10:31 am
اگر یہ کام ہو جائے تو عمران خان نوازشریف سے ملاقات کیلئے جا سکتے ہیں

اگر یہ کام ہو جائے تو عمران خان نوازشریف سے ملاقات کیلئے جا سکتے ہیں

10:31 am

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے نجی چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اپوزیشن کا رویے سے قومی اسمبلی میں تلخی کی فضا ہے جب تلخی کی فضا نیچے جائے گی، حالات بہتر ہوں گے تو پھر اس کے بعد عمران خان میاں صاحب کی عیادت کے لیے جا سکتے ہیں۔قومی اخبارکے مطابق میاں نواز شریف کی علالت کی وجہ سے جو آفر حکومت نے کی ہے قانون کے مطابق اس سے زیادہ آفر کوئی حکومت نہیں کر سکتی کہ پاکستان کے جس بھی ہسپتال میں چاہیں
علاج کروائیں یا لندن سے اپنا ڈاکٹر منگوا لیں حکومت نے جو اقدامات کیے سیاست سے ہٹ کر کیے ہیں۔ر ہنما ن لیگ طارق فضل چوہدری نے کہا کہ نوازشریف کیساتھ حکومتی رویہ غیر مناسب ہے ان ہسپتالوں میں لے جایا گیا جہاں ان کے علاج کی سہولیات ہی موجود نہیں۔رہنما پیپلزپارٹی نبیل گبول کا کہنا تھا کہ بلاول بھٹو اور نوازشریف ملاقات کو سراہا جانا چاہیے حکومت کو خوف ہے کہ اپوزیشن متحد ہو کر قومی اسمبلی میں اسے تنگ کرے گی، عمران خان بھی جیل جاتے ہیں تو ان کو بھی ملنے جائیں گے،پاک بھارت کشیدگی میں عمران خان کا بین الاقوامی طور پر امیج بہتر ہوا ہے۔وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے کہا کہ نواز شریف کے بیرون ملک علاج کا معاملہ حکومت کے اختیار میں نہیں ہے ،ن لیگ نواز شریف کو بیرون ملک لے جانا چاہتی ہے تو عدالت میں جائے، نواز شریف کو دل کے ساتھ گردوں، بلڈ پریشرا ور شوگر کی بیماریاں بھی ہیں، حکومت نے سابق وزیراعظم کو ایسے ہسپتالوں میں بھیجا جہاں تمام بیماریوں کا علاج ہوتا ہو، حکومت نے نواز شریف کو پاکستان میں کسی بھی ہسپتال میں علاج کی پیشکش کی ہے۔

تازہ ترین خبریں