عوامی ایکشن کمیٹی کی عارضی ملازمین و حکومت کے مابین ثالثی کیلئے پیشکش
  12  جنوری‬‮  2018     |     گلگت بلتستان

گلگت (خبرنگار ) عوامی ایکشن کمیٹی نے عارضی ملازمین اور حکومت کے مابین ثالثی کیلئے پیشکش کر دی ، جمعہ کے روز اتحاد چوک میں عارضی ملازمین کے دھرنے سے خطاب کرتے ہوئے چےئرمین عوامی ایکشن کمیٹی مولانا سلطان رئیس نے حکومت پر سخت تنقید کرتے ہوئے کہا کہ حکومت نے اپنے تنخواہوں میں تین سو فیصد اضافہ کر دیا ہے اور چند ہزار عارضی ملازمین کو مستقل کرنے کیلئے حیلے بہانے کررہی ہے ، مشیروں کی غیر ضروری فوج بھرتی کی گئی ہے جبکہ اپنے مستقل ذریعہ معاش کیلئے پنشن کی قرار داد بھی پیش کرنے کی تیاریاں ہیں اگر کفر کی حکومت ہوتی تو ہم خاموش رہتے لیکن ظلم کی حکومت ہے جس پر کبھی خاموش نہیں رہ سکتے ہیں ۔ حکومت ہوش کے ناخن لیتے ہوئے سابقہ غلطیوں کو نہ دہرائے

اور فوری طور پر عارضی ملازمین کے چارٹر آف ڈیمانڈ کے مطابق مذاکرات شروع کریں ، انہوں نے کہا کہ انتظامیہ کی ذمہ داری احتجاجی ملازمین کو سیکورٹی دینے کی ہے نہ کہ ڈرانے ، دھمکانے اور کریک ڈاؤن کرنے کی ، اگر انتظامیہ نے پر امن احتجاج کر منتشر کرنے کیلئے گرفتاریاں کیں تو سب سے پہلے گرفتاری میں دونگا ۔ مولانا سلطان رئیس نے کہا کہ حکومتی چھتری تلے عارضی ملازمین اسمبلیوں تک پہنچتے ہیں اور وزیر مشیر اور عیگد عہدوں پر براجمان ہیں اگر ان کی تنخواہوں سے چوتھا حصہ ہی کم کر دے تو ان ملازمین کی تنخواہیں پوری ہونگی چیف سیکریٹری سے مطالبہ کرتے ہیں کہ ذاتی دلچسپی لیکر ملازمین کے مسائل حل کریں یہ معاملہ سینکڑوں گھرانوں کا ہے


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

گلگت بلتستان

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved