اگر دھرنے پر بیٹھے تو پھر نہیں اُٹھیںگے،کس کو بلوانا پڑے گا؟ حکومت کو وارننگ جاری
  7  دسمبر‬‮  2017     |     پاکستان

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) نجی ٹی وی چینل پر بات کرتے ہوئے معروف مذہبی اسکالر ڈاکٹر عامر لیاقت حسین نے کہا کہ قدرت کا نظام اور طریقہ کار ہماری عقل فکر اور سوچ سے ماورا ہے۔ اگر سانحہ ماڈل ٹاؤن کیس کا جائزہ لیں تو ہمیں معلوم ہو گا کہ یہ میرے خدا کی شان کے خلاف ہے کہ وہ جو زمین پر طاقتور بنتے ہیں انہیں بے اختیار کر کے سزا دے ۔سزا کے لیے اکڑ کا ہونا بہت ضروری ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ انصاف کا اسٹیج بن چکا ہے ۔ اور میں یہ بتانا چاہتا ہوں کہ قصاص تحریک کے

ڈاکٹر طاہر القادری صاحب اگر اب دھرنے پر بیٹھ گئے تو اب نہیں اٹھیں گے ، یہ کوئی بھول جائے کہ اب دھرنا دے کر وہ پھر اُٹھیں گے۔ لہٰذا بہتر یہی ہے کہ وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف اور وزیر قانون رانا ثنا اللہ خود کو قانون کے حوالے کر دیں اور قانون کو فیصلہ کرنے دیں ورنہ عوام جب خود اپنے معاملات درست کرنے پر آتی ہے تو قانون کو بھی سخت فیصلے کرنا پڑتے ہیں اور عین ممکن ہے کہ قانون کے ان سخت فیصلوں کی مدد کے لیے کسی کو آنا پڑے


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
100%
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

پاکستان

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved