آزاد کشمیر میں رواداری کا کلچر ہے،چوہدری عبدالمجید
  13  فروری‬‮  2018     |      کشمیر

میرپور(بیورورپورٹ)سابق وزیر اعظم آزاد کشمیر چوہدری عبدالمجید نے کہا ہے کہ آزاد کشمیر میں رواداری کا کلچر ہے جسے ن لیگ کے وزراء اور ممبران اسمبلی پراکندہ کررہے ہیں اور سابق صدر پاکستان، شریک چیئرمین پیپلز پارٹی کے خلاف جو گندی زبان استعمال کر رہے ہیں وہ قابل مزمت ہے۔ اگر ہم نے ان کے کٹھے چٹھے کھولے تو پھر منہ چھپاتے پھریں گے۔ چوہدری یاسین پارٹی کا سرمایہ ہیں ۔ ان کے بارے میں جو ڈرامہ کیا گیا اس کی بھرپور مزمت کریں گے۔ صحافی اپنی ذمہ داریاں دیانتداری سے سرانجام دیں۔ تنقید برائے اصلاح ہونی چاہئے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پریس کلب میرپور میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ جہاں انہوں نے نومنتخب عہدیداران کو مبارکباد پیش کی اور انہیں گلدستے پیش کئے ۔ ان کے ہمراہ پی پی پی کے راہنماؤں ، غلام رسول عوامی، سابق ڈی جی ایم ڈی اے جاوید اقبال مرزا ، ذوالفقار ذلفی ، خلیل یوسف، صغیر جاگل بھی موجود تھے۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم ،

لیگی وزراء اور ممبران اسمبلی آصف زرداری ، بلاول بھٹو کے بارے میں غلیظ زبان استعمال کر رہے ہیں اور ریاست کے رواداری ماحول کو خراب کر رہے ہیں ان کو شرم و حیا ہونی چاہیئے۔ ہم نے جب اپنی زبان کھولی تو پھر یہ وزراء اور وزیر اعظم منہ چھپاتے پھریں گے ۔ ان کی ذہنی حالت خراب ہوچکی ہے۔ اسمبلی میں بھی انھوں نے چوہدری یاسین کے ساتھ جو کیا وہ ان کی ذہنی بیماری کو ظاہر کرتی ہے۔ ان کے کرتوت آئے روز سامنے آرہے ہیں ۔ ہم رواداری کے قائل ہیں ۔ ہمیں زبان کھولنے پر مجبور نہ کیاجائے ۔ بلاول بھٹو ، آصف زرداری ہمارے قائدین ہیں ۔ ان کے خلاف زبان درازی کرنے والوں سے نمٹنا جانتے ہیں۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

کشمیر

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved