نگر،میں ابتدائی آزمائش کے لئے40 پاستہ کے پودے منگوائے ہیںط
  13  فروری‬‮  2018     |     گلگت بلتستان

نگر ( نمائندہ اوصاف) میں ابتدائی آزمائش کے لئے40 پاستہ کے پودے منگوائے ہیں ڈی ڈی اگریکلچر اجلال حسین کا ضلع نگر میں زراعت سے آگاہی مہم کے دوران کسانوں سے رسمی گفتگو، ضلع نگر میں دو فصلی علاقہ ہونے کے ساتھ ضلع نگر میں کل زیر کاشت اراضی کا 65فیصد جبکہ، آبادی 45فیصد حصہ تحصیل چھلت شینبر میں ہے اس لحاظ سے زرعی منصوبہ بندی کی جائے ۔ ڈپٹی ڈائیریکٹر محکمہء زراعت نگر اجلال حسین کو تحصیل چھلت شینبر میں چالیس سے زیادہ کسانوں کا مطالبہ۔ یہاں ڈی ڈی ایلہ جی آر ڈی نگر اجلال حسین کی جانب سے زرعی اجناس اور اس کے جدید ،بہتر اور محفوظ طریقوں سے زراعت کرنے کے حوالے سے پانچ روز قبل بلند ترین وادی ہوپر سے شروع ہونے والے گھر گھر مہم کے دوران کسانوں نے کہی۔ کسانوں سے تجاویز طلب کرنے پر معروف کسان نمبر دار اعلیٰ آزاد علی ،زوار محمد شفا،اکبر حسین،فدا علی اور دیگر کسانوں نے مطالبہ کیا کہ ہم اپنے آباو اجداد کے کئی سو سال پرانے طریقوں سے زراعت کرتے ہیں اور سمجھتے ہیں کہ یہی بہترین طریقہ ہے ۔ کبھی کبھار کوئی نجی تنظیم چند گھنٹوں کے لئے یہاں آکر ہمیں بنیادی معلومات دیتی ہے اس کے سوا ہمیں نہ ایگریکلچر بینک سے کسی منصوبہ بندی کے تحت قرض ملتا ہے اور نہ ہی کوئی اور سرکاری ادارہ ہمیں کچھ رہنمائی کرتا ہے ۔ ایل ایس او ای کچھ مخصوص افراد کے ساتھ کھا پی کے چلے جاتے ہیں ۔ ڈی ڈی اجلال حسین نے بتایا کہ اب میں نے زمہ داریاں سنبھالتے ہی

عوام سے براہ راست مل کر منصوبندی کرنا ہے اس لئے تمام علاقوں میں عوام سے ملکر ان کی مشکلات و مسائل سے آگاہ ہو رہا ہوں ۔ میں اسی حساب سے منصوبہ بندی کر کے اپنے محکمے کے زمہ داروں تک پہنچا دوں گا انشاء اللہ بہتری پیدا ہوگی۔ انہوں نے کسانوں سے سوالات بھی لئے۔ انہوں نے بتایا کہ نگر کی سرزمین پاستہ کا پودا اگانے کے لئے بہترین ہے اور دنیا میں پاستہ بیش قیمت داموں فروخت ہوتا ہے۔ انہوں نے نگر کے مختلف علاقوں سے مٹی بلتستان میں مٹی ٹیسٹنگ لیبارٹری میں بھیج کر زمین کی کیفیت معلوم کرنے کا بھی بتایا۔انہوں نے بتایا کہ ضلع نگر کے لئے واحد نرسری پسن کے مقام پر قائم کی گئی ہے۔جبکہ المصطفےٰ ٹریڈرز کو تین سو کے قریب آلو کے بہتر بیج دئے جا چکے ہیں ۔ایک پرو گرام کے مطابق ایفاد نے گلگت بلتستان میں 40ہزار ٹن بیج پیدا کرنا ہے ۔ بعد ایگریکلچر اسسٹنٹ رمضان علی نے کسانوں کو مختلف طریقوں سے شاخ تراشی اور پیوند کاری کرنے کے علاوہ امریکن سنڈیوں کے خاتمے کا طریقہ کار بھی بتایا ۔کسانوں نے ڈی ڈی ایگریکلچر کو آگاہی مہم شروع کرنے پر خوبصور ت الفاظ میں خراج تحسین پیش کیا اور ان کا شکریہ بھی ادا کیا۔ ڈی ڈی ایگریکلچر بر ویلی روانہ ہو گئے۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

گلگت بلتستان

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved