02:20 pm
 حکومت  اکلاس ملازمین کے معاملات  یکسو نہ کرسکی،خواجہ فاروق

حکومت اکلاس ملازمین کے معاملات یکسو نہ کرسکی،خواجہ فاروق

02:20 pm

حکومت اکلاس ملازمین کے معاملات یکسو نہ کرسکی،خواجہ فاروق چیف سیکرٹری اور ایم ڈی جملہ ملازمین کو ادائیگی کا فول پروف نظام بنائیں مظفرآباد(سٹی رپورٹر) تحریک انصاف آزاد کشمیر کے سابق سینئر نائب صدر خواجہ فاروق احمد نے اکلاس ملازمین کے معاملات دو سال گزرنے کے بعد بھی یکسو نہ ہونے کو حکومتی کارکردگی گڈ گورننس اہلیت پر ایک بڑا سوالیہ نشان قرار دیتے ہوئے کہا کہ اب تک 36 کروڑ 58 لاکھ روپیہ ان ملازمین کو ادا کیا گیا جسمیں شدید ناانصافی کی گئی اسی طرح عید کے موقع پر 3 کروڑ 50 لاکھ روپیہ تقسیم کیا گیا یہ خطیر رقم بھی من پسند سابق ملازمین کو دی گئی جن میں سابقہ یونین کے عہدیداران اور انکے اپنے لوگ شامل ہیں عام بے وسیلہ ملازم منہ دیکھتا رہ گیا ، خواجہ فاروق احمد نے کہا کہ اکلاس ملازمین کے دھرنوں احتجاج میں سول سوسائٹی سیاسی جماعتوں کی قیادت نے اگر شرکت کی تو وہ سب ملازمین کے حقوق کیلئے اظہار یکجہتی تھا لیکن افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ اس سے جو سیاسی قوت ملی اس سودے بازی کی قوت کو بعض سابق ملازمین نے محض اپنے حق میں استعمال کیا اور شنید یہ بھی ہے کہ بعض ملازمین سے ادائیگی کیلئے کمیشن بھی وصول کیا گیا اور جو ملازم بھتہ دینے سے انکار کرتا ہے ، اسے ادائیگی نہیں کی جاتی ، خواجہ فاروق احمد نے چیف سیکرٹری ، ایم ڈی اکلاس سے مطالبہ کیا کہ اس نا انصافی ، بھتہ خوری کے خلاف ایکشن لیں جملہ ملازمین کو ادائیگی کا فول پروف نظام بنائیں چند سابق عہدیداران کے ہاتھوں بلیک میل نہ ہوں ، حق سب ملازمین کا ایک جیسا ہے اگر یہ رویہ جاری رہا تو اکلاس ملازمین کی سابق یونین اخلاقی طور پر قوت سے محروم ہو جائے گی ، اس امر کی بھی اانکوائری کرائی جائے کہ کس اصول کلیہ کے مطالق کروڑوں روپیہ تقسیم ہو رہے اور جو ملازم رہ گئے ان کاکیا قصور تھا صرف اسلئے کہ بھتہ دینے سے انکار کیا گیا ، چیف سیکرٹری ایم ڈی اکلاس پر یہ ذمہ داری عائد ہوتی ہے ۔ خواجہ فاروق

تازہ ترین خبریں