09:26 am
حمزہ شہباز گرفتار؟ چھاپے کے بعد ن لیگیوں کیلئے اچانک اہم خبر آگئی

حمزہ شہباز گرفتار؟ چھاپے کے بعد ن لیگیوں کیلئے اچانک اہم خبر آگئی

09:26 am

اسلام آباد(نیو زڈیسک) نیب نے شہباز شریف کے گھر 96 ایچ ماڈل ٹاؤن پر چھاپہ مارا تاہم رہائش گاہ کے باہر موجود سکیورٹی گارڈز کی تلخ کلامی اور شدید مزاحمت کے سبب گرفتاری ممکن نہ ہو سکی، نیب ٹیم ناکام ہو کر واپس روانہ ہو گئی ذرائع کے مطابق نیب ٹیم کے پاس حمزہ شہباز کی گرفتاری کے وارنٹ موجود تھے۔ سکیورٹی گارڈز نے نیب ٹیم کو گھر میں داخلے سے روک دیا،
نیب ٹیم شہباز شریف کی رہائش گاہ کے باہر موجود تھی جہاں نیب ٹیم اور سکیورٹی گارڈز میں تلخ کلامی ہوئی، شہباز شریف اور حمزہ شہباز گھر میں موجود تھے۔ نیب ٹیم ذرائع کے مطابق حمزہ شہباز کے خلاف منی لانڈرنگ کے الزام ہیں، ان کے خلاف نیب کے پاس ثبوت موجود ہیں۔ترجمان مسلم لیگ ن ملک احمد خان کا کہنا ہے نیب نے بغیر سرچ وارنٹ چھاپہ مارا ہے، حکومت نے بہت غلط کام کیا، حکومت نے پورے ملک کو پولیس اسٹیٹ بنا دیا ہے، اپوزیشن لیڈر کے گھر پر چھاپہ قانون کی خلاف ورزی ہے۔ مریم اورنگزیب نے شہباز شریف کے گھر پر نیب کے چھاپے کی مذمت کرتے ہوئے کہا نیب نے پیشگی اطلاع کے بغیر اپوزیشن لیڈر کے گھر پر چھاپہ مارا ہے، کرپشن کا کوئی الزام اب تک ثابت نہیں ہوا، عدالتی حکم کی پیروی نہیں کی جا رہی۔ انہوں نے کہا حمزہ شہباز عدالتوں میں پیش ہو رہے ہیں، گرفتاریاں صرف لیگی رہنماؤں کیلئے ہیں ؟ گرفتاری سے پہلے اطلاع کیوں نہیں دی جاتی ؟۔ طلال چودھری کا کہنا تھا لیگی رہنما پیشیاں بھگت رہے ہیں، حکمران چاہتے ہیں ان کیخلاف کوئی آواز نہ اٹھائے، حکمران جان بوجھ کر تماشہ لگا رہے ہیں، حمزہ شہباز کو گرفتار کرنے کی وجہ کیا ہے ؟ انہوں نے کہا شہباز شریف کو اتنی دیر جیل میں رکھنے کا ذمہ دار کون ہے ؟ وزیراعلیٰ پنجاب کے پاس اپنی کارکردگی کا جواب نہیں، حکومت کو 5 سال تو کیا 5 ماہ نہیں گزارنے دیں گے۔ ترجمان وزیراعلیٰ پنجاب شہباز گل کا کہنا ہے نیب آزاد ادارہ ہے، نیب پنجاب یا مرکزی حکومت کے ماتحت نہیں، نیب کیسز میں ضمانتیں بھی شریف فیملی کو ہی مل رہی ہیں، دوسرے کسی رہنما یا جماعت کو کیوں نہیں مل رہی ؟ انہوں نے کہا حمزہ شہباز کی زندگی کو خطرہ ہوتا تو حکومت پنجاب تحفظ دیتی، اسی طرح اگر نیب کی ٹیم کو خطرہ ہوگا تب بھی حکومت پنجاب تحفظ دے گی۔