نواز شریف نےپھر عدلیہ کیخلاف سخت زبان استعمال کرڈالی ، کچھ اور ہی کہہ دیا
  15  ‬‮نومبر‬‮  2017     |     اہم خبریں

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)سابق وزیر اعظم نواز شریف کا احتساب عدالت میں پیشی کے بعد کہنا تھا کہ عدالتوں کا دوہرا معیار ہے اور اس دوہرے معیار کے خلاف جدوجہد کررہے ہیں۔احتساب عدالت میں پیشی کے بعد میڈیا سے غیر رسمی بات چیت کرتے ہوئے نواز شریف کا کہنا تھا کہ ہمارے لیے الگ معیار ہے اور دوسروں کے لیے الگ ہے۔انھوں نے مزید کہا کہ عدالتوں کے دوہرے معیار کے خلاف جدوجہد کررہے ہیں اور

اس جدوجہد کو منطقی انجام تک پہنچائیں گے۔اس سے قبل آج سابق وزیر اعظم نواز شریف، مریم نواز اور کیپٹن ریٹائرڈ صفدر 3 نیب ریفرنسز کی احتساب عدالت میں سماعت ہوئی۔سماعت میں آج عدالت نےآج 2 گواہوں کو بیان ریکارڈ کرانے کے لیے طلب کر رکھا تھا، سماعت کے دوران حسن اور حسین نواز کو اشتہاری ملزم قرار دیئے جانے کا امکان ہے۔سماعت سے قبل مسلم لیگ ن کے رہنما خواجہ سعد رفیق، مریم اورنگزیب ، مصدق ملک اور اسلام آباد کے میئر میان انصر پہلے سے ہی فیڈرل جوڈیشل اکیڈمی پہنچ چکے تھے۔سماعت کے موقع پر فیڈرل جوڈیشل کمپلیکس کے باہر سیکیورٹی کے غیر معمولی انتظامات کیے گئے ہیں اور پولیس اور ایف سی کی بھاری نفری تعینات ہے۔اس وقت اسلام آباد کا موسم خوشگوار ہے اور ہلکی ہلکی بارش ہورہی جس کے باعث موسم سرد ہے ۔مسلم لیگ ن کےکارکن بھی فیڈرل جوڈیشل کمپلیکس کے باہر موجود ہیں اور نوازشریف کےحق میں نعرے بازی کر رہے ہیںاحتساب عدالت کی جانب سے 2گواہوں کمشنر اِن لینڈریونیو جہانگیر احمد اور سیکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن آف پاکستان (ایس ای سی پی) کی افسر سدرہ منصور کو طلبی کے سمن جاری کیےگئے تھے۔نواز شریف 5 مرتبہ، مریم نواز اور کیپٹن ریٹائرڈ صفدر 7 بار عدالت کے روبرو پیش ہوچکے ہیں، حسن اور حسین نواز ایک مرتبہ بھی عدالت نہیں آئے، جس پر انہیں مفرور ملزم قرار دے کر اشتہاری ملزم قرار دینے کی کارروائی کا آغاز کیا گیا۔نواز شریف پر ان کے نمائندے ظافر خان کی موجودگی میں 19 اکتوبر کو 2 ریفرنسز جبکہ 20 اکتوبرکو ایک ریفرنس میں فرد جرم عائد کی گئی۔مریم نواز اور کیپٹن ریٹائرڈ صفدر پر ان کی موجودگی میں 19 اکتوبر کو فرد جرم عائد کی گئی، 8 نومبر کو نواز شریف کی 5 ویں پیشی کے موقع پر ان کی موجودگی میں دوبارہ فرد جرم عائد کی گئی، انہوں نے صحت جرم سے انکار کیا، جس کے بعد گواہوں کی طلبی کے سمن جاری کیے گئے۔عدالت نے کمشنر ان لینڈ ریونیو جہانگیر احمد اور ایس ای سی پی کی افسر سدرہ منصور کو بیانات ریکارڈ کرانے کے لیے طلب کر رکھا ہے


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

اہم خبریں

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved