05:26 am
 میگا کرپشن کے مقدمات سالہا سال تک نہیں چلیں گے، چیئرمین نیب

میگا کرپشن کے مقدمات سالہا سال تک نہیں چلیں گے، چیئرمین نیب

05:26 am

اسلام آباد(خصوصی نیوز رپورٹر ) چئیرمین نیب نے کہا ہے کہ ملک کو بد عنوانی جیسی لعنت سے پاک کرنے کیلئے کوشاں ہیں، نیب میں پیش ہونے والے تمام افردا کی عزت نفس کا قانون کے مطابق خیال رکھیں، نیب پیشہ وارانہ کارکردگی شفافیت ‘ میرٹ اور قانون پر بلا امتیاز عمل درآمد کے ذریعے ملک سے ہرقسم کی بد عنوانی کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کیلئے تمام وسائل برئوے کار لا رہا ہے ، نیب افسران بدعنوانی کے خاتمے کو قومی فرض سمجھ کر ادا کررہے ہیں۔ پیر کو قومی احتساب بیورو کے چئیرمین جسٹس جاوید اقبال نے قومی احتساب بیورو ہیڈ کوارٹرز میں ایک اجلاس کی صدارات کی ۔ اجلاس میں نیب کے آپریشن ڈویثرن اورپراسیکیوشن ڈویثرن کی کارکردگی خصوصاََ میگا کرپشن مقدمات پر اب تک کی پیس رفت کا جائزہ لیا گیا۔ چئیرمین نیب نے کہا کہ انہوں نے 11 اکتوبر 2017؁ کو اپنی ذمہ داریاںسنبھالنے کے بعد سختی سے ہدایت کی تھی کہ 179میگا کرپشن مقدمات کو قانون کے مطابق منطقی انجام تک پہنچایا جائے۔اجلاس میں بتایا گیا کہ چئیرمین نیب کے احکامات کی روشنی میں نیب ہیڈکوراٹرز اور تمام علاقائی بیوروز نے میگا کرپشن مقدمات کو منطقی انجام تک پہنچانے کیلئے حوصلہ افزاء کاوشیں کی ہیں اور 179 میگا کرپشن مقدمات میں سے 105 بدعنوانی کے ریفرنس متعلقہ احتساب عدالتوں میں جمع کروائے جاچکے ہیں جن پر قانون کے مطابق کاروائی جاری ہے ۔ نیب میں اس وقت 15 مقدمات میں انکوائریاں اور 18 مقدمات انوسٹی گیشن کے مراحل سے گزر رہے ہیں جبکہ 41 مقدمات کو منطقی انجام تک قانون کے مطابق نمٹایا جا چکا ہے۔ چئیرمین نیب نے پراسیکوشن ڈویثرن اور آپریشن ڈویثرن کے علاوہ نیب کے تمام ریجنل بیوروز کے ڈائریکٹر جنرلز کو ہدایت کی ہے کہ میگا کرپشن مقدمات کے علاوہ زیر التواء مقدمات خصوصاََ انکوائریوں اور انوسٹی گیشنز کو قانون کے مطابق پہلے سے طے شدہ کے اندر منطقی انجام تک پہنچایا جائے ۔ نیب میں مقدمات سالہا سال تک نہیں چلیں گے۔ انہوں نے کہا کہ بدعنوانی تمام برائیوں کی جڑ ہے جسکو نیب میرٹ ، شواہد، شفافیت اور ’’ احتساب سب کیلئے ‘‘ کی پالیسی پر عمل کرتے ہوئے ملک کو اس لعنت سے پاک کرنے کیلئے کوشاں ہیں۔ انہوں نے نیب افسران کو ہدایت کی کہ نیب میں پیش ہونے والے تمام افردا کی عزت نفس کا قانون کے مطابق خیال رکھیں۔ نیب کی طرف سے جو بھی ریفرنس احتساب عدالتوں میں دائر کیا جائے اس میں ملزموں کے بیانات، ٹھوس شواہد کے ساتھ ساتھ قانون کے تمام تقاضوں کو مد نظر رکھا جائے اور معززاحتساب عدالتوں، معزز ہائی کورٹس اور معزز سپریم کورٹ آف پاکستان میں زیر سماعت مقدمات کی پیروی مکمل تیاری ،ٹھوس شواہد اور قانون کے مطابق کی جائے ۔ چیئرمین نیب

تازہ ترین خبریں