05:39 pm
محکمہ واساواٹرواٹرفلٹریشن پلانٹس بحال کرنے میں ناکام،مشینری چوری

محکمہ واساواٹرواٹرفلٹریشن پلانٹس بحال کرنے میں ناکام،مشینری چوری

05:39 pm

گلگت ( رپورٹ : وقائع نگار خصوصی ) گلگت شہر و مضافات میں کروڑوں کی خطیر رقم خرچ کرکے عوام کو صاف پانی مہیا کرنے کیلئے بنائے گئے درجنوں واٹر فلٹریشن پلانٹس بند ہو گئے ، محکمہ واسا واٹر فلٹریشن پلانٹس کی بحالی میں ناکام ہو گیا ، مشینری چوری ہو چکی ، صرف ڈھانچھے رہ گئے ، سروے کے دوران شہری محکمہ واسا کے متعلقہ ذمہ داران کے خلاف پھٹ پڑے ، چیف سیکریٹری سے فور نوٹ سلیکر صاف پانی فراہمی کو یقینی بنانے کا مطالبہ ،
اوصاف سروے کے دوران اداروں کے تنازع کے باعث واٹر فلٹریشن پلانٹس کا منصوبہ مکمل ناکام ہو گیا ہے ، سابقہ دور حکومت میں صاف پانی کی فراہمی کیلئے کروڑوں کی رقم خڑچ کرکے گلگت شہر و مضافات میں پچاس سے زائد فلٹریشن پلانٹس لگائے گئے تھے ان فلٹریشن پلانٹس میں صاف پانی کی فراہمی آرسینک ایمول پلانٹس سمیت فلٹرز موجود تھے تاکہ ان علاقوں میں صاف پانی کی فراہمی ممکن ہو وہاں صاف پانی پہنچ سکے تام موجودہ دور حکومت میں ان پلانٹس کی جانب کوئی توجہ نہیں دی گئی، سروے کے مطابق کروڑوں کی خطیر رقم خرچ کرکے بنائے گئے فلٹریشن پلانٹس بند ہونے سے کشروٹ ، کلمہ چوک ، سونیکوٹ ، یادگار محلہ ، جوٹیال ، جماعت خانہ بازار ایریا ، بسین ، امپھری ، کنوداس سمیت دیگر محلوں کے عوام صاف پانی سے محروم ہیں شہریوں کا کہنا ہے کہ حکومت کی عدم دلچسپی کے باعث درجنوں فلٹریشن پلانٹس نہ صر ف بند پڑے ہیں بلکہ پلانٹ کے اندر لگی مشینری بھی چوری ہو چکی ہے اور فلٹڑیشن پلانٹ کے صرف ڈھانچے رہ گئے ہیں ، شہریوں نے اوصاف سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ گلگت شہر میں درجنوں فلٹریشن پلانٹس بنائے گئے مگر صرف ایک ہی ٹھیکیدار کو فائدہ دینے کیلئے مزید مرمت کے نام پر کروڑوں خرچ کئے گئے مگر عوام صاف پانی سے محروم ہیں اور مقدس ماہ میں بھی پانی کی بوند بوند کو ترس رہے ہیں ۔ شہریوں نے چیف سیکریٹری گلگت بلتستان سے مطالبہ کیا ہے ہ فوری نوٹس لیکر گلگت شہر و دئیگر مضافات میں درجنوں فلٹریشن پلانٹس کو بحال کرکے عوام کو صاف پانی فراہمی کیلئے اقدامات اٹھائے جائیں ۔

تازہ ترین خبریں