشعور قوم ہونے کا ثبوت دیں جو لوگ چند ووٹوں کیلئے قومیت ، مذہب اور علاقائی تقسیم کرنے کی سازشیں کریں انکے عزائم کو سب نے مل کر نا کام بنانا ہے ۔ ان خیالات کا اظہار وزیراعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے جگلوٹ میں کرکٹ میچ کے اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ جگلوٹ کے عوام نے ہمیشہ مسلم لیگ (ن) کے قائد محمد نواز شریف کے ایجنڈے کو سپورٹ کیا ہے۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ حکومت نے پرائیوٹ سودی نظام کو قابل جرم بنایا ہے جس کیلئے قانون سازی کی گئی ہے علماء کرام اس حوالے سے اپنا کردار ادا کریں تاکہ پرائیوٹ سودی کاروبار کرنے والوں کے خلاف کاروائی عمل میں لائی جاسکے۔ پرائیوٹ سود کا کاروبار کرنے والوں کی نشاندہی کریں پولیس انکے خلاف کاروائی عمل میں لائی گی۔ پرائیوٹ سود کا کام کرنے والوں کی حوصلہ شکنی کیلئے وزیراعلیٰ بلا سود قرضوں کی سکیم متعارف کرائی گئی ہے۔

تازہ ترین خبریں