ایک کرایہ دار جنرل ضیاالحق کے مکان پر قابض ہو گیا، جنرل ضیا کے صدر بنتے ہی اس نے کیا کیا؟؟ہنسا کرلوٹ پوٹ کر دینے والی رپورٹ
  13  ‬‮نومبر‬‮  2017     |     اہم خبریں

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) ضیاالحق نہ صرف پاک فوج کے سابق سربراہ تھے بلکہ صدر پاکستان بھی رہ چکے ہیں ۔ کہا جاتاہے کہ ان کا خاندان جالندھر سے ہجرت کرکے پشاور آیا تھا جہاں اسے مکان الاٹ کر دیا گیا۔ ضیاالحق کے والد صاحب نے مکان کا حصہ کرائے پر دے دیا ۔ 1950میں کرائے پر دیے گئے اس مکان میں جو سکونت پذیر ہونے والا شخص اس مکان پر قابض ہو گیا اور کرایہ دینے سے صاف انکار کر دیا ۔ اس پر ضیا الحق کے والد نے اہل علاقہ کی مدد سے مصالحت کی کوشش کی

تاہم کرایہ دار مکان چھوڑنے یا کرایہ دینے سے انکاری رہا۔ جس پر مجبوراً ضیاالحق کے والد کو عدالت سے رجوع کرنا پڑا جہاں پر سالہا سال معاملے کا کیس چلتا رہا ۔اس اثنا نے میں ضیاالحق نے تعلیم مکمل کی ۔اور فوج میں بھرتی ہوگئے ۔ اور ترقی پاتے پاتے وہ بریگیڈئیر ، پھر میجر جنرل، پھر جنرل اور پھر صدر پاکستان بن گئے ۔ اس عہدے پر ان کے پہنچتے ہی ایک روز و ہ شخص ان کے پاس آیا اورہاتھ جوڑتے ہی مکان کی چابی ان کے حوالے کی اور پھر عدالت میں مکان کی ملکیت بارے اپنا بیان دے ڈالا۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
71%
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
29%


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

اہم خبریں

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved