03:41 pm
ایساکرنیوالے کواللہ تعالیٰ سخت عذاب دے گا،نیافتویٰ جاری

ایساکرنیوالے کواللہ تعالیٰ سخت عذاب دے گا،نیافتویٰ جاری

03:41 pm

قاہرہ (ویب ڈیسک)مصر کی سب سے بڑی دینی درسگاہ اور دارالافتاء جامعہ الازہر کے سربراہ ڈاکٹر احمد الطیب کا کہنا ہے کہ پہلی اہلیہ کو جانتے بوجھتے ظلم کا شکار کرنے کی نیت سے دوسری شادی کرنے والے کو اللہ کے ہاں سخت عذاب دیا جائے گا۔مصر کے ایک سیٹلائیٹ ٹی وی پر اپنے ہفتہ وار پروگرام میں شیخ الازہر نے تعدد ازواج کے معاملے پر اسلامی شرائط کے موضوع پر تفصیلی اظہار خیال کیا۔ انھوں نے کہا
کہ دوسری شادی کے حوالے بیگمات کے درمیان عدل کی شرط نہایت اہم ہے۔انھوں نے کہا کہ عدل کا تصور معاشرت، بچوں کی تعلیم وتربیت، انفاق سمیت چہرے پر مسکراہٹ جیسی امور میں بھی راسخ کیا گیا ہے۔ روز قیامت اللہ کے عذاب سے بچنے کے لئے بیگمات کے درمیان عدل کے اصول کی پیروی ضروری ہے۔شیخ الازہر نے کہا کہ کسی ایک اہلیہ کی جانب زیادہ میلان رکھنے والے شوہر کو روز قیامت اللہ کے سخت عذاب کا سامنا کرنا پڑے گا۔ اگر شوہر نے پہلی بیوی کو دکھ پہنچانے کے لئے دوسری شادی رچائی تو ایسے فرد کو اللہ کے ہاں دردناک عذاب سہنا پڑے گا۔ ایسے پر اللہ کا فرمان "وَلَا تَحْسَبَنَّ اللَّهَ غَافِلًا عَمَّا يَعْمَلُ الظَّالِمُونَ ۚ إِنَّمَا يُؤَخِّرُهُمْ لِيَوْمٍ تَشْخَصُ فِيهِ الْأَبْصَارُ" لاگو ہوتا ہے۔ انھوں نے یہ بات زور دے کر کہی کہ عدل کی شرط مکمل کئے بغیر تعدد ازواج کی اجازت نہیں۔ڈاکٹر احمد الطیب نے کہا کہ پہلی اہلیہ کے ہاں اولاد نہ ہونے کی بنا پر دوسری شادی کی جا سکتی ہے، تاہم اس کے لئے عدل کی شرط لازمی ہے تاکہ پہلی اہلیہ پر ظلم نہ ہو۔ یاد رہے کہ چند روز قبل شیخ الازہر نے ایک فتویٰ نما بیان میں کہا تھا کہ تعدد ازواج عورت پر ظلم ہے۔ انھوں نے کہا کہ جو لوگ تعدد ازواج کو مطلق حکم کے طور پر پیش کرتے ہیں، دراصل ایسی دلیلیں پیش کرنے والے غلطی پر ہیں۔انھوں نے کہا تھا کہ اکثر اوقات تعدد ازواج سے عورت اور بچوں پر ظلم ہوتا ہے۔ اس لئے ہمیں تعدد ازواج کی قرآنی آیت کی تفسیر کرتے ہوئے اس کا پورا مطلب ذہن نشین کرنا چاہے۔ ان کے بقول’’دو، تین یا چار‘‘ کی آیت میں بیان کردہ اجازت مکمل آیت نہیں بلکہ اس کا ایک حصہ ہے۔ اس سے پہلی شرط عدل کی ہے۔ عدل نہ کر سکنے یا نہ ہونے کی صورت میں ایک سے زائد شادی حرام ہے، بلکہ یہ ایک ظلم اور نقصان دہ صورت اختیار کر جاتی ہے، جس سےاجتناب کی تلقین کی گئی ہے۔

تازہ ترین خبریں