08:06 am
جن سے ایک شہر نہیں سنبھالاجاتا وہ حکومت کیا سنبھالیں گے

جن سے ایک شہر نہیں سنبھالاجاتا وہ حکومت کیا سنبھالیں گے

08:06 am

پشاور(مانیٹرنگ ڈیسک) جمعیت علماء اسلام کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ خلائی مینڈیٹ سے آنے والی جعلی حکومت کو نہ ہی عوام کی حمایت حاصل ہے اور نہ ہی حکومت کرنے کی اہلیت ہے حکومت بجٹ کرنے کی صلاحیت نہیں رکھتی بجٹ آئی ایم ایف تیار کرے گا جن سے ایک شہر نہیں سنبھالا جاتا وہ ملک کو کیا سنبھالیں گے ملک میں ٹیکنو کریٹس کی حکومت ہے عمران خان مستعفی ہوں اورنئے انتخابات کرائے جائیں پشاورمیں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ 8 ماہ سے ملک سیاسی و معاشی بحران کا شکار ہے
حکومت کی معاشی پالیسیوں نے ملک کو یہاں تک پہنچا دیا آئی ایم ایف معاشی معاملات میں مداخلت کر رہا ہے موجودہ حکومت ملک کا بجٹ تیار کرنے کی صلاحیت نہیں رکھتی پاکستان کا بجٹ آئی ایم ایف تیار کرے گا انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت کے 8 ماہ میں جو قرضہ لیا گیا وہ 30 سال میں نہیں لیا گیا حکومت یومیہ 15 ارب روپے قرضہ لے رہی ہے پشاور اور بی آر ٹی منصوبہ سہولت دینے کی بجائے شہریوں کے لئے عذاب بن گیا اور 25 ارب کا منصوبہ ایک کھرب تک پہنچ گیا ہے انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت خلائی مینڈیٹ لے کر آئی ہے جو ایک صوبے کی حکومت نہیں چلا سکتے انہیں ملک پر مسلط کر دیا گیا ہے تحریک انصاف کی حکومت نے پشاور شہر کا برا حال کر دیا ہے یہ ملک کو کیا سنبھالیں گے اتنا قرضہ لینے کے باوجود عام آدمی کی حالت نہیں بدلی حکومت عام آدمی کے تحفظ میں ناکام ہو چکی ہے اور ملک میں امن وامان کی صورتحال مخدوش ہے انہوں نے کہا کہ خلائی مینڈیٹ سے آنی والی حکومت کو ندھی عوام کی حمایت حاصل ہے اور نہ ہی حکومت کرنے کی اہلیت ہے ملک کی سیاسی قیادت پر کرپشن کے الزامات لگائے جا رہے ہیں سیاسی قیادت کو عدالتوں میں گھسیٹا جا رہا ہے انہوں نے کہا کہ ملک میں اس وقت ٹیکنو کربٹس کی حکومت ہے عمران خان خود مستعفیٰ ہو ں اور ملک میں نئے انتخابات کرائے جائیں ۔

تازہ ترین خبریں