مولانا فضل الرحمان کےلئے الٹی گنتی شروع،،،اہم ترین عہدے سے فارغ کر دیا گیا
  13  مارچ‬‮  2018     |     اہم خبریں

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) متحدہ مجلس عمل کے اجلاس میں جے یو آئی(ف) کے امیر مولانا فضل الرحمان کو ایم ایم اے کے صدر بنانے پر اتفاق نہ ہو سکا جس کے باعث اجلاس بے نتیجہ ختم ہو گیا۔پیر کے روز اسلام آباد میں مولانا فضل الرحمان کے گھر میں متحدہ مجلس عمل کا ہونے والا اجلاس بے نتیجہ ختم ہو گیا ۔ اجلاس میں مولانا فضل الرحمان ، سراج الحق ، ساجد نقوی ، ساجد میر اور اویس نورانی سمیت اعلی مذہبی جماعتوں کے لیڈر موجود تھے ۔ تاہم اجلاس میں ( ایم ایم اے) کے امیر کے طور پر مولانا فضل الرحمان کے نام پر اتفاق نہ ہو سکا جب ایم ایم اے ٹوٹی تھی تو اس وقت جماعت اسلامی کے امیر

قاضی حسین احمد تھے اس وقت سے آج تک ایم ایم اے کے امیر کا فیصلہ نہیں ہو سکا اس لئے گزشتہ روز ایم ایم اے کا اجلاس بلایا گیا جس میں ایم ایم اے کے صدر اور کتاب کے نشان کا فیصلہ کرنا تھا اور اجلاس میں کتاب کے نشان کے حصول کے لئے الیکشن کمیشن سے رابطہ کرنا تھا مگر یہ اجلاس بے نتیجہ ختم ہو گیا۔ واضح رہے کہ اس سے قبل ایم ایم اے کا اجلاس اس لئے ملتوی کیا گیا تھا کہ جماعت اسلامی کے سربراہ سراج الحق نے جے یو آئی(ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کو پیش کش کی تھی کہ کہ جے یو آئی (ف) وفاق سے علیحدہ ہوں اور جماعت اسلامی کے پی کے حکومت سے علیحدہ ہوتی ہے پھر ایم ایم اے کے نمائندہ کا انتخاب کیا جائے گا لیکن مولانا فضل الرحمان نے سینیٹ انتخابات میں ڈپٹی چیئرمین سینٹ کی سیٹ کے عوض ایم ایم اے کا اجلاس سینیٹ الیکشن کے مکمل ہونے تک ملتوی کر دیا تھا ۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
50%
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
50%


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

اہم خبریں

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved