گلگت،تحریک انصاف کا غیر قانونی ٹیکسز کے خلاف اتحاد چوک میں احتجاجی مظاہرہ
  21  اکتوبر‬‮  2017     |     گلگت بلتستان

گلگت(اوصاف نیوز)پاکستان تحریک انصاف گلگت بلتستان کی جانب سے غیر قانونی ٹیکسز کے خلاف اتحاد چوک میں احتجاجی مظاہرہ، حکومت کی جانب سے گلگت بلتستان پر لگائے گئے ٹیکسز کے خلاف احتجاج کی شروعات کرتے ہوئے ریلیاں نکالی گئیں،جوٹیال اور خومر چوک سے کثیر تعداد میں لوگ ریلیوں کی شکل میں اتحاد چوک پہنچے جہاں پر جلسے کی شکل اختیار کر گیا۔ احتجاجی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان تحریک انصاف کے صوبائی سیکرٹری جنرل فتح اللہ خان نے کہا کہ کونسل کے چھ نا اہل ،ان پڑھ ممبران جن کو پڑھنا لکھنا نہیں آتا وفاقی وزیر امور کشمیر و گلگت بلتستان برجیس طاہر نے مقامی ہوٹل میں بلا کر کانا ڈویژن کے ڈپٹی سیکرٹری کے ہاتھ سے لکھے ہوئے مسودے پر دستخط کروائے ۔ یہ ممبران اس اہل ہی نہیں ہیں کہ اس مسودے کو پڑھ سکیں ان کو پتہ نہیں چل سکا کہ دستخط کس چیز پر کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں خدشہ ہے کہ یہ ان پڑھ ممبران اپنے ڈیتھ وارنٹ پر بھی دستخط کریں گے۔ کیا گلگت بلتستان میں پڑھے لکھے افراد نہیں تھے جو حفیظ الرحمن نے ان پڑھ افراد کو کونسل کے ممبران بنائے، گلگت بلتستان میں پی ایچ ڈی،ایم فل جو بیرون ممالک سے تعلیم یافتہ ہیں جو جانتے ہیں کہ قوم کی تقدیر کیسے بدل سکتے ہیں ایسے افراد کے اوپر ان پڑھ ممبران کی شکل میں عوام پر عذاب مسلط کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس سے پہلے پاکستان پیپلز پارٹی نے ٹیکسز لگانے کی غلطی کی اس وقت یہی لوگ جو اس وقت اسمبلیوں میں بیٹھے ہیں مخالفت کر رہے تھے اور اب اس غلطی کو ٹھیک کرنے کی بجائے اس طرح کے ہی گناہ میں اپنے ہاتھ گندے کر چکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم اپنے قائد کی شان میں دس دنوں تک تقریر کر سکتے ہیں جبکہ میں پیپلز پارٹی اور ن لیگ والوں کو چیلنج کرتے ہیں کہ وہ اپنے قائدین کی دو اچھی باتیں عوام کو بتادیں جو حقیقت ہوں۔ انہوں نے کہا کہ حفیظ الرحمن کہتے ہیں کہ ٹیکسز امیروں پر لگائیں گے جبکہ امیر ان کے دائیں بائیں بیٹھے ہیں ان پر ٹیکس لگایا جائے غریب عوام پر کیوں ٹیکس لگایا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں مجبور نہ کیا جائے اس خطے میں ایک اور جوہر علی پیدا ہو گا جو اس عوام کو متحد کرے گا۔ مردم شماری کے مطابق گلگت بلتستان کی آبادی مشکل سے پندرہ لاکھ ہے میں پوچھتا ہوں کہ وفاق ان افراد سے آخر کتنا ٹیکس وصول کرے گا۔ حفیظ الرحمن اپنے اور اپنے وزراء پر ٹیکس لگائیں عوام پر بوجھ نہ ڈالیں، انہوں نے کہا کہ اگر یہ سلسلہ ختم نہ کیا گا تو ہم با قاعدہ طور پر بھر پر احتجاج کا مظاہرہ کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ہم ٹیکسز کے معاملے میں تاجر برادری کے ساتھ ہیں لیکن ہم ہر گز اس کی اجازت نہیں دینگے کہ ٹھیکیدار برادری کے احتجاج کی طرح دو افراد نے وزیر اعلیٰ سے صلح کر کے عوام کے باقی مطالبات کو نظر انداز کیا۔ہم یہ نہیں کہتے کہ پاکستان نے ہمیں کیا دیا ہم سمجھتے ہیں کہ پاکستان نے ہمیں بہت کچھ دیا ہے اگر نہیں دیا تو ان حکمرانوں نے جنہوں نے اپنی تجوریوں کا وزن بڑھایا ہے۔ ہم ان سب کو بتادینا چاہتے ہیں کہ اب ان کو عوام کے جذبات اور علاقے کے مفادات سے کسی کو کھیلنے نہیں دیا جائے گا۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے رکن اسمبلی راجہ جہانزیب نے کہا کہ عوام کے ساتھ یہ ظلم پہلی دفعہ نہیں ہوا اس سے پہلے بھی پیپلز پارٹی کے دوران میں عوام پر ٹیکسز لگانے کی کوشش کی اس وقت ایکشن کمیٹی کے پلیٹ فارم سے ہم نے بھر پور دفاع کرتے ہوئے حکومت کو مجبور کر دیا کہ یہ غیر قانونی ٹیکسز کو ختم کر دے اور ہم کامیاب ہوئے۔ آج ن لیگ کی حکومت نے ایک بار پھر یہ کوشش کی کہ عوام کو بغیر حقوق دیئے ٹیکسز لگائے، ہم اس غیر قانونی ٹیکسز کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہیں اور حکومت کو بتادینا چاہتے ہیں کہ کسی صورت ان ٹیکسوں کا نفاذ نہیں ہونے دینگے۔ انہوں نے میں نے یاسین کی عوام کیلئے اسی کروڑ کی سکیمیں لائی ہیں غلام محمد بیانات دے کر کریڈٹ لینے کی نا کام کوشش کر رہا ہے۔ انہوں نے آرمی چیف کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ گلگت بلتستان کے محب الوطن عوام کے ساتھ ہونے والے اس ظلم کیخلاف آ پ کی ایک جنبش قلم ہی کافی ہے کیونکہ یہاں کے

عوام نے 65سے لیکر کارگل وار ،ضرب عضب اور سوات آپریشن میں وطن عزیز کے دفاع کے لئے خون کے نذرانے دیئے ہیں اور یہاں کے عوام پاکستان کیلئے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کیا اور نہ ہی کریں گے۔ وطن عزیز کے دفاع کے لئے ہم اپنے بچے بھی قربان کرنے کیلئے تیار ہیں تو ہمارے اوپر یہ ظلم کیو ں ہو رہا ہے۔ ہمیں احتجاج کرنے کی نوبت نہیں آنی چاہئے کیوں کہ ہم نے وطن کی دفاع کیلئے کبھی پیٹھ نہیں دکھائی ہے۔ جلسے سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان تحریک انصاف کے صوبائی نائب صدر اجمل حسین نے کہا کہ ہمیں اپنے حقوق کے حصول کے لئے متحد نا ہو گا۔ حکومت دو سالوں سے عوام کو بے وقوف بنا رہی ہے کہ آئینی حقوق کے حوالے سے مسودہ تیار کر چکے ہیں لیکن ابھی تک عوام کو پتہ نہیں چل سکا ہے کہ یہ مسودہ کیا بلا ہے ہمیں کیوں نہیں بتایا جاتا ہے، گلگت بلتستان کے باشعور عوام یہ جاننا چاہتے ہیں۔ ہمیں بتایا جاتا ہے کہ سرتاج عزیز نے فائل تیار کر کے پیش کر دی ہے لیکن اس کو کھولا کیوں نہیں جاتا ہمیں کیوں نہیں بتایا جاتا ۔ انہوں نے کہا اقوام متحدہ یہ کہتا ہے کہ گلگت بلتستان کی تعریف متنازعہ علاقہ کے طور پر ہے تو بین الاقوامی قوانین کسی طرح کے ٹیکس لگانے کی اجازت نہیں دیتے۔ہم کسی ٹیکس کو قبول نہیں کرینگے۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان تحریک انصاف کے صوبائی نائب صدر ابراہیم دولت شو نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف کی مختصر اطلاع پر اتنے افراد کو جمع کیا ہے تو مخالفین سن لیں ہم گلگت بلتستان بھر سے لوگوں کو جمع کر سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نئے ٹیکسز لگانے سے پہلے اب تک جمع ہو چکی تین ارب سے زائد رقم کا حساب دے جو کانا ڈویژن کے پاس ہے ، گلگت بلتستان کے عوام کو کیوں نہیں دی جا رہی ہے۔ گلگت بلتستان کونسل کانا ڈویژن کی بی ٹیم بنی ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ حفیظ الرحمن پنجاب سے امداد لاتے ہیں ہمیں امداد نہیں چاہئے ہمیں ہمارا حق دیا جائے جو یہاں کے عوام کی خون پسینے کی کمائی ہے۔ اب تک ان تین ارب سے زائد رقم کہاں ہے عوام کو بتایا جائے۔ اس سے پہلے اس طرح کی تحریکیں چلیں مگر منطقی انجام تک نہیں پہنچی اس لئے ہم نے اس دفعہ یہ فیصلہ کیا ہے کہ یہ بیڑا خود اٹھائیں گے تاکہ عوام کے اعتماد کو ٹھیس نہ پہنچے۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے۔ جنرل سیکرٹری پاکستان تحریک انصاف خواتین ونگ دلشاد بانوں نے کہا کہ ثوبیہ مقدمہ نے گلگت بلتستان کی خواتین کے لئے کچھ نہیں کیا وہ خواتین کی نمائندگی کرنے میں نا کام ہو چکی ہے۔انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان کی خواتین کو پاکستان تحریک انصاف مضبوط کرے گی تاکہ وہ مردوں کے شانہ بشانہ اپنے حقوق کیلئے لڑے۔ تقریب سے پاکستان تحریک انصاف گلگت ڈویژن کے صدر عزیز احمد،صوبائی ڈپٹی سیکرٹری اطلاعات صابر حسین،آئی ایس ایف جی بی کے رہنماء عتیق پیرزادہ نے بھی خطاب کیا۔ جلسے میں پاکستان تحریک انصاف کے کارکنوں کے علاوہ عوام کی بڑی تعداد نے شرکت کی


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

اہم خبریں

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved