04:37 pm
مسلم لیگ (ن) کی سابق حکومت کا یہ منصوبہ انتہائی شاندار تھا

مسلم لیگ (ن) کی سابق حکومت کا یہ منصوبہ انتہائی شاندار تھا

04:37 pm

اسلام آباد(آئی این پی) وفاقی حکومت نے مہلک بیماریوں میں مبتلا مستحق افراد کے علاج کے لیئے نوازشریف دور حکومت میں شروع کیئے گئے وزیراعظم پروگرام کو دوبارا شروع کرنے کا اعلان کر دیا،قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے پارلیمانی امور کو وزیر مملکت برائے پارلیمانی امور علی محمد خان نے آگاہ کیا کہ وزیراعظم عمران خان کی خواہش ہے یہ پروگرام بیت المال کے ذریعے چلایا جائے ،بیت المال اس حوالے سے رولز اینڈ ریگولیشن بنائے
تاکہ براہ راست فنڈز بیت المال کو جائیں اور وہ ہی اس کو چلائیں،یہ پروگرام سابقہ حکومت نے اچھی نیت سے شروع کیا تھا،ہم اس کو سراہتے ہیں۔جمعہ کو قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے پارلیمانی امور کا اجلاس چیئرمین مجاہد علی کی صدارت میں ہوا،اجلاس کے دوران الیکشن کمیشن حکام کی جانب سے سابقہ فاٹا کی خیبر پختونخوا اسمبلی کے لیئے نشستوں پر انتخابات کے حوالے سے بریفنگ دی گئی،بریفنگ میں بتایا گیا ہے سابقہ فاٹا کی 4 مارچ کو حلقہ بندیاں شائع کی گئیں،16 صوبائی نشستوں پر انتخابات کا شیڈول اپریل کے آخر میں جاری کیا جائے گا ،تیسرے پتے کے باعث75 ہزار ووٹ سابقہ فاٹا سے ہٹائے گئے ہیں، جبکہ ایک لاکھ 94 ہزار ووٹ فاٹا میں شامل کیئے گئے ہیں،فاٹا میں رجسٹرڈ ووٹرز کی تعداد 26لاکھ 91 ہزار895 ہے ،جبکہ فاٹا کی آبادی 50لاکھ ایک ہزار929 ہے،مولانا عبدالاکبر چترالی نے کہا کہ سابقہ فاٹا کی آبادی 50 لاکھ ہے تو ووٹرز کی تعداد 26 لاکھ کیسے ہو گئی ،وہاں بچے بہت زیادہ ہیں،اجلاس کے دوران مہلک امراض کے علاج کے لیئے سابقہ دور حکومت میں شروع کیئے گئے وزیراعظم پروگرام پر بھی بریفنگ دی گئی ،وزارت پارلیمانی امور نے کمیٹی کو بتایا کہ یہ پروگرام 2016 میں شروع کیاگیا تھا ،جس سے 852 مریضوں کا علاج کیا گیا جس پر ایک ارب 87 کروڑ روپے کے اخراجات آئے ، نگران حکومت کے دوران اس پروگرام کو بند کر دیا گیا ،31 مئی 2018 کے بعد اس پروگرام کے لیئے کوئی پیسے جاری نہیں کیئے گئے ،یہ ریگولر پروگرام نہیں تھا ،بلکہ وزیراعظم وزیراعظم کے احکامات پر شروع ہوا تھا،وزیر مملکت برائے پارلیمانی امور علی محمد خان نے کمیٹی کو بتایا کہ وزیراعظم عمران خان کی خواہش ہے یہ پروگرام بیت المال کے ذریعے چلایا جائے ،بیت المال اس حوالے سے رولز اینڈ ریگولیشن بنائے تاکہ براہ راست فنڈز بیت المال کو جائیں اور وہ ہی اس کو چلائیں،رکن کمیٹی عبد الرحمان کانجو نے کہا یہ پروگرام دوبارا شروع ہونا چاہیئے ،نگران حکومت کے دوران سے یہ بند ہے ،وزیر پارلیمانی علی محمد خان نے کہا کہ جب تک میں وزیر ہوں یہ پروگرام سرد خانے میں نہیں جائے گا،یہ پروگرام سابقہ حکومت نے اچھی نیت سے شروع کیا تھا،ہم اس کو سراہتے ہیں ،ان کا ارادہ اچھا تھا اسی ارادے کو میں بھی جاری رکھنا چاہتا ہوں ،یہ پروگرام نگران حکومت میں بند ہوا تھا ہم اس کو شروع کرنا چاہتے ہیں،بیت المال کے ذریعے اس پروگرام کو چلانے پر رائے لینے کے لیئے ایم ڈی بیت المال کو کمیٹی میں بلایا جائے،علی محمد خان نیکہاکہ اسمبلی میں وزیراعظم کے ایک گھنٹہ سوالوں کے جواب دینے سے متعلق رولز میں ترامیم کے لیئے قائمہ کمیٹی برائے قواعد و ضوابط کی ذیلی کمیٹی بنادی گئی ہے ،امید ہے کہ مہینے کے اندر وزیراعظم اسمبلی میں سوالوں کے جوابات دیں گے ۔

تازہ ترین خبریں