05:25 pm
حکومت نے وضاحت کر دی

حکومت نے وضاحت کر دی

05:25 pm

اسلام آباد(آئی اےن پی) وفاقی وزیر اطلاعات چوہدری فواد حسین نے کہا ہے کہ سعودی ولی عہد کا دورہ پاکستان انتہائی منفرد نوعیت کا ہے ، وزیراعظم عمران خان خود سعودی ولی عہد کا استقبال کریں گے، پاکستان نے خارجہ محاذ پر بے پناہ کامیابیاں حاصل کی ہیں،سعودی عرب گوادر میں 8 ارب ڈالر کی آئل ریفائنری لگانے جا رہا ہے، سعودی عرب کے لئے ویزہ پالیسی میں بھی نرمی کی ہے سعودی وفد میں کاروباری افراد، بڑی کمپنیوں کے سربراہان شامل ہوں گے، دورے میں گزشتہ 10سال سے زیادہ سرمایہ کاری معاہدوں پر دست خط ہوں گے ،
باہر سے مہمان آرہے ہیں، تو ان کی سیکیورٹی کی ذمہ داری ہماری ہے، سعودی ولی عہد کی پاکستان آمد پر ریاست کا کوئی پیسہ خرچ نہیں ہورہا،پاکستان مسلم امہ کے حوالے سے مثالی کردار ادا کر رہا ہے، افغانستان کے حوالے سے پاکستان کے کردار کوسراہا جا رہا ہے، طالبان نمائندوں کے مذاکرات پاکستان میں ہوں گے سوشل میڈیا کے غلط استعمال پر کریک ڈاؤن ہوگا، کابینہ اجلاس میں پمز کے بورڈ کی منظوری دی گئی ہے ، موجودہ حکومت نے 26 کابینہ اجلاس کئے، جس میں 440 فیصلے ہوئے، انھوں نے کہا کہ آزادجموں وکشمیرکے سرچارج کے حوالے سے کمیٹی بنائی گئی ہے، کابینہ میں اسٹیٹ لائف کی تشکیل نو کا فیصلہ کیاگیا ہے، نصیر خان کاشانی گوادرپورٹ کے چیئرمین، ظفرعثمانی پاکستان اسٹیٹ آئل کے نئے چیئرمین، جب کہ عدنان غنی زرعی ترقیاتی بینک کے چیئرمین ہوں گے،شہباز شریف کی ضمانت پر قوم مایوس ہے، نیب فیصلہ چیلنج کرے۔ وہ جمعرات کو یہاںوفاقی کابینہ اجلاس میں کئے گئے فیصلوں کے بارے میں میڈیا کو بریفنگ دے رہے تھے ۔ وزیراطلاعات فواد چوہدری نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ پاکستان سرمایہ کاری کےلئے ایک بہترین ملک ہے، ولی عہد کا دورہ پاکستان سعودی ولی عہد کا کرون پرنس کی حیثیت سے پہلا دورہ ہے، اس دورے کی اہمیت بہت اہمیت کی حامل ہے، جب سے ہم نے حکومت سنبھالی ہے ہم نے خارجہ امور پر بے پناہ کامیابیاں حاصل کیں، ذوالفقار علی بھٹو کے بعد مشرق وسطیٰ واپس اتنی ہی بڑی کامیابی حاصل ہوئی ہے، ہم مسلم امہ میں ایک مصلیحتی کا کردار ادا کر رہے ہیں، ہم تمام اسلامی ممالک کو آپس میں جوڑ رہے ہیں، اس سے پوری دنیا میں پاکستان کے احترام میں اضافہ ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ افغانستان کے حوالے سے پاکستان کا کردار دنیا کی نظروں میں بہت اہم ہے، دو دہائیوں سے جنگ زدہ علاقے میں طالبان کا حکومت سے مذاکرات افغان امن میں ایک گیم چینجر کی حیثیت رکھتا ہے، طالبان کے مذاکرات اس مرتبہ پاکستان میں ہوں گے، ان مذاکرات کی بدولت افغانستان میں استحکام کا امکان ہے، یہ امن پوری دنیا کو پاکستان میں سرمایہ کاری کی طرف مائل کرے گا، سعودی ولی عہد کا یہ دورہ اور اس دوران ہونے والے معاہدے گزشتہ دس سالوں کی بیرونی سرمایہ کاری سے زیادہ ہیں، صرف آئل ریفائنری کا 8ارب ڈالر کا منصوبہ ہے، سابقہ حکومت نے بیرونی سرمایہ کاری کو صرف نظرانداز ہی کیا ہے، ہم نے جن ممالک کےلئے ویزہ پالیسی آسان کی ہے ان میں ایک سعودی عرب بھی ہے۔انہوں نے کہا کہ سعودی عرب کے لوگ اب پاکستان میں سرمایہ کاری اور سیاحت کےلئے آسانی سے آ سکیں گے، سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کا استقبال خود وزیراعظم پاکستان کریں گے، ان کو 21توپوں کی سلامی بھی دی جائے گی، ان کےلئے ایوان وزیراعظم، ایوان صدر میں ضیافت کا اہتمام کیا جائے گا، ولی عہد کے ساتھ پاکستان میں کلیدی کردار ادا کرنے والی شخصیات بھی ملاقاتیں کریں گی، 17فروری کو پاکستانی تاجر سعودی وفد کے ہمراہ آنے والے سرمایہ کاروں سے خصوصی ملاقات کریں گے، جس کی صدارت بورڈ آف انویسٹمنٹ کرے گا۔ انہوں نے کابینہ اجلاس کے حوالے سے بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ اب تک 6مہینوں میں کابینہ کے 26اجلاس ہو چکے ہیں، جن سے متعلق کارکردگی رپورٹ پیش کی گئی، جن میں 440فیصلے ہوئے، سابقہ حکومت نے 6ماہ میں صرف 5اجلاس کئے،جن میں کل 43فیصلے ہوئے تھے، ہمارے طواتر کے اجلاس ہو رہے ہیں،نواز شریف نے تو سپریم کورٹ کے مصطفیٰ آئی میکس کیس کے بعد کابینہ ممبران سے ملاقاتیں شروع کی تھیں ، یہ ہماری اور سابقہ حکومت میں واضح فرق ہے،اب تک 243فیصلوں پر مکمل عملدرآمد ہو چکا ہے، 43فیصلوں پر ابھی عملدرآمد ہونا باقی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کابینہ نے فیصلہ کیا ہے کہ جن انڈسٹریل زون میں گیس اور بجلی نہیں ہے انہیں گیس بجلی فوری مہیا کی جائے گی تا کہ صنعت ترقی کرے اور آنے والی عالمی سرمایہ کاری کےلئے پہلے ہی تیار رہے۔انہوں نے کہا کہ پی ایس او کا نیب بورڈ بنایا گیا ہے، جس کے چیئرمین عمران عثمانی ہوں گے، تارہ عذرا ، داؤد ہمایوں،بلوچستان سے شاہد خان ، کے پی کے سے جوائنٹ پٹرولیم، ڈی جی پی سی پٹرولیم ڈویژن ،سیکرٹری پاور، ایم ڈی پی ایس او جی ڈی سی ایل عمران عثمانی بھی اس کے نئے چیئرمین ہوں گے،زرعی ترقیاتی بینک کے نئے چیئرمین عدنان غنی ہوں گے جو آسٹریلیا کے ایک مایہ ناز بینکر ہیں، اس سے ہماری اوورسیز پاکستانیوں سے کمٹمنٹ ظاہر ہوتی ہے، وزیراعظم نے کہا ہے کہ اوورسیز پاکستانیوں کےلئے کھارا ہے۔گوادر پورٹ اتھارٹ کا چیئرمین نصیر خان کاشانی ہونگے۔ اس کے ساتھ ساتھ سٹیٹ لائف کی دوبارہ بحالی کیلئے اصلاحات کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ اجلاس کو پاکستان میں ہسپتالوں کی صورتحال سے متعلق آگاہ کیا گیا۔ شیخ زید سے دوسرے ہسپتال وفاق کو واپس کئے گئے ہیں۔ پی ڈی ایم کے ایرا کو اکٹھا کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ جس کی منظوری دے دی گئی ہے۔ آزاد کشمیر کے واٹر پے منٹ ایشو سے متعلق کابینہ کی کمیٹی بنائی گئی ہے۔ نیشنل اینٹی نارکوٹیکس پالسی بھی کابینہ میں پیش کی گئی ہے۔ یہ اہم فیصلے ہیں جو آج کے اجلاس میں ہوئے۔ انہوں نے عمران کان کے سابقہ دورہ سعودی عرب کے حوالے سے کہا کہ وزیراعظم کے گزشتہ دوروں کا اہم مقصد سعودیہ میں مقیم پاکستانی تھے کہ ان کے ویزہ کی قیمتیں کم کی جائیں۔ وزیراعظم نے بھی پاکستان میں قائم تمام ایمبیسیوں کو ہدایات دے دی ہیں کہ بیرون ملک جو پاکستانی کرائم میں ملوث ہیں ان ضرور قانونی سہولیات فراہم کی جائیں۔ وزیراعظم کا بروز پیر اسمبلی میں جانے کا امکان ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ سب انکشافات ہی ہیں کہ شہباز شریف رہا ہوگئے ہیں ، وہ اب اسلام آباد کی سڑکوں پر گھومتے رہے ہیں۔ پاکستان کا قانون ہی ایسا ہے کہ مرغیاں چور کو سواسال جیل میں گزارنے پڑتے ہیں جبکہ 15سوارب روپے کی کرپشن کرنے والے کی تو 90دن میں بیل ہوجاتی ہے چاہے انہوں نے 90میں سے 70دن منسٹرانکلیو میں گزارے ہیںرینجر کی گاڑیاں ان کے آگے پیچھے رہی ہیں۔ یہ سب نیب کیلئے لمحہ فکریہ ہے۔ ہمارے لیے بھی ہے، ہم نے اس نظام کو بدلنا ہے۔ جب نواز شریف کو ہائی کورٹ نے بیل دی اور ان کا کیس سپریمکورٹ میں گیا تو ان کا فیصلہ ہائی کورٹ کی بیل کے خلاف ایک پوری چارج شیٹ ہے۔ نیب کو بھی اس کو دیکھنا چاہیے کہ اس نے جو کیس فائل کئے وہ منطقی انجام تک کیوں نہیں پہنچے ، نیب بھی لوگوں کو اعتماد میں لے کے ان کیسوں کو منطقی انجام تک پہنچائے۔ محکمہ گیس کے حالات بھی کافی خراب ہیں ان کو بھی کافی گہرائی سے دیکھیں گے

تازہ ترین خبریں