تازہ ترین  
پیر‬‮   17   دسمبر‬‮   2018

آشیانہ ہائوسنگ سکینڈل میں گرفتار شہباز شریف کے بارے میں عدالت کا بڑا فیصلہ کیمپ جیل کی بجائے کہاں بھیج دیا گیا ، چونکا دینے والی خبر


لاہور(آئی این پی) احتساب عدالت نے آشیانہ اقبال ہاسنگ اسکینڈل میں گرفتار قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف کے مزید جسمانی ریمانڈ سے متعلق قومی احتساب بیورو (نیب)کی استدعا مسترد کرتے ہوئے انہیں جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا‘سیکورٹی خدشات پر پولیس نے شہبا زشر یف کو کیمپ جیل کی بجائے کوٹ لکھپت جیل منتقل کر دیا ۔ تفصیلات کے مطابق سابق وزیراعلی پنجاب شہباز شریف آشیانہ ہا ئوسنگ اسکینڈل کے سلسلے میں 5 اکتوبر سے قومی احتساب بیورو نیب لاہور کی تحویل میں تھے، جمعرات کو نیب کی جانب سے موقف اختیار کیا گیا کہ آشیانہ ہا ئوسنگ سکینڈل میں شہبازشریف سے تفتیش کا عمل جاری ہے اور ابھی تک مکمل

نہیں ہوا اس لیے مزید پندرہ روز ہ ریمانڈ دیاجائے ۔شہبازشریف کے وکیل نے اس کی مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ نیب نے اب تک شہبازشریف کا 64 روز کا ریمانڈ حاصل کر لیاہے جو کہ سمجھ سے بالا تر ہے اور نیب کی جانب سے جو تفتیش کی گئی ہے اس سے متعلق بھی عدالت کو آگاہ نہیں کیا گیا ہے ، نیب کی جانب سے یہ اقدام غیر قانونی ہے تاہم نیب پراسیکیوٹر عدالت کو مطمئن نہ کرسکے اور دلائل سننے کے بعد احتساب عدالت نے شہباز شریف کو جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھجوانے کا حکم دے دیاجس کے بعد شہباز شریف کو فیروز پور روڈ پر کیمپ جیل پہنچا دیا گیامگر وہاں جیل حکام نے سیکورٹی خدشات کا اظہار کردیا جسکے بعد پولیس نے میاں شہبا زشر یف کو کوٹ لکھپت جیل لاہور میں منتقل کردیا ہے جبکہ شہباز شریف کی پیشی کے موقع پر احتساب عدالت جوڈیشل کمپلیکس جانے والے تمام راستوں اور گلیوں پر پولیس کی بھاری نفری تعینات کی گئی(ن)لیگی کارکنوں سے نمٹنے کے لئے واٹر کینن بھی منگوائی گئی، سیکرٹریٹ چوک میں پولیس اور اینٹی رائٹ دستوں نے لوہے کی مضبوط جالیوں کی حفاظتی دیوار قائم کر دی جب کہ عدالت کے احاطے میں رینجرز کے اہلکار بھی موجود ہیں لیگی صدر شہباز شریف کو اب 13 دسمبر کو دوبارہ احتساب عدالت میں پیش کیا جائے گا۔




 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں


آج کا مکمل اخبار پڑھیں

تازہ ترین خبریں




     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved