11:02 am
بھارت نے جنگ مسلط کی تو ڈٹ کر مقابلہ کرینگے،سلیم محمود

بھارت نے جنگ مسلط کی تو ڈٹ کر مقابلہ کرینگے،سلیم محمود

11:02 am

بھارت نے جنگ مسلط کی تو ڈٹ کر مقابلہ کرینگے،سلیم محمود بھارت کی فوج کالے قوانین کا سہارا لیکر نہتے اور بے گناہ کشمیریوں کو قتل کر رہی پلندری ( ڈسٹرکٹ رپورٹر ) صدر پریس کلب سدہنوتی سردار سلیم محمود خان نے کہا کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں مظالم اور قتل عام کرکے جنگ کے شعلوں کو ہوا دے رہا ہے پاکستان اور کشمیری عوام ،تنازعہ کشمیر کا پر امن حل چاہتے ہیں ، جنگ مسلط کی گئی تو ڈٹ کر مقابلہ کریں گے بھارت کو تنازعہ کشمیر اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل کرنے، مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالیوں کو بند کرانے اور جموں وکشمیر کی متنازعہ حیثیت کو ختم کرنے کے حوالے سے بھارتی کوششوں کو رکوانے میں عالمی برادری اپنا کردار ادا کرے ۔اُنہوں نے کہا کہ مقبوضہ جموں و کشمیر میں بھارتی حکومت کی طرف سے پر امن شہریوں پر بدترین مظالم ، بڑے پیمانے پر انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں اور حالیہ دنوں میں مقبوضہ ریاست کی متنازعہ حیثیت کو ختم کرتے ہوئے اسے بھارتی یونین کا حصہ بنانے کے اقدام کے بعد مقبوضہ کشمیر میں صورتحال سنگین ہوگئی ہے۔ بھارت کی آٹھ لاکھ فوج نے مقبوضہ کشمیر کے پورے علاقے کو محاصرے میں لے رکھا ہے ، شہریوں کو گھر وں سے نکلنے کی اجازت نہیں اور وہاں کی اصل صورت حال سے دنیا کو بے خبر رکھنے کیلئے میڈیا کو آزادانہ طور پر کام کرنے کی بھی اجازت نہیں ۔ بھارت کی قابض فوج کالے قوانین کا سہارا لیکر نہتے اور بے گناہ کشمیریوں کو قتل کر رہی ، نوجوانوں کو زخمی اور اپاہج بنایا جا رہا ہے اور خواتین کو جنسی تشدد کا نشانہ بنایا جار ہا ہے ۔ بھارت کے یہ تمام اقدامات نہ صرف بنیادی انسانی حقوق کی بدترین خلاف ورزی کے زمرہ میں آتے ہیں بلکہ یہ مسلمہ بین الاقوامی قانون اور کشمیر کے متعلق اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کی بھی کھلی خلاف ورزی بھی ہے سردار سلیم محمود خان نے مزید کہا کہ بھارت کی تمام تر اشتعال انگیزیوں کے باوجود پاکستان ایک ذمہ دار ملک کی حیثیت سے صبر و ضبط کا مظاہرہ کر رہا ہے اور چاہتا ہے کہ مسئلہ کشمیر پر امن سیاسی و سفارتی کوششوں سے حل کیا جائے ۔ انہوں نے کہا کہ بھارت نے اگر پاکستان کی طرف سے صبر و تحمل کی پالیسی کو کمزوری سمجھتے ہوئے اشتعال انگیزیوں کا سلسلہ جاری رکھا تو خطہ میں ایک ہولناک اور تباہ کن جنگ چھڑ سکتی ہے جسکی تمام تر ذمہ داری بھارت پر عائد ہوگی ۔