03:29 pm
کیا آپ کو معلوم ہے پودے اپنے رشتہ داروں کو پہچان سکتے  ہیں اور انہیں گنتی بھی آتی ہے؟ انتہائی حیران کن حقائق جانئے

کیا آپ کو معلوم ہے پودے اپنے رشتہ داروں کو پہچان سکتے ہیں اور انہیں گنتی بھی آتی ہے؟ انتہائی حیران کن حقائق جانئے

03:29 pm

روم(ویب  ڈیسک) برطانوی شہزادہ چارلس نے کئی سال قبل کہا تھا کہ وہ درختوں سے باتیں کرتے ہیں۔ ان کی اس بات پر ان کا بہت کچھ تمسخر اڑایا گیا لیکن اب درختوں کے متعلق سائنسدانوں نے ایسا دعویٰ کر دیا ہے کہ سن کر یقین کرنا مشکل ہو جائے۔ میل آن لائن کے مطابق اٹلی کی یونیورسٹی آف پیڈوا کے سائنسدانوں نے اپنے اس تہلکہ خیز دعوے میں کہا ہے کہ درختوں کا اگرچہ دماغ نہیں ہوتا لیکن وہ ہو بہو انسانوں ہی کی طرح سیکھتے اور سوچتے ہیں۔ درخت اپنے رشتہ داروں کو پہنچاتے ہیں، فیصلے کرتے ہیں، واقعات کو یاد رکھتے ہیں اور حتیٰ کہ گنتی بھی گن سکتے ہیں۔یہ
حیران کن دعویٰ پروفیسر امبیرٹو کاسٹیلو کی سربراہی میں تحقیق کرنے والی ٹیم نے کیا ہے۔ پروفیسر کاسٹیلو کا کہنا تھا کہ ہمارا یہ دعویٰ عام لوگوں کو حیران کر دے گا لیکن ہم بھی یہ دیکھ کر حیران رہ گئے کہ درخت کس طرح مختلف واقعات کی صورت میں انتہائی پیچیدہ ردعمل کا مظاہرہ کرتے ہیں۔ہماری تحقیق میں کئی ایسے شواہد سامنے آئے ہیں جن سے ثابت ہوتا ہے کہ درخت گفتگو کر سکتے ہیں، چیزوں اور واقعات کو یاد رکھتے ہیں، ان میں فیصلہ سازی کی صلاحیت بھی ہے اور وہ گنتی بھی جانتے ہیں۔یہ تمام صلاحیتیں ہر قسم کے پودوں میں موجود ہونے کا تاحال کوئی ثبوت نہیں ملا مگر مختلف اقسام میں ہم نے یہ چیزیں مشاہدہ کی ہیں۔ مثال کے طور پر ’وینس فلائی ٹریپس‘ (Venus flytraps)اپنی طرف آتے ہوئے اپنے شکار کے قدم گن سکتے ہیں۔یہ پودا اپنے شکار کو اس وقت دبوچتا ہے جب اس کا شکار20سیکنڈ کے وقت میں دو بار اسے ترغیب دیتا ہے۔ اس کا مطلب ہے کہ پودا پہلی بار ملنے والے سگنل کو مختصر وقت کے لیے یاد رکھتا ہے اور دوسری بار سگنل ملنے پر ردعمل دیتا ہے۔ ہم نے اس پودے کو 6انچ سے مسلسل 60بار نیچے گرایا۔ پہلے کئی بار جب اسے گرایا گیا تو اس نے اپنے دفاع میں اپنے پتے بند کر لیے لیکن 60بار گرانے کے بعد اس نے اپنے پتوں کو بند کرنا چھوڑ دیا تھا۔اس کا مطلب یہ تھا کہ پودا سمجھ گیا تھا کہ اتنی بلندی سے گرنے سے اسے چوٹ نہیں آئے گی۔

تازہ ترین خبریں