رائل نواب لندن ،مانچسٹرکاپسندیدہ اورمقبول ریستوران بن گیا
  12  جنوری‬‮  2018     |     یورپ

لندن( نما ئند ہ ا و صا ف )متوازن غذا، غذائیت، فٹنس اور صحت مند وزن کی بات ہو تو ماہرین صحت ہمیشہ یہی کہتے ہیں کہ کھانے پینے کا صحت بخش پلان اس کے لئے سب سے اہم ہے۔ کئی طرح کے پھل اور سبزیاں تجویز کی جاتی ہیں اور یہ بھی کہا جاتا ہے کہ ہر کھانے کے ساتھ ان میں سے کوئی نہ کوئی چیز ضرور لیں۔ رائل نواب، برطانیہ کی فوڈ انڈسٹری کا جانا پہچانا اور معتبر نام ہے جو آپ کی ان ضروریات کو پورا کرنے کے لئے شائستہ اور پرسکون ماحول میں بالکل تازہ اجزاء سے بنے عمدہ کھانے ایک ہی جگہ پیش کرتا ہے۔ رائل نواب اس وقت لندن اور مانچسٹر کا انتہائی پسندیدہ اور مقبول ترین ریستوران بن چکا ہے۔رائل نواب کے بانی اور چیئرمین محبوب حسین ملک کا اس بارے میں کہنا ہے کہ ''یہ صرف لندن اور مانچسٹر میں میرے رائل نواب ریستورانوں پر ہی ہوتا ہے کہ کسٹمرز پورے اعتماد کے ساتھ ایسے معیاری کھانوں سے لطف اندوز ہو سکتے ہیں جو انہیں اور کہیں نہیں ملتے''۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے اپنے ریستوران کے ایک خوبصورت ہال میں اپنے بیٹے اور کمپنی کے ڈائریکٹر ڈاکٹر محمد وقاص کے ہمراہ ایک پریس کانفرنس کے دوران کیا۔ اپنے ریستوران کی تاریخ پر روشنی ڈالتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ 1980 کی دہائی میں انہوں نے پہلا قدم اٹھایا اور ایک چھوٹا سا ریستوران کھولا جہاں انہوں نے نئی طرز کے پاکستانی، بھارتی اور ایشیائی کھانے بنائے اور متعارف کرائے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ چودہ کامیاب سالوں کے بعد میں نے بڑے پیمانے پر ''لائیو کوکنگ بوفے اور بینکوئٹ سوئٹ'' کو منفرد تصور متعارف کرایا۔ اس تصور اور اس کی پذیرائی سے ملنے والے حوصلے کی بدولت میں نے 2002 میں سٹاک پورٹ، مانچسٹر میں اپنی طرز کا پہلا ریستوران کھولا اور اس طرح رائل نواب وجود میں آیا۔ پریس کانفرنس کے دوران انہوں نے اپنے مانچسٹر ریستوران کے 16 ویں یوم تاسیس اور چار سال پرانے لندن ریستوران کی شاندار کامیابی کے بارے میں بھی بتایا۔ محبوب حسین ملک نے صحافیوں اور دیگر شرکاء کو بتایا کہ اس تقریب کا واحد مقصد اس بارے میں پائے جانے والے الجھائو کو دور کرنا تھا کہ وہ اس وقت کس ریستوران سے وابستہ ہیں۔ انہوں نے مزید بتایا کہ ہم نے اپنے برانڈ اور لوگو کو ایک نیا رنگ دینے کا فیصلہ کیا ہے تاکہ کسٹمرز کو واضح طور پر پتہ چل سکے کہ میرا ریستوران کون سا ہے۔ انہوں نے کہا کہ رائل نواب سالہاسال سے لوگوں کا بااعتماد نام ہے اور مجھے امید ہے کہ اس نئے برانڈ اور لوگو کی بدولت کسٹمرز کو اسے دیگر ریستورانوں سے الگ طور پر پہچان کرنے میں مدد ملے گی۔ محبوب حسین ملک نے کہا کہ میں نے ہمیشہ اپنے کسٹمرز کے لئے کام کیا ہے اور وہی میری فیملی اور میری زندگی کا سب سے اہم حصہ ہیں۔ میرا یقین ہے کہ رائل نواب مانچسٹر اور لندن کے روح رواں ہمارے کسٹمرز، ان کی محبت اور معاونت ہے۔ محبوب حسین ملک نے مزید کہا کہ کھانے بنانا ہمیشہ سے ان کا شوق رہا ہے اور وہ اپنے کسٹمرز کے شکرگزار ہیں جو ان سے لطف اندوز ہوتے ہیں اور اتنی محبت اور دلچسپی کا اظہار کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میں اپنی ٹیم کے ساتھ مل کر پہلے سے زیادہ محنت اور لگن سے کام کروں گا۔ رائل نواب میں آنے والا ہر کسٹمر ہمارے لئے رحمت ہے اور ہم نے جو بھی ایوارڈ جیتے ہیں وہ ہر لحاظ سے ہماری محنت کا ثمر ہیں۔ اپنے آئندہ منصوبوں پر روشنی ڈالتے ہوئے محبوب حسین ملک نے بتایا کہ وہ رائل نواب کی طرف سے ''کیژوئل ڈائننگ'' کا ایک اور منفرد تصور متعارف کرانے والے ہیں اور امید ظاہر کی کہ ہمیشہ کی طرح لوگ اس کے لئے محبت اور مدد کا اظہار کریں گے۔ محبوب حسین ملک نے مزید کہا کہ رائل نواب کے نام سے صرف دو ریستوران ہیں اور برطانیہ میں اس کی اور کوئی برانچ نہیں ہے لہٰذا لوگوں کو اس بارے میں معلوم ہونا چاہئے تاکہ وہ محض کسی نام کی وجہ سے غلط فہمی کا شکار نہ ہوں۔ انہوں نے واضح کیا کہ میں رائل نواب کا چیئرمین ہوں جبکہ ڈاکٹر محمد وقاص اور اسد ملک اس کے دو ڈائریکٹر ہیں۔ اس موقع پر رائل نواب کے ڈائریکٹر ڈاکٹر محمد وقاص نے اپنے والد محبوب حسین کو ان کی محنت اور لگن پر خراج تحسین پیش کیا اور کہا کہ آج ہم جو کچھ بھی ہیں وہ اپنے والد کی بدولت ہیں جنہوں نے فوڈ انڈسٹری کو ایک نیا اور معتبر نام دیا۔ انہوں نے یقین دلایا کہ ہمارا نیا پراجیکٹ فوڈ انڈسٹری کے لئے ایک نیا انقلاب ہو گا۔ ایلنگ کے میئر کونسلر سائمن ووڈ روف اور میئریس ویلیری ووڈروف کے علاوہ کونسلر منیر احمد، کونسلر طارق محمود، حسن زبیری (میڈیا ڈائریکٹر)، امجد امین بوبی اور مختلف ٹی وی چینلز اور اخبارات کے نمائندے بھی اس موقع پر موجود تھے۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

اہم خبریں

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved