تازہ ترین  
پیر‬‮   17   دسمبر‬‮   2018

اسسٹنٹ کمشنر باغ نے دو دُکانیں مسمار کر کے لاکھوںکا نقصان کر دیا


ریڑہ ( نمائندہ اُوصاف) قادر آباد میں اسسٹنٹ کمشنر باغ نے کارروائی کر کے ہماری دو دُکانیں مسمار کر کے لاکھوں روپے کا نقصان کر دیا۔ چیف سیکرٹری ، حکومت آزاد کشمیر اور دیگر متعلقہ ادارے ہمارے ساتھ ہونے والی زیادتی کا نوٹس لیں۔ باغ شہر میں جنگلات روڈ ، بائی پاس اور گرد و نواح میں جگہ جگہ تجاوزات کی جا رہی ہیں اور سرکاری اراضی پر دُکانیں تعمیر کی جا رہی ہیں لیکن اِس طرف کوئی توجہ نہیں دی جا رہی اور اُلٹا غریب لوگوں کی جمع پونجی سے تعمیر کردہ دُکانوں اور دیگر تعمیرات کو مسمار کر کے ان کے لیے مشکلات پیدا کی جا رہی ہیں۔ اگر ہمارے نقصان کا ازالہ نہ کیا گیا تو وزیر اعظم آزاد کشمیر کے دفتر کے سامنے خود سوزی پر مجبور ہوں گے۔ ان خیالات کا اظہار متاثرہ خاندان عبد الجلیل ، عبد الرشید ، عبد الخلیل ولد شاہ دلہ ساکنہ قادر آباد بھونٹ باغ نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ اُنہوں نے کہا کہ ہم نے یہ دُکانیں 2015؁ء میں روڈ سے پانچ سو فٹ دور قادر آباد کے مقام پر تعمیر کیں لیکن حکومتی پابندی کے باعث فائل پراسس آگے نہ بڑھ سکا اور عدالت میں حکومتی نوٹیفکیشن کے خلاف چلے گئے اور آئندہ تاریخ 28دسمبر 2018؁ء مقرر ہوئی تھی لیکن گزشتہ روز اسسٹنٹ کمشنر باغ نے بغیر نوٹس و اطلاع کے ہماری دونوں دُکانیں مسمار کر دیں جس سے دس لاکھ سے زائد مالیت کا نقصان ہوا۔ اُنہوں نے کہا کہ ہمارے ساتھ سراسر زیادتی کی گئی باغ شہر میں با اثر افراد سرکاری اراضی اور محکمہ شاہرات کے قوانین سے ہٹ کر دھڑلے سے تعمیرات کر رہے ہیں لیکن وہاں پر باغ انتظامیہ نے خاموشی اختیار کر رکھی ہے ۔ محکمہ جنگلات روڈ پر تعمیرات میں مصروف ہے جبکہ بائی پاس روڈ ، واٹر سپلائی روڈ سمیت دیگر جگہوں پر تعمیراتی کام دھڑلے سے جاری ہے اور کوئی پوچھنے والا نہیں ، ہم غریب لوگوں کی املاک کو نقصان پہنچایا جا رہا ہے۔ اُنہوں نے چیف سیکرٹری ، وزیر اعظم آزاد کشمیر سمیت دیگر حلقہ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ غیر جانبدارانہ کمیشن تشکیل دے کر اس معاملہ کی تحقیقات کروائیں اور ہمارے نقصان کا ازالہ کیا جائے۔ ورنہ وزیر اعظم کے دفتر کے سامنے خود سازی کریں گے




 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں


آج کا مکمل اخبار پڑھیں

تازہ ترین خبریں




     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved