03:23 pm
کیپٹل ہل پرحملہ،ٹرمپ فیملی کی لائیو کوریج انجوائے کرنےکی مبینہ ویڈیو وائرل

کیپٹل ہل پرحملہ،ٹرمپ فیملی کی لائیو کوریج انجوائے کرنےکی مبینہ ویڈیو وائرل

03:23 pm

واشنگٹن (ویب ڈیسک )امریکا کی تاریخ میں پارلیمنٹ پر بدترین حملہ کیا گیا، امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے حامیوں نے کیپٹل ہل میں گھس کر توڑ پھوڑ کی اور املاک کو نقصان پہنچایا، اس وقت امریکی صدر اور ان کے اہلخانہ ایک کہاں تھے؟ ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوگئی۔


اس مہنگائی میں گزارا مشکل ہے ، وزیر اعظم چھا گئے پاکستانیوں کی تنخواہیں بڑھانے کا اعلان !
سوشل میڈیا پر وائرل ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے امریکی صدر ٹرمپ اہلیہ میلانیا ٹرمپ حملے کی لائیو کوریج دیکھنے میں مصروف تھے جبکہ ان کے بیٹے ڈونلڈ ٹرمپ جونیئر ویڈیو بنانے میں مگن تھے، یہ ایک تقریب کے مناظر تھے۔ویڈیو کے بارے میں کہا جارہاہے،ٹرمپ فیملی کیپیٹل ہل حملہ لائیو کوریج دیکھتے ہوئے انجوائے کرتی رہی،ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ اہلخانہ اور دوستوں کے ہمراہ موسیقی کے شور میں صدر ٹرمپ مظاہرین کا پارلیمنٹ پر دھاوا اور توڑ پھوڑ ٹی وی اسکرینز پر براہ راست دیکھ رہے ہیں، ہال میں موجود خواتین و دیگر لوگوں کو موسیقی کی دھنوں پر رقص کررہے ہیں۔ویڈیو میں صدر ڈونلڈ ٹرمپ ، ان کے بیٹوں ڈونلڈ ٹرمپ جونیئر اور ایرک ، بیٹی ایوانکا ، مشیر کمبرلی گیلوفائل اور دیگر اعلی عہدیداروں سمیت وائٹ ہاؤس کے چیف آف اسٹاف مارک میڈوز ایک روم میں دکھائے گئے ،انہیں کیپٹل ہل کے آس پاس جمع ہجوم کو ہال میں مشاہدہ کرتے دیکھا جاسکتا ہے,ویڈیو کو سوشل میڈیا صارفین نے تنقید کا نشانہ بنایا ہے ، صارفین نے کہا کہ حملہ منصوبہ بندی تھا۔کیپٹل ہل پر حملے کے بعد صدر ٹرمپ کو فوری طور پر عہدے سے ہٹانے کا مطالبہ کیا جارہاہے،بدھ کو کیپیٹل ہل جہاں کانگریس اور سینیٹ سمیت امریکی حکومت کے اہم دفاتر ہیں وہاں صدر ٹرمپ کے حامیوں نے دھاوا بول دیا جس کے نتیجے میں پانچ افراد ہلاک ہو گئے۔نومنتخب صدر جو بائیڈن نے کیپٹل ہل پر ٹرمپ کے حامیوں کے حملے کو امریکا کی تاریخ کا سیاہ ترین دن قرار دے دیا،جو بائیڈن نے کہا کہ ٹرمپ امریکا کی تاریخ کے سیاہ ترین دنوں میں سے ایک کا سبب بن گئے ہیں،نینسی پلوسی نے ٹرمپ کو خطرناک شخص قرار دیتے ہوئے کہا کہ انہیں اپنے عہدے پر مزید رہنے نہیں دیا جانا چاہیے۔امریکی ایوان کی اسپیکر نینسی پیلوسی نے کہا کہ انہوں نے ملک کے اعلی فوجی قیادت سے بات کی ہے اور خبردار کیا ہے کہ صدر ڈؤنلڈ ٹرمپ جاتے جاتے ایٹم بم ہی نہ گرادیں۔۔۔جوائنٹ چیفس کے چیئرمین مارک ملی سے غیر مستحکم صدر کو دشمنی میں جوہری حملے کا حکم دینے سے روکنے کے لئے احتیاطی تدابیر پر تبادلہ خیال کیا۔یہ پہلا موقع نہیں جب کیپٹل ہل کو نشانہ بنایا گیا بلکہ اس سے پہلے وہاں پر دس حملے ہو چکے ہیں جن میں سے ایک حملہ تو غیر ملکی فوجیوں کی جانب سے بھی کیا گیا تھا۔

تازہ ترین خبریں