ہجیرہ،یوم مقبول بٹ تجدید عہد کے طور پر مناتے ہیں
  13  فروری‬‮  2018     |      کشمیر

ہجیرہ(نامہ نگار)قائد کشمیر مقبول بٹ شہید اور شہداء چکوٹھی کی برسی کے موقع پر جموں کشمیر لبریشن فرنٹ و جموں کشمیر سٹوڈنٹس لبریشن فرنٹ کے زیر اہتمام ریلی اور جلسہ عام کا انعقاد،برسی پرگرام میں تحصیل بھر سے رہنماؤں ،کارکنان اور عوام نے بھر پور شرکت کی،قائد کشمیر مقبول بٹ شہیدکے نظریات،قائد تحریک جناب امان اللہ خان کے افکار اور قائد انقلاب محمد یاسین ملک کی قیادت میں مادروطن ریاست جموں کشمیر کی مکمل آزادی ،خودمختاری اور خوشحالی کے حصول کے لیے جدوجہد جاری رکھیں گے یوم مقبول بٹ تجدید عہد کے طور پر مناتے ہیں برسی پروگرام سے مقررین کا خطاب۔تفصیلات کے مطابق جموں کشمیر لبریشن فرنٹ اور سٹوڈنٹس لبریشن فرنٹ کے زیر اہتمام قائد کشمیر مقبول بٹ شہید کی 34ویں برسی کے موقع پر ریلی اور جلسہ عام کا انعقاد کیا گیاجلسہ سے زونل نائب صدر سردار فیاض ،سینئر رہنماؤں سردار طاہر بشیر ،سردار ہارون سرور،ملک امتیازشائق ایڈووکیٹ ،جنرل سیکرٹری جدہ یونٹ راجہ حفیظ،مرتضی چوہدری ،ملک محمد ذوالفقار ،سردار نزاکت علی ،حبیب الرحمان شامی،سردار سہراب ،محسن ممتاز،سردارشاہد اسلم ، ذیشان امین ،شہباز ضیاء ،چوہدری کامران ،قمر الیاس ،سردار عبدالجبار ،افتخار بزمی،سردار افراز عظیم،سردار ممتاز ،ملک عادل ،نعمان کشمیر ی،خان شہزاد،کمانڈر مجید،شیراز کشمیری ،خان مظہر،نفیظ خان،سردار شبیر،معین منہاس،فیضان صغیر،چوہدری حسیب شریف،چوہدری سفیر،راصف کشمیری،عمر حمید،دانش خان،ودیگر نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ قائد کشمیر مقبول بٹ شہید نے مادروطن ریاست جموں کشمیر کی مکمل آزادی ،خودمختاری اورخوشحالی کے حصول کے لیے اپنی جان کا قیمتی نظرانہ پیش کیا اورآزادی کے حصول کی پاداش میں پھانسی کے پھندے کو چوم لیالیکن غاصب کے سامنے سرِ خم نہ ہوئے انہوں نے کہاکہ قائد کے نقش قدم پر چلتے ہوئے شہداء چکوٹھی سمیت دیگر شہداء نے اپنی جانوں کے قیمتی نظرانے پیش کیے اور ثابت کیا کشمیری قوم آزادی کے حصول کے لیے جان کی قربانی دینے سے گریز نہیں کریں گے

انہوں نے کہاکہ آج ریاست جموں کشمیرکے ہر گھر میں نظریات مقبول بٹ پہنچ چکا ہے اور ریاست کے تینوں حصوں سمیت دنیا بھر میں جہاں بھی کشمیر ی آباد ہیں اپنے وطن سے قابض قوتوں کے انخلاء کے لیے برسرے پکار ہیں اور وطن کی آزادی کی جدوجہد میں مصروف عمل ہیں انہوں نے مذید کہاکہ بھارت نے 11فروری1984کو شاہد یہ سوچا ہوگا کہ ایک مقبول بٹ شہید کردیں تو کشمیر میں آزادی کا نام لینے والا کوئی نہیں رہے گا لیکن یہ اسکی بھول ثابت ہوئی مقبول بٹ شہید کی شہادت کے بعدتحریک آزادی کشمیر میں تیزی آئی اور آج تحریک عروج پر ہے انشاء اللہ بہت جلد شہداء کے صدقے ریاست جموں کشمیر ایک آزاد،خودمختارو خوشحال ملک بن کر دنیا کے نقشہ میں ابھرے گا۔جلسہ میں تحصیل بھر سے قافلے پہنچے اور آخر میں شہداء کشمیر اور کشمیر کی آزادی کے لیے دعا کی گئی اور لنگر تقسیم کیا گیا۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کشمیر

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved