تازہ ترین  
منگل‬‮   23   اکتوبر‬‮   2018

آصف زرداری اور ان کے بچوں کے اثاثوں کی تفصیلات سپریم کورٹ میں جمع چیف جسٹس کے دھماکے دار ریمارکس


اسلام آباد (آئی این پی) سپریم کورٹ میں این آر او کیس میں سابق صدر آصف زرداری نے اپنے اور بچوں کے اثاثوں کی تفصیلات جمع کرادیں، جمعرات کو سپریم کورٹ میں این آر او کے ذریعے ملکی خزانے کو اربوں روپے نقصان کے معاملے کی سماعت ہوئی۔ آصف علی زرداری نے اپنے اور بچوں کے اثاثوں کی تفصیل عدالت میں جمع کرا دی، سپریم کورٹ نے درخواست کے قابل سماعت ہونے پر دلائل طلب کرلئے۔ دوران سما عت چیف جسٹس نے کہا کہا فا روق نائیک

صاحب پارٹی کے لوگوں کو بتائیں جج کسی سے ملے نہیں ہوتے۔ چیف جسٹس نے فاروق نائیک سے مکالمہ کیا کہ متعصب نہیں ہوتے، اس ادارے کو طاقتور ہونے دیں، یہی آپ کا مسیحا بنے گا، فاروق ایچ نائیک نے جواب دیا کہ سر اپنی پارٹی کے لوگوں کو سمجھتا ہوں، چیف جسٹس نے استفسار کیا جب این آر او ختم ہو گیا تو اس کا کیا نتیجہ نکلنا چاہیے تھا، درخواست گزار نے بتایا کہ نتیجہ یہی نکلنا تھا ریفرنسز دائر ہو جاتے، فیروز شاہ نے بتایا لندن میں ایک سفارتکار سوئس عدالتوں کی دستاویز اٹھا کر لے گیا، پرویز مشرف کے وکیل نے وطن واپسی کے حوالے

سے جواب جمع کرادیا، وکیل پرویز مشرف نے بتایا کہ درخواست ہے جواب کھلی عدالت میں نہ پڑھا جائے۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ اس مرض کا علاج تو پاکستان میں بھی ہے، دبئی علاج کیلئے زیادہ اچھی جگہ نہیں، پاکستان میں علاج کیلئے بہتر سہولتیں ہیں، پرویز مشرف غداری کیس میں اپنا بیان ریکارڈ کرائیں۔ چیف جسٹس نے کہا کہ پرویز مشرف کو عدالت پہنچنے تک گرفتار نہ کیا جائے، وکیل پرویز مشرف اختر شاہ نے بتایا کہ پرویز مشرف کا نام ای سی ایل میں نہ ڈالا جائے، ای سی ایل میں نام نہ ڈالنے سے متعلق حکم نہیں دے سکتے۔ چیف جسٹس نے کہا کہ اٹارنی جنرل اور پراسیکیوٹرسے پوچھ لیں گے کیا کرنا ہے، عدالت نے کیس کی سماعت نومبر کے پہلے ہفتے تک ملتوی کر دی۔ سابق اٹارنی جنرل ملک قیوم نے اثاثوں کی تفصیل جمع کرانے کیلئے وقت مانگ لیا، عدالت نے ملک قیوم کو تفصیل جمع کرانے کیلئے ایک ہفتے کا وقت دے دیا۔




 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں


آج کا مکمل اخبار پڑھیں

تازہ ترین خبریں

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved