لندن، توانائی کی قیمتیں کم کرنے کے قانون کا مسودہ شائع
  13  اکتوبر‬‮  2017     |     یورپ

لندن( ا و صا ف نیو ز )حکومت نے توانائی کی قیمتیں کم کرنے کے قانون کا مسودہ شائع کر دیا ہے۔ ڈرافٹ ڈومیسٹک گیس اینڈ الیکٹرسٹی (ٹیرف کیپ) بل کے تحت توانائی کے شعبے کے ریگولیٹر آفجیم کو معیاری قابل تغیر ٹیرف پر حد عائد کرنے کا اختیار مل جائے گا۔ تقریباً ایک کروڑ بیس لاکھ گھرانے کسی نہ کسی شکل میں بغیر حد والے بنیادی ٹیرف پر ہیں جو سستی ترین ڈیلوں کے مقابلے میں سالانہ سینکڑوں پائونڈ زیادہ قیمت کا باعث ہو سکتے ہیں۔ تاہم قیمتوں پر عائد کی جانے والی یہ حد موسم سرما سے پہلے نافذ ہوتی نظر نہیں آتی۔ حکومت کے مطابق یہ حد 2020 تک عائد رہے گی اور اگر آفجیم نے ضروری سمجھا تو اسے 2023 تک توسیع دی جا سکتی ہے۔ پری پے منٹ میٹر، جن پر پہلے ہی حد عائد ہے، اور 'گرین' انرجی ٹیرف ان مجوزہ تبدیلیوں سے مستثنیٰ ہوں گے۔ وزیراعظم ٹیریسا مے کا کہنا ہے کہ انرجی مارکیٹ کو اپنے ان لاکھوں دیرینہ صارفین کو منصفانہ قیمتیں پیش کرنی چاہئیں جو سینکڑوں پائونڈ زیادہ ادا کر رہے ہیں۔ بزنس اینڈ انرجی سیکرٹری گریگ کلارک کا کہنا ہے کہ چھ بڑے انرجی سپلائیرز کے صارفین 1.4 ارب پائونڈ سالانہ کے لگ بھگ زائد ادائیگیاں کر رہے ہیں۔ ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ یہ سراسر غلط ہے اور مسودہ قانون سے ان سپلائیرز کو واضح پیغام ملے گا کہ وہ اپنے دیرینہ صارفین کے ساتھ ایسے غیرمنصفانہ سلوک کا سلسلہ بند کرنے کے لئے اقدامات کریں۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

اہم خبریں

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved