تمام محکموں کی ویب سائیڈز بنانے کی طرف پیش رفت شروع
  20  ‬‮نومبر‬‮  2017     |      کشمیر

مظفر آباد ( وقائع نگار) آزاد جموں وکشمیر انفارمیشن اینڈ ٹیکنالوجی بورڈ نے ریاست کے تمام محکموں کی ویب سائیڈز بنانے کیطرف پیش رفت شروع کردی ہے ۔ جسکے تحت سینٹرل لانسزڈیٹا بیس سنٹر قائم کیاجائے گا۔ جسکے لیے پراجیکٹ تیار کرلیا گیاہے جبکہ ٹرانسپورٹ کے کم سے کم استعمال اخراجات کی بچت اور حکومت محکموں کے سیکرٹریٹ ڈویژنل ، ہیڈکواٹرز کے باہم روابط میٹنگز کا ویڈیو کانفرنسز کے ذریعے انعقاد ممکن بنایا جائے گا۔ جس سے وقت کی بچت اور کارکردگی میں تیزئی آجائے گی اور ڈیجیٹل اورگورننس سسٹم کی شروعات ہوسکے گی ۔ سیکرٹری انفارمیشن اینڈ ٹیکنالوجی ٹورازم منصور قادر ڈار نے اس سلسلے میں میٹنگ کے بعد میڈیا کے استفسار پر بتایاڈیٹا میں بیس سسٹم اور سب محکموں کی ویب سائیڈ ز کے تحت انکے فیصلے منصوبہ جات اور کارکردگی ومعلومات عوام کو دینے کمپیوٹر، لیپ ٹاپ ، موبائل سیٹ پر میسر آجائینگی ۔ جسکا آغاز سپریم کورٹ سے ہوچکاہے اور وکلاء مقدمات سے متعلق لوگوں کواپنے مقدمہ کی تاریخ وقت کا پتہ چل جاتا ہے۔ اور جلد ایس ایم ایس سروس بھی شروع ہوگی سینٹرلزائز ڈیٹا بیس کاآئیڈیا پنجاب حکومت کے پنجاب خدمت مرکز کی طرز پر اختیار کیاجارہاہے ۔ انفارمیشن ٹیکنالوجی اس سروس کی معلومات کی سہولت گھر بیٹھے مہیا ہوسکیں محکمہ مال کے جائیداد ودیگر دستیاویزات شہریان کاریکارڈ کو تحصیل کی سطح پر ویب سائیڈز پرمرحلہ وار آگے لایاجارہاہے۔ جسکے تحت بیرون واندرون ملک ریاست کے شہری اپنی جائیداد کے کاغذات ، اسٹیٹ سبجیکٹ ، ڈومیسائل برتھ سرٹیفکیٹ وغیرہ کے متعلق معلومات گھر بیٹھے حاصل کرسکیں گے لیب کا کام آئندہ چار ماہ میں مکمل ہوجائے گا۔ اور وزیراعظم کشمیر ہاؤس ، ، وزیراعظم سیکرٹریٹ مظفرآباد سے تمام ڈویژن کی ہفتہ وار کورسز پر میٹنگز ویڈیو کانفرنس کاآغاز نئے سال کی دوسری سہ ماہی شروع کردینگے اس موقع پر ڈی جی انفارمیشن بورڈ ڈاکٹر خالد لطیف بھی موجود تھے ۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

کشمیر

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved