تازہ ترین  
پیر‬‮   21   جنوری‬‮   2019

ڈر ہے کہیں معاشی ٹیم کو آئی ایف ایم ، ورلڈ بینک والے اُدھار نہ مانگ لیں کیونکہ!! وزیراعظم عمران خان اپنی معاشی پالیسیوں پر شدید تنقید کا نشانہ بن گئے


لاہور(مانیترنگ ڈیسک) سینئر تجزیہ کار منصورعلی خان نے کہا ہے کہ پاکستانی معاشی ٹیم کو آئی ایم ایف، ورلڈبینک کے ادھارمانگنے کاڈر ہے، خدشہ ہے کہ معاشی پالیسیاں اور طریقے کہیں مستقبل میں تعلیمی نظام میں پڑھانے نہ شروع کردیے جائیں، کپتان نے حکومت سنبھالی تو پہلی ترجیح معیشت تھی، ملکی غیرملکی ماہرین کی معاشی ایڈوائزری کونسل بنائی گئی،وہ ایڈوائزری کونسل کہاں ،کس حال میں ہے،کسی کچھ معلوم نہیں، کیونکہ ڈٹ کے کھڑا ہے اب عمران اور ٹھیک کرے گا سب کپتان۔
انہوں نے نجی ٹی وی کے پروگرام میں تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان وزیراعظم بنے توباقاعدہ نگارے بجائے گئے کہ خزانہ خالی ہے۔کہا گیا کہ کپتان کی پہلی ترجیح معیشت کواٹھانا ہے۔کپتان پاکستان کی معیشت کو اٹھائے گا۔لیکن معیشت کی بحالی کیلئے جوبھی اقدامات اٹھائے گئے اس کے نتیجے میں معیشت بیٹھ گئی ہے۔اس کے باوجود ڈٹ کے کھڑا ہے اب عمران اور ٹھیک کرے گا سب کپتان۔وزیراعظم عمران خان اور ان کی ٹیم نے جواعلانات اور جوپالیسیاں معیشت ٹھیک کرنے کیلئے بنائی ہیں۔ لگتا ہے کہ یہ پالیسیاں اور طریقے نہ صرف مستقبل میں تعلیمی نظام میں پڑھائے جائیں گے بلکہ ڈر ہے کہ ایسے معاشی اقدامات کرنے والی ٹیم کوآئی ایم ایف اور ورلڈبینک پاکستان سے کہیں ادھارہی نہ مانگ لے۔کیونکہ ڈٹ کے کھڑا ہے اب عمران اور ٹھیک کرے گا سب کپتان۔
انہوں نے کہا کہ حکومت میں آنے کے بعد عمران خان کی پہلی ترجیح معیشت کوٹھیک کرنا تھا اس لیے انہوں نے ملک اور بیرون ملک سے چن کرمعاشی ایڈوائزری کونسل بنائی گئی۔یہ کونسل کہاں ہے، کس حال میں ہے ؟ کسی کوخبر نہیں۔ معیشت کواٹھانے والی کونسل خود ہی بیٹھ گئی ہے۔کیونکہ ڈٹ کے کھڑا ہے اب عمران اور ٹھیک کرے گا سب کپتان۔ آئی ایم ایف کے پاس جانے یا نہ جانے کے معاملے پر عمران خان تاحال کنفیوژہے۔ جانے یا نہ جانے کی صورتحال ابھی تک برقرار ہے۔ جبکہ عوام گیس اور بجلی کی قیمتوں میں اضافے کا الگ سے سامنا کرنا پڑا۔ پاکستانی معیشت بیٹھ رہی تھی تومیرے کپتان خود میدان میں آئے اور دیسی مرغیاں، انڈے،کٹے، بکرے پال کرمعیشت کو اٹھانے کا نسخہ بتایا۔




 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں


آج کا مکمل اخبار پڑھیں

تازہ ترین خبریں




     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved