تازہ ترین  
بدھ‬‮   14   ‬‮نومبر‬‮   2018

وزیراعظم عمران خان کی کوششیں رنگ لے آئیں ۔۔۔ سعودی عرب پاکسان کو کتنے ارب ڈالر دے رہاہے ؟پاکستان کو بڑی خوشخبری سنادی گئی


اسلام آباد (نیو ز ڈیسک) سعودی عرب کے سینئر حکومتی اہلکاروں کی قیادت میں تاجروں اور سرمایہ کاروں کا وفد 18 اکتوبر سے پاکستان کا دورہ کرے گا۔ وفد کے اراکین پاکستان میں مختلف شعبوں میں سرمایہ کاری کے امکانات پر پاکستانی حکام سے بات چیت کریں گے۔ وفاقی سیکرٹری تجارت و ٹیکسٹائل محمد یونس ڈھاگہ نے اتوار کو یہاں ’’اے پی پی‘‘ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سعودی وفد کے اراکین پاکستانی حکام سے پٹرولیم، زراعت، ٹیکسٹائل اور کیمیکل سمیت

مختلف شعبوں میں تجارت اور سرمایہ کاری کے امکانات کو فروغ دینے سے متعلق امور پر گفت و شنید کریں گے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان نے دونوں برادر اقوام کے درمیان تجارت اور سرمایہ کاری میں اضافے کیلئے سعودی عرب کو آزادانہ تجارت کے معاہدے کی تجویز دی ہے اور سعودی عرب نے اس ضمن میں جائزے کے بعد مذاکرات پر آمادگی کا اظہار کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان نے سعودی عرب کو ایف ٹی اے سے قبل ترجیحی تجارت کے معاہدے پر دستخط کی تجویز دی تھی تاکہ تجارتی تعلقات میں اضافہ کیا جا سکے اور دونوں ممالک کے درمیان ٹیرف میں کمی لائی جا سکے۔ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ ہم برآمدی اہداف حاصل کریں گے اور اقتصادی ترقی و خوشحالی کے لئے اضافی برآمدات کو یقینی بنانے کے لئے اقدامات کریں گے، حکومت برآمدات اور انجینئرنگ، ٹیکسٹائل، زراعت اور کیمیکل کے شعبوں میں مینوفیکچرنگ میں اضافے کے لئے پرعزم ہے، حکومت برآمدات پر مبنی بڑھوتری میں دلچسپی رکھتی ہے، ہماری کوشش ہے کہ درآمدات پر انحصار کم اور برآمدات میں اضافے پر توجہ دی جائے، ابتدائی طور پر ہم انجینئرنگ، انفارمیشن ٹیکنالوجی، کیمیکلز اور اختراعی ٹیکنالوجیز میں برآمدات میں اضافے پر

توجہ دے رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ٹیکسٹائل کے شعبے سے متعلق برآمدات بالخصوص نیٹ ویئرز، گارمنٹس، لیدر کی مصنوعات، چاول اور شعبوں کی برآمدات پر توجہ مرکوز کی گئی ہے۔ سیکرٹری تجارت کا کہنا تھا کہ ٹیکسٹائل اور صنعتی برآمدات میں اضافے کے لئے تمام سٹیک ہولڈروں کی مشاورت سے جامع پالیسی اور گائیڈ لائنز مرتب کی جا رہی ہیں۔




 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں


آج کا مکمل اخبار پڑھیں

تازہ ترین خبریں


کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved