06:06 pm
چیف کورٹ،سہیل عالم قتل کیس کے ملزم کی سزائے موت برقرار(10ورثاء کودینے کاحکم)

چیف کورٹ،سہیل عالم قتل کیس کے ملزم کی سزائے موت برقرار(10ورثاء کودینے کاحکم)

06:06 pm

گلگت (اوصاف نیوز) جسٹس ملک حق نواز کی سربراہی میں جسٹس علی بیگ پر مشتمل چیف کورٹ کی ڈویژن بنچ نے سہیل عالم کے قاتل سید عالم داریل دیامر کا سزاء موت برقرار رکھتے ہوئے 10 لاکھ روپے مقتول کے ورثا کو ادا کرنے کا حکم دیدیا۔ تفصیلات کے مطابق جسٹس ملک حق نواز اور جسٹس علی بیگ پر مشتمل چیف کورٹ کی ڈویژن بنچ نے سہیل عالم کے قاتل سید عالم داریل کو ٹرائل کورٹ ایڈیشنل سیشن جج دیامر کے سزائے موت کے سزاء کو
برقرار رکھتے ہوئے مقتول کے ورثا کو 10 لاکھ روپے ادا کرنے کا حکم دیدیا مقتول سہیل عالم کو سید عالم نے 15 جولائی 2015 کو فائرنگ کرکے قتل کیا تھا پولیس نے ملزم زیر دفعہ 302 ت پ ایف آئی آر نمبری 23/15 اور 13 اے او ایف آئی آر نمبری 27/20/15 پولیس تھانہ داریل دیامر میں مقدمہ قائم کرکے ملزم کو گرفتار کرکے جوڈیشل کردیا تھا چالان مکمل کرکے عدالت میں پیش کیا گیا فاضل عدالت ایڈیشنل سیشن جج دیامر نے ملزم 21 ستمبر 2017 کو سزائے موت اور جرمانے کا سزاء سنایا تھا ملزم نے اس فیصلے کو چیف کورٹ میں چیلنج کیا تھا ۔چیف کورٹ کے جسٹس ملک حق نواز اور جسٹس علی بیگ نے مقدمے کی سماعت کرتے ہوئے 29 اپریل 2015 کو دلائل سن کر فیصلہ محفوظ کیا تھا گزشتہ روز جسٹس ملک حق نوا ز نے ڈویژن بنچ میں فیصلہ سناتے ہوئے ملزم سید عالم کو سزائے موت کی سزا کو برقرار رکھتے ہوئے مقتول کے وارث کو دس لاکھ روپے ادا کرنے کا حکم سنا دیا اس کے علاوہ فاضل بنچ میں فوجداری دیوانی اور رٹ پٹیشن کے 46مقدمات سماعت کیلئے مقرر ہوئے، فاضل بنچ نے تین پر فیصلہ جبکہ چھ مقدمات پر بحث سن کر فیصلہ محفوظ کر دی۔سرکار کی جانب سے ڈپٹی ایڈووکیٹ جنرل ملک شیر باز اورمنظور احمد ایڈووکیٹ نے عدالت میں دلائل دیئے۔

تازہ ترین خبریں