گلگت،مقامی اخبار کے دفتر پر پولیس کا غیر قانونی چھاپہ قابل مذمت ہے
  13  فروری‬‮  2018     |     گلگت بلتستان

گلگت( اوصاف نیوز)مقامی اخبار کے دفتر پر پولیس کا غیر قانونی چھاپہ قابل مذمت ہے۔یہ آزاد صحافت پر قدغن لگانے اور گلہ گھونٹنے کے مترادف ہے۔ایسے صحافت دشمن واقعات سے حکومت اور پولیس فورس کی بدنامی ہوجاتی ہے۔حکومت اور آئی جی پی واقعے کی غیرجانبدارانہ تحقیقات کرواکر ملوث افراد کو قانون کے مطابق سزادے تاکہ آئندہ پھر ایسا واقعہ رونما نہ ہوجائے۔جمعیت علماء اسلام ایسے صحافت دشمن اقدامات کی بھرپور مذمت کرتی ہے۔ان خیالات کا اظہار سیکریٹری اطلاعات و نشریات جمعیت علماء اسلام گلگت مولانا رحمت اللہ سراجی نیمقامی اخبارکے مرکز دفتر پر بغیر نوٹس دیئے پولیس کا غیر قانونی چھاپہ مارنے صحافیوں اور ورکرز کو ہراساں کرنے اورہتک آمیز سلوک کرنے پر شدید الفاظ میں مذمت کی اور ایسے بدترین پولیس گردی قرار دیتے ہوئے کہا کہ سکیورٹی کی اہمیت اپنی جگہ اہم ہے پولیس کو امن و امان کے قیام کیلئے قانون کے دائرہ میں رہتے ہوئے چھاپے مار سکتی ہے۔

مگر ان کو ہوٹل اور اخبارات کے دفاتر میں فرق کرنا چاہئے۔محب وطن عوام اور صحافیوں سے وہ رویہ اختیار نہیں کرنا چاہئے جو بھارتی فورسز مقبوضہ کشمیر کے مظلوم عوام کیساتھ روا رکھتی ہے۔انھوں نے کہا کہ جی بی میں امن و امان کے قیام کیلئے صحافتی اداروں اخبارات اور لوکل اخبارات اور لوکل میڈیا کا کلیدی کردار ہے۔مقامی اخبارات محدود وسائل کے باؤجود عوام میں شعور اجاگر کررہے ہیں۔انھوں نے آئی جی پی سے پرزور مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ وہ اس واقعے کی تحقیقات کرائے تاکہ آئندہ ایسے واقعات رونما نہ ہوجائیں جس سے پولیس فورسز کی بدنامی ہوجائے


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

گلگت بلتستان

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved