05:55 am
 نوازشریف کے بعد کرپشن کرنے والی دوسری بڑی شخصیت کو بھی گرفتار کرلیا گیا

نوازشریف کے بعد کرپشن کرنے والی دوسری بڑی شخصیت کو بھی گرفتار کرلیا گیا

05:55 am

کوئٹہ ( مانیٹر نگ ڈیسک ) نیب نے بلوچستان کے محکمہ پبلک ہیلتھ اینڈ انجیئرنگ ڈپارٹمنٹ کے ایگزیکٹو انجینئر غلام سرور بگٹی پر بد عنوانی کا الزام ہے ، کہ ملزم نے 2017 میں قومی خزانے کو 4 کروڑ 46 لاکھ روپے کا نقصان پہنچایا تھا جس پر بلوچستان کے ڈائریکٹر محمد عابد جاوید نے وارنٹ جاری کردیئےتفصیلات کے مطابق نیب نے غلام سرور بگٹی پر 4 کروڑ 46 لاکھ روپے بد عنوانی کا الزام ہے ، ملک میں بد عنوانی کی تحقیقات کرنے والے ادارے کے حکام نے بتایا ہے ، کہ ملزم نے 2017 میں قومی خزانے کو 4 کروڑ 46 لاکھ روپے کا نقصان پہنچایا تھا ، ملزم کی گرفتاری کے لیے نیب بلوچستان کے ڈائریکٹر محمد عابد جاوید نے وارنٹ جاری کیے تھے ،
جنہیں حراست میں لینے کے بعد نیب کے ریجنل دفتر میں منتقل کردیا گیا ، نیب حکام کا کہنا ہے ، کہ ملزم کو جلد احتساب عدالت میں پیش کیا جائے گیا ، جہاں عدالت سے ان کے جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی جائے گی ،6 فروری 2018 کو نیب نے پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنما اور بلوچستان کے سابق وزیر خوراک میر اظہار حسین کھوسو کو غبن کے الزام میں گرفتار کیا تھا ، جس کے بعد 6 ستمبر 2017 کو سپریم کورٹ نے نیب کو ’کرپشن کا سہولت کار‘ قرار دیتے ہوئے نیب بلوچستان کی کارکردگی پر عدم اطمینان کا اظہار کیا تھا ، دوسری جانب خبر کے مطابق احتساب عدالت نے ایون فیلڈ ریفرنس کیس میں سابق وزیراعظم میاں نواز شریف ، ان کی صاحبزادی مریم نواز جبکہ داماد کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کو سزا تو سنادی۔ لیکن ساتھ ہی انہیں کرپشن اور منی لانڈرنگ کے الزام سے بری کیا گیا ہے۔ استغاثہ کرپشن اور کرپٹ پریکٹسز شواہد کی روشنی میں ثابت کرنے میں ناکام رہا ہے، اسلام آباد کی احتساب عدالت کی طرف سے ایون فیلڈ ریفرنس کے جاری تحریری فیصلے کے مطابق میاں نواز شریف سمیت تمام ملزمان مریم نواز اور کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کوکرپشن کے پیسے سے جائیداد بنانے کے الزام سے بری کیا گیا ہے، تحریری فیصلہ کے مطابق عدالت نے ملزمان کیخلاف فردجرم میں لگائی نیب آرڈیننس کی سیکشن 9اے 4سے بری کیا گیا اور کہا گیا ہے کہ استغاثہ ملزمان کے خلاف کرپشن یا منی لانڈرنگ کے الزامات ثابت نہیں کر سکی ہے، نیب اس حوالے سے کوئی ٹھوس ثبوت بھی پیش نہیں کر سکا ہے، نیب آرڈیننس کی سیکشن 9اے فورکرپشن سے متعلق ہے، اس طرح فیصلے میں نوازشریف سمیت تمام ملزمان کو کرپشن کے پیسے سے جائیداد بنانے کے الزام سے بری کر دیا گیا، اس طرح میاں نواز شریف سمیت تینوں ملزمان کرپشن، منی لانڈرنگ کے ان اہم الزامات سے بری کر دیئے گئے ہیں جنہیں ان کے مخالفین آج تک اچھالتے رہے ہیں اور استغاثہ کی طرف سے بھی جنہیں اس ریفرنس میں بنیادی جرائم قرار دیا گیا تھا۔ البتہ نوا شریف کو اپنی آمدنی سے زائد اور بے نامی دار جائیداد بنانے پر نیب آرڈیننس کے سکشن 95اے کے تحت سزا دی گئی ہے۔