12:21 pm
ہمسایہ ملک ڈپلومیٹک پاسپورٹ دے تو تحریک کی قیادت ہمارے پاس رہےگی

ہمسایہ ملک ڈپلومیٹک پاسپورٹ دے تو تحریک کی قیادت ہمارے پاس رہےگی

12:21 pm

ہمسایہ ملک ڈپلومیٹک پاسپورٹ دے تو تحریک کی قیادت ہمارے پاس رہےگی میرپور(بیورورپورٹ)جموں کشمیر محاذ رائے شماری کے مرکزی نائب صد اول الحاج محمد امین انصاری نے کہا ہے کہ ہمیں وطن کی آزادی کی خاطر دوسروں پر بھروسہ نہیں کرنا چاہیے ۔بلکہ اپنے قوت بازو اور حکمت عملی پر عمل کرکے جدوجہد کرنی چاہیے۔ انہوں نے کہا پارٹی کے اندر کچھ عناصر نے ہمسایہ ملک سے مدد لینے کی کوشش کی تھی ۔جس کو بانی صدر محمدعبدالخالق انصاری مرحوم نے اس طرح ناکام کیا تھا کہ انہوں نے ان عناصر سے کہا کہ اگر ہمسایہ ملک ہمیں ڈپلومیٹک پاسپورٹ دے اور تحریک کی قیادت و منصوبہ بندی ہمارے پاس رہے گی تو ہمیں امداد لینے پر کوئی اعتراض نہیں ہو گا جب انہوں نے بات کی تو ہمسایہ ملک کے ادارے نے تسلیم نہ کیا جس پر محاذ کی قیادت نے اس منصوبہ کو ناکام بنا دیا لیکن چونکہ پارٹی کے اندر بیرونی حمایت چاہنے والے متفق ہو چکے تھے لہٰذا انہوں نے پارٹی کو نقصان پہنچایا اور برطانیہ جا کر پارٹی کے مقاصد کے مغیر الگ پارٹی بنا لی اور امداد لینا شروع کر دی اور پالیسیاں بھی ان کی اپنانا شروع کر دیں جس باعث آج ان کی پارٹی ختم ہو چکی ہے اگر اصل پارٹی محاذ رائے شماری کے اندر رہ کر اس کے نظریات کے مطابق کام کیا جاتا تو آج تحریک کسی جگہ پہنچ چکی ہوتی، ساجد رحمٰن نائب صدر دوئم نے کہا کہ موسم کی شدت اور وسائل کی کمی کے باوجود ہمیں پارٹی کو منظم اور مضبوط کرنا ہے انہوں نے کہا سٹی برانچ کے انتخابات کے پروگرام اور انتظامی کمیٹی کے قیام کے لئے جمعہ المبارک بعد از نماز مغر ب مرکزی دفتر میں اجلاس ہو گا۔ تمام کارکن اس میں شرکت کریں اس موقع پر سابق مرکزی صدر محمد عظیم دت ایڈووکیٹ نے کہا ہے کہ ہمیں بزرگوں کی تعلیمات اور ا ن کی جدوجہد سے سیکھنا چاہیے ہم ان کے نقش قدم پر چل کر ہی کامیابی حاصل کر سکتے ہیں انہوں نے سابق مرکزی سینئر نائب صدر الحاج محمد بشیر تبسم کی وفات کو نظریہ خود مختار کشمیر کے ماننے والوں کے لئے ناقابل تلافی نقصان قرار دیا انہوں نے کہامرحوم نے عمر بھر محاذ کے پلیٹ فارم سے جدوجہد جاری رکھی جو ہمارے لئے نقش راہ ہے اس موقع پر محمد بشیر تبسم، محاذ رائے شماری برطانیہ زون کے صدر مرزا محمد صدیق کے بڑے بھائی مرزا غلام حسین،راجہ محمد فاروق بے بی اور محاذ کے دیگر رہنمائوں اور کارکنوں کے علاوہ تمام مسلمانوں کی بخشش کی دعا بھی کی۔