12:23 pm
  کشمیریوں کو اپنا مقدمہ خود لڑنا ہو گا ،بابر محمود

کشمیریوں کو اپنا مقدمہ خود لڑنا ہو گا ،بابر محمود

12:23 pm

کشمیریوں کو اپنا مقدمہ خود لڑنا ہو گا ،بابر محمود بھارت مقبوضہ کشمیر کو مکمل طور پر ہڑپ کرنا چاہتا ہے کوٹلی(سٹی رپورٹر)مقبوضہ کشمیر کومکمل طور پر ہڑپ کرنے اور من پسند کا نقشہ جاری کرنے کے حوالے سے ایک تحقیقی سروے کیا گیاجس میں اظہار کرتے ہوئے کوٹلی شہر کی سرکردہ شخصیات نے کہا ہے کہ بھارت مقبوضہ کشمیر کو مکمل طور پر ہڑپ کرنا چاہتا ہے جسے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل خالصتاً انسانی بنیادوں پر روک سکتی ہے اور اگر جلد ایسا نہ کیا گیا تو مقبوضہ کشمیر کے عوام خود بھارت کے خلاف ہتھیار اٹھا لیں گے اور ایک نہ ختم ہونے والی تکلیف دہ گوریلہ جنگ شروع ہونے کا خدشہ بڑ رہا ہے کیونکہ عالمی برادری اس حوالہ سے ابھی تک اس سنجیدگی کا مظاہرہ نہیں کر سکی ہے جس کا تقاضہ وقت کی عین ضرورت تھا۔ممتاز دانشور سماجی شخصیت بابر محمود بیگ نے اس حوالہ سے اپنی گفتگو میں کہا کہ اس وقت تک کوئی قوم آزادی سے اپنا فیصلہ نہیں کر سکتی جب تک وہ مکمل طور رپر خود مختار نہ ہو سلاخوں کے پیچھے سے فیصلہ نہیں کیا جا سکتا اس کے لیے ایک آزاد ماحول کی ضرورت ہے جہاں کشمیری من مرضی کا فیصلہ کر سکیں ۔موجودہ صورتحال کسی کے بھی حق میں نہیں ہے ایسے میں کشمیریوں کو اپنا مقدمہ خود لڑنا ہو گا اور اپنی تاریخی اہمیت کو سمجھتے ہوئے آئندہ کا لائحہ عمل اختیار کرنا ہو گاانہیں سمجھ لینا چاہیے کہ وہ خود اپنے وکیل ہیں جنہیں اپنا مقدمہ بہتر انداز میں دنیا کے سامنے پیش کرنا ہے۔برطانیہ میں مقیم کوٹلی کے سماجی خدمتگار عبدالجبار خلیل ہرنال نے کہا کہ بھارتی استعمار تباہی کے راستے پر چل نکلا ہے اور عین اسی طرح وہ خود اپنے بوجھ تلے دب کر ختم ہونے جا رہا ہے جیسے اس کا سابقہ آقا سابقہ سوویت یونین کے ساتھ ہوا۔بھارت اپنے طور پر خود کو دنیا کی اہم قوت سمجھتا ہے جبکہ اس کے اندرونی حالات اس کے برعکس ہیں بھارت کبھی بھی متحد نہیں رہ سکتا کیونکہ وہاں انسانیت سسکتی ہے محض طاقت کے بل پر کسی مخصوص قوم یا کسی خطے کے لوگوں کو محکوم نہیں رکھا جا سکتا انہیں بھی اسی حق کی ضرورت ہے جس کا مزہ خود بھارت بھی لے رہا ہے۔موجودہ حالات میں ضروری ہو گیا ہے کہ کشمیریوں پر رحم کیا جائے انہیں سوچنے کا موقع دیا جائے اور انہیں آزادی سے اپنے مستقبل کا فیصلہ کرنے دیا جائے ان کے فیصلے کی قدر کی جانی چاہیے مگر پہلے انہیں ایک آزاد ماحول تو فراہم کیا جائے ۔اس حوالہ سے عالمی برادری کو اپنا کردار ادا کرنا ہو گا کیونکہ یہ خالصتاً انسانی مسئلہ ہے ۔بھارت کی طرف سے نئے نقشے جاری کرنے سے کسی اور کا کچھ فائدہ نہیں بلکہ خود بھارت کی سبکی ہو گی اسے ہوش کے ناخن لینے چاہیں کیونکہ دور جدید میں کسی کو زبردستی اپنے ساتھ نہیں رکھا جا سکتا ۔ْانہوں نے کہا کہ موجودہ حالات میں اہم ممالک کو اپنا کردار ادا کر کے کشمیر کے لوگوں کے لیے ریلیف حاصل کرنا چاہیے تا کہ ایسا ماحول تشکیل پا سکے جس میں کشمیری من مرضی کا فیصلہ کر سکیں۔ بابر محمود

تازہ ترین خبریں