تازہ ترین  
جمعرات‬‮   15   ‬‮نومبر‬‮   2018

‘‘یہ غازی یہ تیرے پراسرار بندے ‘‘ عمران خان کے وزیر اعظم بننے کے بعد مسلم ممالک پاکستان کوعزت کی نگاہ سے کیوں دیکھتے ہیں؟جانیں حیران کن بات


سعودی عرب (مانیٹرنگ ڈیسک)عمران خان کے وزیر اعظم بننے کے بعد مسلم ممالک پاکستان کوعزت کی نگاہ سے کیوں دیکھتے ہیں؟جانیں حیران کن بات ۔ وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے بیان میں کہا ہے کہ سعودی عرب میں عمران خان کا احترام پاکستان کا مقام ظاہر کرتا ہے۔عمران خان ریاض میں مصروفیات کے باعث چند

گھنٹے ہی سو سکے۔مصروفیات سے ظاہر ہے کہ مسلم امہ عمران خان کو کتنی اہمیت دیتی ہے۔ ایک اور مصروف دن وزیر اعظم عمران خان کا منتظر ہے ۔سعودی عرب میں جو احترام وزیر اعظم عمران خان کو ملتا ہے وہ ظاہر کرتا ہے کہ اللہُ کی مہربانی سے آج مسلم امہ میں پاکستان کا کیا مقام ہے اور عمران خان کو مسلم امہ کیا اہمیت دیتی ہے۔ ریاض میں چند گھنٹے ہی سو سکے اور اب ایک انتہائ مصروف دن منتظر ہے، وزیراعظم پاکستان عمران خان سعودی عرب کے دو روزہ سرکاری دورہ کے دوسرے مرحلے میں ریاض پہنچ گئے۔ ائرپورٹ پر ریاض کےگورنر شہزادہ فیصل بن بندر بن عبدالعزیز اور پاکستان کے سفیر خان ھشام بن صدیق نے استقبال کیا. دیگر سعودی حکام اور قونصلیٹ کے افسران بھی استقبال کیلئے موجود تھے. خیال رہے وزیراعظم عمران خان سعودی عرب کے دو روزہ سرکاری دورہ کے دوسرے مرحلے میں منگل کو ریاض پہنچ گئے ہیں۔ ایئرپورٹ پر ریاض کے گورنر شہزادہ فیصل بن بندر بن عبدالعزیز اور پاکستان کے سفیر خان ہشام بن صدیق نے استقبال کیا جبکہ دیگر سعودی حکام اور قونصلیٹ کے افسران بھی وزیراعظم عمران خان کے استقبال کیلئے وہاں موجود تھے۔ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی، وزیر خزانہ اسد عمر،وزیر اطلاعات چودھری فواد حسین، مشیر تجارت عبدالرزاق داؤد اور وزیر مملکت/چیئرمین سرمایہ کاری بورڈ ہارون شریف بھی وزیراعظم کے ہمراہ ہیں۔ وزیراعظم عمران خان نے روضہ رسول ﷺ پر بھی حاضری دی۔آج وزیر اعظم عمران خان نے سعودی عرب میں “مستقبل

میں سرمایہ کاری کے مواقع” کی انٹرنیشنل کانفرنس میں شرکت کی۔وزیراعظم 23 اکتوبر سے شروع ہونے والی اس تین روزہ کانفرنس میں پاکستان میں سرمایہ کاری اور معاشی مواقع پر روشنی ڈالیں گے اور اپنے آئندہ 5 سالہ وڑن سے دنیا کو آگاہ کریں گے۔ وزیراعظم پاکستان میں سرمایہ کاری کی خواہشمند کاروباری شخصیات سے بھی ملاقات کریں گے۔سعودی عرب روانگی سے قبل عمران خان نے کہاہے کہ دوست ممالک سے مالی معاونت یا عالمی مالیاتی فنڈ سے قرض لئے بغیر کوئی چارہ نہیں،ملک کو تاریخ کے سب سے بدترین معاشی بحران کا سامنا ہے، ہمارے پاس دو تین ماہ سے زیادہ کے زرمبادلہ ذخائر نہیں۔انہوں نے کہا کہ پاکستانی معیشت کی بہتری کیلئےسعودی عرب سے قرض لینے کے خواہش مند ہیں،




 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں


آج کا مکمل اخبار پڑھیں

تازہ ترین خبریں


کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved