05:26 am
حسین لوائی اور طحہ رضا کی درخواست ضمانت  پر نیب کو نوٹس

حسین لوائی اور طحہ رضا کی درخواست ضمانت پر نیب کو نوٹس

05:26 am

اسلام آباد ( خصوصی نیوز رپورٹر) اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی پرمشتمل ڈویژن بنچ نے جعلی اکاﺅنٹس میگا منی لانڈرنگ کیس کے مرکزی ملزمان حسین لوائی اور طحہ رضا کی درخواست ضمانت پر نیب کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیا جبکہ سابق صدر آصف علی زرداری کے قانونی مشیر ابو بکر زرداری کی پانچ لاکھ روپے مچلکوں کے عوض عبوری ضمانت منظور کر لی ہے۔ فاضل عدالت نے سابق صدر آصف علی زرداری کی کمپنی پارک لین کو زمین کی فروخت کے معاملے میں پیپلز پارٹی کے رہنما فیصل سخی بٹ کی جانب سے نیب کے خلاف ہراساں کرنے کی درخواست کی سماعت بغیر کارروائی کے دو ہفتوں تک ملتوی کر دی ہے۔ واضح رہے کہ حسین لوائی اور طحہ رضا جعلی اکاﺅنٹس کیس میں ملیر جیل کراچی میں قید ہیں ، دونوں ملزمان نے ضمانت بعد از گرفتاری کیلئے اسلام آباد ہائی کورٹ میں درخواستیں دائر کی ہیں۔ درخواستوں کی ابتدائی سماعت کے بعد فاضل عدالت نے نیب کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیا۔ دریں اثناءآصف علی زرداری کے قانونی مشیر ابو بکر زرداری نے اسلام آباد ہائی کورٹ میں ضمانت قبل از گرفتاری کے لئے دائر درخواست میں چیئرمین نیب اور ڈپٹی ڈائریکٹرنیب محمدکامران کوفریق بناتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ نیب نے جعلی بنک اکاﺅنٹس کیس میں طلب کر رکھا ہے اور خدشہ ہے کہ گرفتار کر لیا جائے گا۔ درخواست میں ضمانت قبل ازگرفتاری منظور کرنے کی استدعا کی گئی تھی۔ ابتدائی سماعت کے بعد فاضل بنچ نے پانچ لاکھ روپے مچلکوں کے عوض عبوری ضمانت منظور کر لی۔ ملزم پر 11 آرمڈ وہیکلز منگوانے کے بعد گاڑیوں پر عائد ٹیکس اور ڈیوٹی کی جعلی بینک اکاﺅنٹس سے ادائیگیوں کا الزام ہے۔ ادھر سابق صدر آصف علی زرداری کی کمپنی پارک لین کو زمین کی فروخت کے معاملے میں پیپلز پارٹی کے رہنما فیصل سخی بٹ کی جانب سے نیب کے خلاف ہراساں کرنے کی درخواست کی سماعت کے موقع پر نیب کے پراسیکیوٹر بیرسٹر رضوان نے پیرا وائز کمنٹس داخل کرانے کیلئے مہلت طلب کر لی جس پر فاضل عدالت نے سماعت بغیر کسی کارروائی کے دو ہفتوں کے لئے ملتوی کر دی۔ نوٹس

تازہ ترین خبریں