05:57 pm
جاگراں ہائیڈرل پراجیکٹ میں6ارب67کروڑ روپے کی کرپشن کا انکشاف

جاگراں ہائیڈرل پراجیکٹ میں6ارب67کروڑ روپے کی کرپشن کا انکشاف

05:57 pm

مظفرآباد(سٹاف رپورٹر) دو سال تک وزیراعظم آزادکشمیر کے پاس رہنے والا ادارہ ہائیڈرو پاور پراجیکٹ بھی کرپشن سے نہ بچ سکا، 2017سے تاحال میں جاگراں ہائیڈرو پراجیکٹ میں 6ارب 67کروڑ سے زائد مالیت کی بے ضابطگیوں کا انکشاف،جملہ اخراجات میں کوئی بھی حکومتی منظوری شامل نہیں ،خطیر رقم کاتصرف محض کاغذوں کی حد تک کیاگیا ہے محکمہ کے ذمہ داران کے پاس رقم کے تصرف کا کوئی ریکارڈ موجود نہیں ہے کہ آیا یہ رقم کدھر اور کس پرخرچ کی گئی ہے ،رپورٹ کے مطابق آزادکشمیر بننے کے بعد چند محکمہ جات وزیراعظم آزادکشمیر نے اپنے پاس رکھے تھے تاکہ
کرپشن کو روکا جائے تاہم 2سالوں بعد جب یہی محکمہ جات کسی وزیر کے حوالے کیے تو ان میں کروڑوں کی خوردبرد اور بے ضابطگیوں کی نشاندہی ہورہی ہے ، جاگراں ہائیڈرو پاور پراجیکٹ میں سال2017سے تاحال ٹینڈر، سلیزرجسٹر،تخمینہ ٹیکنیکل منظوری اورحکومتی منظوری ریکارڈ میں شامل ہی نہیں لیکن اتنی بڑی رقم محکمہ نے خرچ کر ڈالی ،رپورٹ کے مطابق آزادکشمیر میں احتساب کا نظام درست نہ ہونے کی وجہ سے سرکاری محکمہ جات میں ہر سال کروڑوں کی کرپشن ہورہی ہے ، سرکاری محکمہ جات کے سربراہان کو علم ہے کہ حکومت کی طرف سے کرپشن پرکوئی قدغن نہیں جبکہ ریاست نے احتساب کا جو ادارہ بنایاتھا وہ حکومت نے غیرفعا ل کردیا ہے۔اس لیے جتنا ہاتھ صاف کر سکتے ہو قومی خزانے پرکیاجائے ،عوامی حلقوں نے چیف سیکرٹری آزادکشمیر سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ ریاست کی غریب عوام کی حالت زار پر رحم کریں وفاق سے اجازت لے کر آزادکشمیر کو کرپشن فری سٹیٹ کا درجہ دلوائیں کیونکہ یہ ریاست چند افراد کے ہاتھوں یرغمال ہوگئی ہوئی ہے یہاں کرپشن ثواب سمجھ کر کی جاتی ہے