10:01 am
میں کس ڈر سے نواز شریف کو دیکھنے جیل نہیں گئی ؟یاسمین راشد نے حیرا ن کن اعلان کر دیا

میں کس ڈر سے نواز شریف کو دیکھنے جیل نہیں گئی ؟یاسمین راشد نے حیرا ن کن اعلان کر دیا

10:01 am

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک) صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد کا سابق وزیر اعظم نواز شریف کی صحت کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ نواز شریف کی باتوں سے ایسا لگتا ہے کہ وہ پاکستان میں علاج کرانے پر مطمئن نہیں ہے اور وہ بیرون ملک علاج کروانا چاہتے ہیں اور اس کے لیے مسلسل کوشاں بھی ہیں۔ڈاکٹر یاسمین راشد کا کہنا تھا کہ نواز شریف کا ہر طریقے سے خیال رکھا گیا
اور ہمارے پاس جتنی بھی بہترین سہولیات تھیں وہ انہیں مہیا کی گئی۔ یاسمین راشد سے سوال کیا گیا کہ مسلم لیگ ن کے رہنماؤں کا کہنا ہے کہ نواز شریف کو چیک کرنے کے لیے جو ڈاکٹرز کا بورڈ بنایا گیا اس میں دو گائنی کے ڈاکٹر بھی ہیں جبکہ نواز شریف کو دل کا عارضہ ہے۔جس کا جواب دیتے ہوئے ڈاکٹر یاسمین راشد نے کہا کہ میں تو اسی لیے ڈر کے مارے انہیں دیکھنے بھی نہیں گئی کہ کہیں الزام نہ لگ جائے کہ مجھے گائنالوجسٹ دیکھنے آئی۔ واضح رہے سابق اسپیکر پنجاب اسمبلی نے نواز شریف کی صحت اور علاج معالجے پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ نوازشریف کوعلاج کی سہولت نہیں دی جارہی۔ اگرکچھ ہوا توذمہ داری تبدیلی سرکارہوگی۔ انہوں نے کہاکہ نوازشریف کا گائناکالوجسٹ سےعلاج کروایا جاتا ہے۔اس حوالے سے مسلم لیگ ن کے رہنما ملک احمد خان نے کہا کہ نوازشریف کا قیدی رولزکےمطابق بھی علاج نہیں ہورہا۔ جب گائنی کے ڈاکٹر کو بورڈ ہیڈ بنا دیا ہو تو کیا رپورٹ مرتب ہوگی۔ جب کہ مائیکروبلاگنگ ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے پیغام میں مریم نواز نے نواز شریف کی طبیعت سے متعلق کہا تھا کہ ہ نواز شریف کو ملاقات کے دوران ہی سینے میں درد ہوا ۔انہیں انجائنا کا اٹیک ہوا جس پر انہیں اسپرے دیا گیا۔ انہوں نے بتایا کہ اس ہفتے میں چار مرتبہ سینے میں ایسا درد ہوا۔ نواز شریف نے کہہ دیا ہے کہ وہ نہ کسی کو بتائیں گے اور نہ ہی شکایت کریں گے۔

تازہ ترین خبریں