05:58 pm
مہنگائی کی لہر،تجارتی مراکزسنسان،تاجربرادری شدیدپریشانی میں مبتلا

مہنگائی کی لہر،تجارتی مراکزسنسان،تاجربرادری شدیدپریشانی میں مبتلا

05:58 pm

نگر ( اقبال راجوا) مہنگائی کی سونامی مین کمرشل ایریاء میں مارکیٹوں میں خریدار نہ اانے کی وجہ سے دکاندار پریشان ، دکانداروں کا کہنا ہے کہ اس سال عوام الناس پچھلے سال کی نسبت نصف سے بھی کم سودا سلف لینے مارکیٹوں میں آتی ہے ۔ تفصیلات کے مطابق اس سال مارکیٹوں میں کھانے پینے کی اشیاء سمیت پہننے اور دیگر استعمال کی اشیاء میں قیمتوں میں نمایاں اضافے کے سبب عوام بال خصوص خواتین اور بچے میں
کمرشل ایریاء چھلت کی مختلف مارکیٹوں میں عید اور رمضان المبارک کی دیگر ضروریات کی شاپنگ کے لئے نہیں آرہے ہیں ۔ عوام الناس سے معلوم کیا جائے تو بتایا جاتا ہے کہ اس سال لوگوں کے پاس نہ تو پیسے ہیں اور نہ ہی مہنگائی کم ہو رہی ہے ۔ جو پیسے ہیں ان کو بھی مہنگائی میں تیز رفتاری سے اضافے کی ڈرسے لوگ بینکوں اور دیگر مالیاتی اداروں سے نکال کر خرچنے سے کتراتے ہیں ۔ دکاندارو ں کا کہنا ہے کہ کچھ لوگ جن کے پاس کافی پیسہ ہے انہوں نے اپنی ضروری خریداری اور عید تک کی شاپنگ 80فیصد مکمل بھی کر لی ہے لیکن عام لوگ جن کے پاس ایک مخصوس گنی چنی رقوم ہوتی ہیں انہوں نے اپنی جمع پونجی ابھی تک مارکیٹ میں انتہائی ضروری سامان کے علاوہ سودا سلف لینے کے لئے نہیں نکال لیا ہے ۔ گزشتہ سالوں رمضان المبارک میں دن کے وقت مختلف مارکیٹوںمیں انتہائی درجے کا ر دیکھنے کو ملتا تھا لیکن اس سال سابقہ سالوں کے مقابلے میں یہ رش نصف سے زیادہ کم نظر آتا ہے ۔ دکاانداروں نے اس بات پر بھی شدید پریانی کا اظہار کیا سکہ ڈالر کی قیمتوں کا میڈیاء میں ور شرابے سے بھی عوام کی قوت خرید کے حس میں انجماد آتا ہے گاہک محض اپنی انتہائی ضرورت کے علاوہ بینکوں اور مالیاتی اداروں سے پیسے نکال کر خرچنے سے احتیاط برتتا ہے ۔ بحر حال مارکیٹ میں گاہکوںکی کمی کے سبب دکانداروں کی پریشانی اپنی جگہ لیکن عوام الناس کو بھی اعتماد ہوتا نظر نہیں آرہا ہے۔

تازہ ترین خبریں