تازہ ترین  
جمعہ‬‮   14   دسمبر‬‮   2018

شہبازشریف نے گلگت ہسپتال کو کروڑوں مالیت کی جدیدمشینری فراہم کی،ڈاکٹرفرمان


گلگت ( نمائندہ خصوصی ) وزیر اعلیٰ حافظ حفیظ الرحمن کی کاوشوں سے سابق وزیر اعلیٰ پنجاب نے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال گلگت کو کروڑوں مالیت کی جدید مشینری فراہم کی ہے ، بیس کمپیوٹرائزڈ بیڈ ہیں ایک بیڈ کی قیمت تقریباً چار لاکھ روپے ہے ، پانچ جے بی وارمر مشین عطیہ کر دیا ہے ، بیس لاکھ روپے مالیت کا ڈینٹل یونٹ فراہم کیا ہے ، ساڑھے تین کروڑ

کی لاگت سے جدید مرچری یونٹ تعمیر ہو رہا ہے ، ستر لاکھ کی لاگت سے جدید ڈائیلیسز ، الٹراسائونڈ پنجاب حکومت نے عطیہ کر دیا ہے ، ڈائٹ اور ڈائیلیسز کے بجٹ میں اضافہ کر دیا ہے لنگر میں معیاری قسم کے اشیاء خوردونوش فراہم کئے جاتے ہیں ، گیسز ، لیبارٹری اور ریجنٹ کے بجٹ 35لاکھ سے بڑھا کر ساٹھ لاکھ کر دیا ہے ، ویسٹ کو تلف کرنے کیلئے خصوصی طور پر چھ لاکھ کا بجٹ فراہم کر دیا ہے ، ان خیالات کا اظہار ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال گلگت کے میڈیکل سپرٹنڈنٹ ڈاکٹر فرمان اللہ نے اوصاف کو انٹرویو دیتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ حافظ حفیظ الرحمن کی مخلصانہ کاوشوں سے شعبہ صحت میں بے پناہ ترقی ہوتی ہے وزیر اعلیٰ حفیظ الرحمن کی مخلصانہ کاوشوں سے سابق وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہبا زشریف نے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال گلگت کو کروڑوں روپے کی جدید میدیکل مشینری فراہم کی ہے جسکی وجہ سے مریضوں کی تشخیص میں بڑی حد تک آسانی ہوتی ہے یہ نپجاب حکومت کی مہربانی اور وزیر اعلیٰ حفیظ الرحمن کی کاوشوں کا نتیجہ ہے ، بیس جدید اقسام کے بیڈ فراہم کئے ہیں ، ایک بیڈ کی قیمت چار لاکھ روپے ہے ، پانچ وارمر

مشین پنجاب حکومت نے عطیہ کر دیا ہے جس میں پیدائش سے تین ماہ تک کی قیمت پانچ لاکھ روپے ہے تمام یونٹ فعال ہیں سات لاکھ روپے کی جدید ڈاپلر ، الٹراسائونڈ مشین پجاب حکومت نے عطیہ کر دیا ہے جسکی قیمت ستر لاکھ روپے بنتے ہیں میرے سفارش پر میڈیسن بجٹ ایک کروڑ پانچ لاکھ سے بڑھا کر دو کروڑ کر دیا ہے ، ڈائٹ میں نوے لاکھ سے ایک کروڑ کر دیا ہے جبکہ ڈائلیسز میں میری تجویز پر بیس لاکھ روپے بجٹ میں مختص کر دیا ہے ، 2019کے آخر تک ڈائلیسز کیلئے بجٹ موجود ہے ایک ماہ میں کم از کم سو مریضوں کا ڈائیلیسز کیا جاتا ہے بکہ ایک مریض کیلئے روزانہ کم از کم تین ہزار روپے ڈائلیسز پر اخراجات آتے ہیں ، گیسز ، لیبارٹری ، دی ایجنٹ ، ایکسرے کے بجٹ کو پینتیس لاکھ سے بڑھا کر ساٹھ لاکھ کر دیا ہے ، سی ٹی سکین اور ایم آر آئی کے جنریٹر کیلئے دس لاکھ روپے فراہم کر دئیے ہیں ، لیبارٹری اور آپریشن تھیٹر سے آنے والے ویسٹ کو تلف کرنے کیلئے دو مشین نصب کئے گئے ہیں جہاں سرنج اور بلڈ بیگ بھی تلف کئے جاتے ہیں امسال ویسٹ کو تلف کرنے کیلئے خصوصی طور پر چھ لاکھ روپے بجٹ فراہم کیا ہے ، سردیوں میں وارڈ کو

گرم رکھنے کیلئے چوبیس لاکھ روپے فراہم کر دئیے گئے ہیں ، ہسپتال میں زیر استعمال علاج مریضوں کیلئے ناشتہ میں بوائل انڈہ دیا جاتا ہے کچن میں استعمال ہونے والی تمام اشیاء خوردونوش معیاری کمپنیوں کے استعمال کئے جاتے ہیں ، ساڑھے تین کروڑ کی لاگت سے ڈاکٹروں کیلئے چار بید روم کے ہاسٹل تعمیر ہو رہے ہیں اور ساتھ ہی کولڈ روم مرچری بھی تعمیر ہو رہی ہے جہاں پر بیس لاکھ روپے لاگت کے جدید ڈینٹل یونٹ پنجاب حکومت نے فراہم کیا ہے ، جسکا تمام سسٹم کمپیوٹرائزڈ ہے ہاتھ لگائے بغیر اشاروں سے تمام سٹم فعال ہوتا ہے آلات جراحی کر جراثیم سے پاک کرنے کیلئے آٹو سسٹم موجود ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہسپتال میں مریضوں کو تمام سہولیات فراہم کئے جاتے ہیں ۔




 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں


آج کا مکمل اخبار پڑھیں

تازہ ترین خبریں




     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved