11:57 am
 کشمیر سیاسی مسئلہ  نہیں بلکہ  انسانی مسئلہ بن چکا ہے،عبدالقیوم خان

کشمیر سیاسی مسئلہ نہیں بلکہ انسانی مسئلہ بن چکا ہے،عبدالقیوم خان

11:57 am

کشمیر سیاسی مسئلہ نہیں بلکہ انسانی مسئلہ بن چکا ہے،عبدالقیوم خان مودی جیسے دہشت گرد اور انتہا پسند شخص کا وزیر اعظم ہونا دنیا کے امن کیلئے خطرہ ہے راولاکوٹ (نمائندہ خصوصی) بھارتی حکومت کی جانب سے کشمیر کی حیثیت ختم کرنا اور آئین کے آر ٹیکل 370کا خاتمہ غیر آئینی اور غیر قانونی ہے اور عالمی سمجھوتوں کی خلاف ورزی ہے ۔مودی سرکارکے اس اقدام سے کشمیر کا بھارت سے اب کوئی تعلق نہیں رہا ، ان خیالات کااظہار جمعیت علماء جموں کشمیر کے مرکزی سیکرٹری جنرل خان عبدالقیوم خان نے ریاست جموں کشمیر کی آئینی حیثیت کے نام نہاد بھارتی ترمیم پر اپنے شدید ردعمل کااظہار کرتے ہوئے کیا ۔ انہو ں نے کہا کہ بھارت کے وزیر اعظم نریندر مودی کے ہاتھ تو گجرات کے دو ہزار مسلمانوں کے خون سے رنگے ہوئے ہیں ۔ایسے قاتل دہشت گرد اور انتہا پسند شخص کا دنیا کی سب سے بڑی نام نہاد جمہوریت کا وزیر اعظم ہونا جنوبی ایشیاء کے امن کیلئے خطرے کی گھنٹی ہے ۔بی جے پی کے انتخابی منشور میں شامل ہے کہ انتخابات میں دو تہائی اکثریت ملنے کے بعد آئین کے آرٹیکل 370اے کو منسوخ کرے گی ۔ انہوں نے مزید کہاکہ یوں محسوس ہوتا ہے کہ وزیراعظم عمران خان کے دورہ امریکہ سے پہلے امریکی صدر کو علم تھا کہ بھارت آئینی تبدیلی کرنے والا ہے ۔اس وقت ضرور ت ہے کہ پاکستان سفارتی سطح پر اپنی جدوجہد کو تیز کرے ، اس وقت کشمیر سیاسی مسئلہ بھی نہیں رہا بلکہ کشمیر ایک انسانی مسئلہ بن چکا ہے ۔روزانہ بے گناہ کشمیریوں کا قتل عام ہورہا ہے اور عالمی برادری کا ضمیر جگانے کی ضرورت ہے ۔ عالمی برادری اور اقوام متحدہ کشمیر میں ہونے والے ظلم و ستم کے خلاف آواز بلند کریں اور بھارت کو ظلم و بربریت بند کروانے پر زور دیں تاکہ کشمیر ی بھی سکھ کا سانس لے سکیں ۔

تازہ ترین خبریں