’’پشاور کے ہسپتال میں زیر علاج ننھی مریضہ کی عمران خان سے محبت!‘‘؟
  10  اگست‬‮  2018     |     پاکستان

پشاور (مانیٹرنگ دیسک ) پاکستان تحریک انصاف کی خیبرپختونخواہ میں کارکردگی اور عوام سے کئے عمران خان کے وعدوں نے عوام کو عمران خان کا مداح بنادیا ہے۔ ایسی ہی ایک ننھی مداح منیبہ پشاور کے ایک ٹیچنگ اسپتال میں بھی زیر علاج ہے جسے عمران خان کا ڈریس پہننا پسند ہے۔ ایک سوشل میڈیا صارف نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ فیس بُک پر اس ننھی مداح کی کہانی شئیر کرتے ہوئے بتایا کہ میں ایک مریض کی عیادت کے لیے خیبر ٹیچنگ اسپتال پشاور گیا تو سامنے والے بیڈ پر ایک مریض بچی تھی جو سبز رنگ کے کپڑوں میں ملبوس تھی ۔ اس کا یہ لباس سبز جھنڈوں سے بھرا ہوا تھا۔یہ دیکھ کر میرا تجسس مجھے اس بچی کے پاس لے گیا ، اسس بچی سے خیر خیریت دریافت کرنے کے بعد میں نے اس سے سوال کیا کہ آپ نے یہ کونسا ڈریس پہنا ہوا ہے ؟ تو اس نے جواب دیا کہ یہ عمران خان کا ڈریس ہے ۔ میں نے حیرت سے پوچھا عمران خان؟ عمران خان آپ کو پسند ہے ؟ تو اس بچی کی آنکھوں کی چمک اور ہونٹوں پہ سجی مُسکراہٹ نے ہاں میں جواب دیا ۔ میں نے اس سے سوال کیا کہ اچھا عمران خان آپ کو کیوں پسند ہے ؟

تو اس نے معصوم جواب دیا کہ کیونکہ وہ ہمیں بجلی دیتا ہے۔۔سوشل میڈیا صارف نے بتایا کہ اس بچی کا ایک روز قبل ہی آپریشن ہوچکا تھا۔ اور وہ اصرار کرتی رہی کہ مجھے عمران خان کپڑے پہنائے جائے اور عمران خان کی ٹوپی بھی لاکر دیں ۔ اس بچی کو عمران خان سے جو پیار ومحبت ہے وہ ناقابل بیان ہے اور وہ دل سے چاہتی ہے کہ کسی دن وہ عمران خان سے ملے ۔ اس بچی کی کہانی پڑھ کر سوشل میڈیا صارفین نے اس بچی کی عمران خان کے لیے محبت کو سراہا اور اس کی جلد صحتیابی کی دعا کی۔ سوشل میڈیا صارفین کا کہنا تھا کہ عمران خان نے قوم کےبچوں کے دلوں میں بھی اپنی جگہ بنا لی ہے۔ قوم کو پاکستان تحریک انصاف اور عمران خان سے بہت سے اُمیدیں بھی وابستہ ہیں۔ سوشل میڈیا صارفین نے اس بچی کی تصویر اور اس کی کہانی سوشل میڈیا پر وائرل کرنے کا بھی ارادہ کیا اور کہا کہ ہو سکتا ہے کہ اس بچی کی کہانی عمران خان تک پہنچ جائے اور عین ممکن ہے کہ اس کی عمران خان سے ملاقات ہو جائے۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
100%
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

پاکستان

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved